Question Answers

Compiled by Khatim-ul-Ambia University (Hausary Madressa) Karachi


1

Category : نماز

Question : خواتین کے لئے کب فجر ، مغرب اور عشاء میں بھی الحمد و سورۃ آہستہ پڑھنا واجب ہے؟


Answer-1: اگر کوئی نا محرم آواز سن رہا ہو اور اسے آواز سنانا حرام ہو توخواتین کے لئے فجر ، مغرب اور عشاء میں بھی الحمد و سورۃ آہستہ آواز میں پڑھنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:193 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی نامحرم آواز سن رہا ہو تو خواتین کے لئے فجر ، مغرب اور عشاء میں بھی الحمد و سورۃ احتیاط کی بنا پر آہستہ آواز میں پڑھنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:156 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی نامحرم آواز سن رہا ہو توخواتین کے لئے فجر ، مغرب اور عشاء میں بھی الحمد و سورۃ احتیاط کی بنا پر آہستہ آواز میں پڑھنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:172 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی نا محرم آواز سن رہا ہو توخواتین کے لئے فجر ، مغرب اور عشاء میں بھی الحمد و سورۃ احتیاط کی بنا پر آہستہ آواز میں پڑھنا واجب ہے اور اگر عورت کے لئے آواز سنانا حرام ہو تو بلند آواز سے پڑھنا جائز نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:179 | volume:0



2

Category : خمس

Question : وہ کھانے پینےکی اشیاء جو لوگ گھر میں استعمال کے لئے خریدتے ہیں اور سال کے ختم ہونے پر کچھ بچ جاتی ہیں ان کا خمس کیسے ادا ہوگا؟


Answer-1: بچنے والی اشیاء کا خمس واجب ہے اگر جنس کے بجائے قیمت نکالنا چاہیں تو اگر قیمت بڑھ گئی ہو تو سال کے آخر میں جو قیمت ہے اس کے مطابق خمس نکالنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:330 | volume:0


Answer-2: بچنے والی اشیاء کا خمس واجب ہے اگر جنس کے بجائے قیمت نکالنا چاہیں تو اگر قیمت بڑھ گئی ہو تو سال کے آخر میں جو قیمت ہے اس کے مطابق خمس نکالنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:271 | volume:0


Answer-3: بچنے والی اشیاء کا خمس واجب ہے اگر جنس کے بجائے قیمت نکالنا چاہیں تو اگر قیمت بڑھ گئی ہو تو سال کے آخر میں جو قیمت ہے اس کے مطابق خمس نکالنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:306 | volume:0


Answer-4: بچنے والی اشیاء کا خمس واجب ہے اگر جنس کے بجائے قیمت نکالنا چاہیں تو اگر قیمت بڑھ گئی ہو تو سال کے آخر میں جو قیمت ہے اس کے مطابق خمس نکالنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:316 | volume:0



3

Category : خمس

Question : اگرسال بھر کوئی منافع نہ ہو اور قر ضہ لیکر گزارا کرے تو کیا اگلے سال کی آمدنی سےخمس نکالنے سے پہلے قر ضہ ادا کرسکتا ہے؟


Answer-1: اگر سال بھر کوئی منافع نہ ہو اور قر ضہ لیکر گزارا کرے تو اگلے سال کی آمدنی سے قر ضہ ادا کرسکتا ہے اور اس مقدار پر خمس واجب نہیں ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:331 | volume:0


Answer-2: اگر سال بھر کوئی منافع نہ ہو اور قر ضہ لیکر گزارا کرے تو اگلے سال کی آمدنی سے قر ضہ ادا کرسکتا ہے اور اس مقدار پر خمس واجب نہیں ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:272 | volume:0


Answer-3: اگر سال بھر کوئی منافع نہ ہو اور قر ضہ لیکر گزارا کرے تو اگلے سال کی آمدنی سے قر ضہ ادا کرسکتا ہے اور اس مقدار پر خمس واجب نہیں ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:307 | volume:0


Answer-4: اگر سال بھر کوئی منافع نہ ہو اور قر ضہ لیکر گزارا کرے تو اگلے سال کی آمدنی سے قر ضہ ادا کرسکتا ہے اور اس مقدار پر خمس واجب نہیں ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:316 | volume:0



4

Category : خمس

Question : جس مال سے خمس نکال دیا گیا ہو اگر نئے سال کے دوران اس میں سے کچھ خرچ ہو جائے تو کیا خرچ شدہ رقم نئی درآمد سے واپس نکالی جا سکتی ہے؟


Answer-1: جس مال سے خمس نکال دیا گیا ہو اگر نئے سال کے دوران اس میں سے کچھ خرچ ہو جائے تو خرچ شدہ رقم نئی درآمد سے واپس نکالی جا سکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:330 | volume:0


Answer-2: جس مال سے خمس نکال دیا گیا ہو اگر نئے سال کے دوران اس میں سے کچھ خرچ ہو جائے تو خرچ شدہ رقم نئی درآمد سے واپس نکالی جا سکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:271 | volume:0


Answer-3: جس مال سے خمس نکال دیا گیا ہو اگر نئے سال کے دوران اس میں سے کچھ خرچ ہو جائے تو خرچ شدہ رقم نئی درآمد سے واپس نکالی جا سکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:307 | volume:0


Answer-4: جس مال سے خمس نکال دیا گیا ہو اگر نئے سال کے دوران اس میں سے کچھ خرچ ہو جائے تو خرچ شدہ رقم نئی درآمد سے واپس نکالی جا سکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:316 | volume:0



5

Category : خمس

Question : اگر کسی شخص کو کسی سال میں آمدنی نہ ہوئی ہو تو اس سال کے اخراجات کو آئندہ سال کے آمدنی سے کم کرسکتا ہے؟


Answer-1: اگر کسی شخص کو کسی سال میں آمدنی نہ ہوئی ہو تواس سال کے اخراجات کوآئندہ سال کے آمدنی سے کم نہیں کرسکتا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:330 | volume:0


Answer-2: اگر کسی شخص کو کسی سال میں آمدنی نہ ہوئی ہو تواس سال کے اخراجات کوآئندہ سال کے آمدنی سے کم نہیں کرسکتا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:271 | volume:0


Answer-3: اگر کسی شخص کو کسی سال میں آمدنی نہ ہوئی ہو تواس سال کے اخراجات کوآئندہ سال کے آمدنی سے کم نہیں کرسکتا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:307 | volume:0


Answer-4: اگر کسی شخص کو کسی سال میں آمدنی نہ ہوئی ہو تواس سال کے اخراجات کوآئندہ سال کے آمدنی سے کم نہیں کرسکتا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:316 | volume:0



6

Category : خمس

Question : اگر حلال مال حرام مال کے ساتھ اس طرح مل جائے کہ انسان حلال اور حرام مال کی مقدار نہ جانتا ہو تو مسئلے کا کیا حل ہوگا؟


Answer-1: اگر حلال مال حرام مال کے ساتھ اس طرح مل جائے کہ انسان حلال اور حرام مال کو نہ اس کی مقدار جانتا ہو اور حرام مال کے مالک کوبھی نہ جانتا ہو اور یہ بھی نہ جانتا ہو کہ حرام مال کی مقدار خمس سے زیادہ ہے یا کم تو خمس نکالنا واجب ہے اور احتیاط واجب کی بنا پر خمس ایسے شخص کو دیا جائے جو خمس اور ردِ مظالم کا مستحق ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:336 | volume:0


Answer-2: اگر حلال مال حرام مال کے ساتھ اس طرح مل جائے کہ انسان حلال اور حرام مال کو نہ اس کی مقدار جانتا ہو اور حرام مال کے مالک کا علم نہ ہو تو اس مال کا خمس ادا کرے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:275 | volume:0


Answer-3: اگر حلال مال حرام مال کے ساتھ اس طرح مل جائے کہ انسان حلال اور حرام مال کو نہ اس کی مقدار جانتا ہواورحرام مال کے مالک کوبھی نہ جانتا ہو اور یہ بھی نہ جانتا ہو کہ حرام مال کی مقدار خمس سے زیادہ ہے یا کم تو خمس نکالنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:311 | volume:0


Answer-4: اگر حلال مال حرام مال کے ساتھ اس طرح مل جائے کہ انسان حلال اور حرام مال کو نہ اس کی مقدار جانتا ہو توایسی صورت میں جب کہ حرام مال کے مالک کا بھی علم اور یہ بھی معلوم نہ ہو کہ حرام مقدار خمس سے کم یا زیادہ نہ ہو تو اس مال کا خمس ادا کرے گا ، احتیاط واجب کی بنا پر اپنی ذمہ داری کو ادا کرنے کی نیت کرے گا چاہے خمس ہو یا صدقہ اور ایسے مورد میں خرچ کرے گا جو خمس اور صدقے کا مورد ہو۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:321 | volume:0



7

Category : خمس

Question : حیثیت سے بڑھ کر خرچ کرنے کی صورت میں جو خمس واجب ہے وہ پوری رقم پر ہے یا صرف اضافی خرچ پر؟


Answer-1: حیثیت سے بڑھ کر جو اضافی خرچ کیا ہے صرف اس پر خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:367 | volume:1


Answer-2: حیثیت سے بڑھ کر جو اضافی خرچ کیا ہے صرف اس پر خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:327 | volume:1


Answer-3: حیثیت سے بڑھ کر جو اضافی خرچ کیا ہے صرف اس پر خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:351 | volume:2


Answer-4: حیثیت سے بڑھ کر جو اضافی خرچ کیا ہے صرف اس پر خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:351 | volume:2



8

Category : خمس

Question : اگر کوئی شخص اپنی حیثیت سے بڑھ کر خرچ کرے تو کیا اس پر خمس واجب ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص اپنی حیثیت سے بڑھ کر خرچ کرے تو اضافی اخراجات پر خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:329 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص اپنی حیثیت سے بڑھ کر خرچ کرے تو اضافی اخراجات پر خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:270 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص اپنی حیثیت سے بڑھ کر خرچ کرے تو اضافی اخراجات پر خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:305 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص اپنی حیثیت سے بڑھ کر خرچ کرے تو اضافی اخراجات پر خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:315 | volume:0



9

Category : خمس

Question : کیا گھر کے سربراہ کے خمس نکالنے کی صورت میں بقیہ افراد پر بھی خمس واجب ہوگا؟


Answer-1: گھر کے سربراہ کی طرح گھر کے ہر مکلف شخص پر خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:325 | volume:0


Answer-2: گھر کے سربراہ کی طرح گھر کے ہر مکلف شخص پر خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:267 | volume:0


Answer-3: گھر کے سربراہ کی طرح گھر کے ہر مکلف شخص پر خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:302 | volume:0


Answer-4: گھر کے سربراہ کی طرح گھر کے ہر مکلف شخص پر خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:311 | volume:0



10

Category : خمس

Question : کیا بیوی کے لئے خمس نکالنا واجب ہے؟


Answer-1: ہر مکلف شخص کی طرح بیوی پربھی خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:325 | volume:0


Answer-2: ہر مکلف شخص کی طرح بیوی پربھی خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:267 | volume:0


Answer-3: ہر مکلف شخص کی طرح بیوی پربھی خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:302 | volume:0


Answer-4: ہر مکلف شخص کی طرح بیوی پربھی خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:311 | volume:0



11

Category : خمس

Question : ریٹائرمنٹ کے وقت جو پرویڈینٹ فنڈ ملتا ہے کیا اس پر خمس واجب ہے؟


Answer-1: اس میں جو رقم آپ کی تنخواہ سے جمع ہوئی ہے اس پے فوراً خمس واجب ہےاور بقیہ پر باقی بچنے کی صورت میں تاریخ آنے پر خمس واجب ہوگا

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:استفتاات | Page:0 | volume:0


Answer-2: پوری مقدار سال کی درآمد شمار ہوگی اور سال کے آخر میں بچ جانے کی صورت میں خمس واجب ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی خامنہ ای | Book:اجوبۃ الاستفتاات | Page:0 | volume:0


Answer-3: موجودہ سال کے علاوہ جمع ہونے والی رقم کا خمس فوری واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:0 | volume:0



12

Category : خمس

Question : اگر کاروبار کا سرمایہ اتنی مقدار میں ہو کہ خمس نکالنے کی صورت میں کاروبار کے لئے کافی نہ ہو گا تو کیا پھر بھی خمس واجب ہے؟


Answer-1: اگر خمس نکالنے کی صورت میں اتنا سرمایہ نہ بچے کہ وہ اپنی حیثیت کے مطابق کاروبار کر سکے تو خمس واجب نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:369 | volume:0


Answer-2: اگر خمس نکالنے کی صورت میں اتنا سرمایہ نہ بچے کہ وہ اپنی حیثیت کے مطابق کاروبار کر سکے تو خمس واجب نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:327 | volume:0


Answer-3: اگر اپنی اور اپنے اہل و عیال کی گزر بسر کے لئے اس کاروبار کے سرمایہ کی ضرورت ہوتو اس پر خمس واجب نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:352 | volume:0


Answer-4: اگر اپنی اور اپنے اہل و عیال کی گزر بسر کے لئے اس کاروبار کے سرمایہ کی ضرورت ہوتو اس پر خمس واجب نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:352 | volume:0



13

Category : نماز

Question : اگر نمازی کو شک ہو کہ اس کا لباس حرام گوشت جانور کے اجزاء سے بنایا گیا ہے تو کیا اس لباس میں نماز ادا کرسکتاہے؟


Answer-1: اگر شک ہو کہ لباس حرام گوشت جانور کہ اجزاء سے بنایا گیا ہےیا نہیں تو بھی اس میں نماز پڑھ سکتے ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:164 | volume:0


Answer-2: اگر شک ہو کہ لباس حرام گوشت جانور کہ اجزاء سے بنایا گیا ہےیا نہیں تو بھی اس میں نماز پڑھ سکتے ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:133 | volume:0


Answer-3: اگر شک ہو کہ لباس حرام گوشت جانور کہ اجزاء سے بنایا گیا ہےیا نہیں تو بھی اس میں نماز پڑھ سکتے ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:146 | volume:0


Answer-4: اگر شک ہو کہ لباس حرام گوشت جانور کہ اجزاء سے بنایا گیا ہےیا نہیں تو بھی اس میں نماز پڑھ سکتے ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:153 | volume:0



14

Category : نماز

Question : اگرکسی شخص کو نماز پڑھنےکے بعد پتہ چلے کہ اسکا لباس نجس تھا تو نماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر نماز پڑھنے کے بعد معلوم ہو کہ نماز نجس لباس میں پڑھی گئی ہےتوپھربھی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:159 | volume:0


Answer-2: اگر نماز پڑھنے کے بعد معلوم ہو کہ نماز نجس لباس میں پڑھی گئی ہے پھر بھی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:128 | volume:0


Answer-3: اگر نماز پڑھنے کے بعد معلوم ہو کہ نماز نجس لباس میں پڑھی گئی ہے پھر بھی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:142 | volume:0


Answer-4: اگر نماز پڑھنے کے بعد معلوم ہو کہ نماز نجس لباس میں پڑھی گئی ہےتو پھر بھی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:149 | volume:0



15

Category : نماز

Question : کیا مستحب نماز میں الحمد کے ساتھ کوئی سورہ پڑھنا ضروری ہے؟


Answer-1: مستحب نماز میں الحمد کے علاوہ دوسرا سورہ پڑھنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:192 | volume:0


Answer-2: مستحب نماز میں الحمد کے علاوہ دوسرا سورہ پڑھنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:155 | volume:0


Answer-3: مستحب نماز میں الحمد کے علاوہ دوسرا سورہ پڑھنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:171 | volume:0


Answer-4: مستحب نماز میں الحمد کے علاوہ دوسرا سورہ پڑھنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:178 | volume:0



16

Category : نماز

Question : اگر کوئی شخص نماز کی حالت میں سلام کا جواب دے تو کیا آہستہ سے سلام کا جواب دینا ضروری ہے؟


Answer-1: نماز کی حالت میں بھی اس طرح سلام کا جواب دینا ضروری ہے کہ سلام کرنے والا جواب کو سن لے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:223 | volume:0


Answer-2: نماز کی حالت میں بھی اس طرح سلام کا جواب دینا ضروری ہے کہ سلام کرنے والا جواب کو سن لے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:180 | volume:0


Answer-3: نماز کی حالت میں بھی اس طرح سلام کا جواب دینا ضروری ہے کہ سلام کرنے والا جواب کو سن لے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:197 | volume:0


Answer-4: نماز کی حالت میں بھی اس طرح سلام کا جواب دینا ضروری ہے کہ سلام کرنے والا جواب کو سن لے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:204 | volume:0



17

Category : نماز

Question : اگر کوئی شخص خون والے لباس میں نماز پڑھے جب کہ وہ جانتا ہو کہ یہ مچھر کا خون ہے پھر نماز پڑھنے کے بعد اسے پتہ چلے کہ یہ خون ایسا تھا جس کے ساتھ نماز پڑھنا صحیح نہیں تو وظیفہ کیا ہے؟


Answer-1: اگر یہ سمجھتے ہوئے کہ مچھر کا خون ہے اْسی لباس میں نماز پڑھ لے لیکن بعد میں پتہ چلے کہ یہ نجس خون ہے تو بھی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:160 | volume:0


Answer-2: اگر یہ سمجھتے ہوئے کہ مچھر کا خون ہے اْسی لباس میں نماز پڑھ لے لیکن بعد میں پتہ چلے کہ یہ نجس خون ہے تو بھی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:130 | volume:0


Answer-3: اگر یہ سمجھتے ہوئے کہ مچھر کا خون ہےاْسی لباس میں نماز پڑھ لے لیکن بعد میں پتہ چلے کہ یہ نجس خون ہے تو بھی نماز صحیح ہے

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:144 | volume:0


Answer-4: اگر یہ سمجھتے ہوئے کہ مچھر کا خون ہے اْسی لباس میں نماز پڑھ لے لیکن بعد میں پتہ چلے کہ یہ نجس خون ہے تو بھی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:150 | volume:0



18

Category : نماز

Question : اگر لباس کو پاک کیا جائے اور لباس کے پاک ہونے کا یقین بھی ہوجائے اور اسی لباس میں نماز پڑ ھ لی جائے پھر نماز کے بعد معلوم ہو کہ لباس پاک نہیں ہوا تھا تونماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: نجس لباس کو پاک کرنے کے بعد نماز پڑھ لی جائے جبکہ یقین ہوکہ لباس پاک ہےتو اگربعد میں لباس نجس نکلے تو بھی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:160 | volume:0


Answer-2: نجس لباس کو پاک کرنے کے بعد نماز پڑھ لی جائے جبکہ یقین ہوکہ لباس پاک ہےتو اگربعد میں لباس نجس نکلے تو بھی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:130 | volume:0


Answer-3: نجس لباس کو پاک کرنے کے بعد نماز پڑھ لی جائے جبکہ یقین ہوکہ لباس پاک ہےتو اگربعد میں لباس نجس نکلے تو بھی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:143 | volume:0


Answer-4: نجس لباس کو پاک کرنے کے بعد نماز پڑھ لی جائے جبکہ یقین ہوکہ لباس پاک ہےتو اگربعد میں لباس نجس نکلے تو بھی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:150 | volume:0



19

Category : نماز

Question : کیا موتیوں کے ہار کو پہن کر نماز پڑھی جاسکتی ہے؟


Answer-1: چونکہ معلوم نہیں کے موتی حرام جانور کا جز ہے لہذا اسے پہن کر نماز پڑھنا صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:164 | volume:0


Answer-2: چونکہ معلوم نہیں کے موتی حرام جانور کا جز ہے لہذا اسے پہن کر نماز پڑھنا صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:133 | volume:0


Answer-3: چونکہ معلوم نہیں کے موتی حرام جانور کا جز ہے لہذا اسے پہن کر نماز پڑھنا صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:146 | volume:0


Answer-4: موتی پہن کے نماز پڑھنا صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:153 | volume:0



20

Category : نماز

Question : اگر ایک یا چند دن بعد پتہ چلے کہ سورج یا چاند گرہن ہوا تھا تو کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر بعد میں پتہ چلے کہ پورےچاند یا سورج کو گرہن لگا تھا تو ضروری ہے کہ نماز آیات قضا کرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:283 | volume:0


Answer-2: اگر بعد میں پتہ چلے کہ پورےچاند یا سورج کو گرہن لگا تھا تو ضروری ہے کہ نماز آیات قضا کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:231 | volume:0


Answer-3: اگر بعد میں پتہ چلے کہ پورےچاند یا سورج کو گرہن لگا تھا تو ضروری ہے کہ نماز آیات قضا کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:258 | volume:0


Answer-4: اگر بعد میں پتہ چلے کہ پورےچاند یا سورج کو گرہن لگا تھا تو ضروری ہے کہ نماز آیات قضا کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:265 | volume:0



21

Category : نماز

Question : سورج یا چاند گرہن سے واجب ہونے والی نماز آیات کا وقت ادا کیا ہے؟


Answer-1: سورج یا چاند گرہن سے واجب ہونے والی نماز آیات کے ادا کا وقت گرہن کے شروع ہونے سے گرہن کے ختم ہونے تک ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:283 | volume:0


Answer-2: سورج یا چاند گرہن سے واجب ہونے والی نماز آیات کی ادا کا وقت گرہن کے شروع ہونے سے گرہن کے زائل ہونے کی ابتداء تک ہے۔ احتیاط واجب ہے کہ گرہن ختم ہونے کی ابتداء سے پہلے نماز پڑھی جائےاور اگر اس وقت تک ادا نہ کیا جائے تو ادا اور قضا کی نیت کے بغیرقربت مطلقہ کی نیت سے پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:173 | volume:1


Answer-3: سورج یا چاند گرہن سے واجب ہونے والی نماز آیات کی ادا کا وقت گرہن کے شروع ہونے سے گرہن کے ختم ہونے تک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:213 | volume:2


Answer-4: سورج یا چاند گرہن سے واجب ہونے والی نماز آیات کے ادا کا وقت گرہن کے شروع ہونے سے گرہن کے ختم ہونے تک ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:213 | volume:2



22

Category : نماز

Question : زلزے سے واجب ہونے والی نماز آیات کا وقت کب شروع ہوتاہے؟


Answer-1: زلزے سے واجب ہونے والی نماز آیات کا وقت فوراً زلزے کے بعد ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:283 | volume:0


Answer-2: زلزے سے واجب ہونے والی نماز آیات کا وقت فوراً زلزے کے بعد ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:231 | volume:0


Answer-3: زلزے سے واجب ہونے والی نماز آیات کا وقت فوراً زلزے کے بعد ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:258 | volume:0


Answer-4: زلزے سے واجب ہونے والی نماز آیات کا وقت فوراً زلزے کے بعد ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:265 | volume:0



23

Category : نماز

Question : اگر کوئی شخص نماز میں سلام کا جواب نہ دے تو اس کی نماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگرنمازی نماز کے دوران سلام کا جواب نہ دے تو نماز صحیح ہے اگر چہ گنہگار ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:223 | volume:0


Answer-2: اگرنمازی نماز کے دوران سلام کا جواب نہ دے تو نماز صحیح ہے اگر چہ گنہگار ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:180 | volume:0


Answer-3: اگرنمازی نماز کے دوران سلام کا جواب نہ دے تو نماز صحیح ہے اگر چہ گنہگار ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:197 | volume:0


Answer-4: اگرنمازی نماز کے دوران سلام کا جواب نہ دے تو نماز صحیح ہے اگر چہ گنہگار ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:207 | volume:0



24

Category : نماز

Question : اگر کوئی شخص نما ز میں الحمد کو بھول کر ترک کردے اور رکوع میں مشغول ہو جائے تو اس کی نماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص نما ز میں الحمد کو بھول کر ترک کردے اور رکوع میں مشغول ہوجائے تونماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:214 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص نما ز میں الحمد کو بھول کر ترک کردے اور رکوع میں مشغول ہوجائے تونماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:154 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص نما ز میں الحمد کو بھول کر ترک کردے اور رکوع میں مشغول ہوجائے تونماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:170 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص نما ز میں الحمد کو بھول کر ترک کردے اور رکوع میں مشغول ہوجائے تونماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:177 | volume:0



25

Category : نماز

Question : کیا پیش نماز کا مرد ہونا ضروری ہے؟


Answer-1: اگر مقتدی مرد ہو تو پیش نماز کا مرد ہونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:277 | volume:0


Answer-2: اگر مقتدی مرد ہو تو پیش نماز کا مرد ہونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:225 | volume:0


Answer-3: اگر مقتدی مرد ہو تو پیش نماز کا مرد ہونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:251 | volume:0


Answer-4: اگر مقتدی مرد ہو تو پیش نماز کا مرد ہونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:259 | volume:0



26

Category : نماز

Question : کیا چلتی ریل گاڑی میں نماز پڑھنا صحیح ہے؟


Answer-1: اگر ریل گاڑی اس طرح سے چلے کہ نمازی کا بدن سکون کی حالت میں رہے تواس میں نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:172 | volume:0


Answer-2: چلتی ہوئی ریل گاڑی میں نماز نہیں پڑھ سکتےلیکن وقت کی تنگی یا کسی اور وجہ سے چلتی گاڑی میں نماز پڑھنے پرمجبور ہوں تو جب ٹرین چل رہی ہو بقدر امکان حرکت کی حالت میں کچھ نہ پڑھیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:140 | volume:0


Answer-3: چلتی ہوئی ریل گاڑی میں نماز نہیں پڑھ سکتے لیکن مجبوری میں چلتی گاڑی میں نماز پڑھ سکتے ہیں لیکن ;بقدر امکان قبلہ اور استقرار کا لحاظ ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:161 | volume:0



27

Category : نماز

Question : کیا مردوں کے لئے فجر، مغرب اورعشاء کی نماز میں حمدو سورۃ اونچی آواز سے پڑھنا واجب ہے ؟


Answer-1: احتیاط کی بنا پر مردوں کےلئے فجر، مغرب ا ور عشا ء کی نماز میں الحمدو سورۃ کو اونچی آواز سے پڑھنا واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:193 | volume:0


Answer-2: مردوں کےلئے فجر، مغرب ا ور عشا ء کی نماز میں الحمدو سورۃ کواونچی آواز سے پڑھنا واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:156 | volume:0


Answer-3: مردوں کےلئے فجر، مغرب ا ور عشا ء کی نماز میں الحمدو سورۃ کو اونچی آواز سے پڑھنا واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:172 | volume:0


Answer-4: مردوں کےلئے فجر، مغرب ا ور عشا ء کی نماز میں الحمدو سورۃ کو اونچی آواز سے پڑھنا واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:179 | volume:0



28

Category : نماز

Question : کیا خواتین پرظہر و عصر کی نماز میں الحمد و سورۃ کو آہستہ پڑھنا واجب ہے ؟


Answer-1: احتیاط کی بنا پر خواتین پر ظہر و عصر کی نماز میں الحمد و سورۃ کو آہستہ پڑھنا واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:193 | volume:0


Answer-2: خواتین پر ظہر و عصر کی نماز میں الحمد و سورۃ کو آہستہ پڑھنا واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:156 | volume:0


Answer-3: خواتین پر ظہر و عصر کی نماز میں الحمد و سورۃ کو آہستہ پڑھنا واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:179 | volume:0


Answer-4: خواتین پر ظہر و عصر کی نماز میں الحمد و سورۃ کو آہستہ پڑھنا واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:172 | volume:0



29

Category : نماز

Question : کیا مردوں پر ظہر و عصر کی نماز میں الحمد و سورۃ کو آہستہ پڑھناواجب ہے ؟


Answer-1: احتیاط کی بنا پر مردوں پر ظہر و عصر کی نماز میں الحمدو سورۃ کو آہستہ پڑھنا واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:193 | volume:0


Answer-2: مردوں پر ظہر و عصر کی نماز میں الحمدو سورۃ کو آہستہ پڑھنا واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:156 | volume:0


Answer-3: مردوں پر ظہر و عصر کی نماز میں الحمدو سورۃ کو آہستہ پڑھنا واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:172 | volume:0


Answer-4: مردوں پر ظہر و عصر کی نماز میں الحمدو سورۃ کو آہستہ پڑھنا واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:179 | volume:0



30

Category : نماز

Question : اگر کوئی شخص نماز کی رکعت میں رکوع بھول جائے اور دونوں سجدوں کے بعد یاد آئے تو نماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: جوشخص نماز کی رکعت میں رکوع بھول جائے اور دونوں سجدوں کے بعد یاد آئے تو احتیاط واجب کی بنا پر کھڑے ہو کر دوبارہ رکوع میں جائے اور نماز پوری کرے اور دوبارہ بھی نماز ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:163 | volume:0


Answer-2: جوشخص نماز کی رکعت میں رکوع بھول جائے اور دونوں سجدوں کے بعد یاد آئے تو احتیاط لازم کی بنا پراس کی نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:201 | volume:0


Answer-3: جوشخص نماز کی رکعت میں رکوع بھول جائے اور دونوں سجدوں کے بعد یاد آئےاس کی نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:178 | volume:0


Answer-4: جوشخص نماز کی رکعت میں رکوع بھول جائے اور دونوں سجدوں کے بعد یاد آئے اس کی نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:186 | volume:0



31

Category : نماز

Question : اگر نمازی کسی رکعت میں رکوع بھول جائے اور پہلے سجدے کے بعد یاد آئے توکیا حکم ہے ؟


Answer-1: اگر نمازی کسی رکعت میں رکوع بھول جائے اور پہلے سجدے کے بعد یاد آئے توسیدھا کھڑےہوکر رکوع کرے اور ترتیب کے ساتھ باقی نماز پڑھے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:178 | volume:0


Answer-2: اگر نمازی کسی رکعت میں رکوع بھول جائے اور پہلے سجدے کے بعد یاد آئے توسیدھا کھڑےہوکر رکوع کرے اور ترتیب کے ساتھ باقی نماز پڑھے۔اوراحتیاط واجب کی بنا پر اضافی سجدے کی وجہ سے دو سجدے سھو کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:186 | volume:0


Answer-3: اگر نمازی کسی رکعت میں رکوع بھول جائے اور پہلے سجدے کے بعد یاد آئے تواحتیاط واجب کی بنا پر سیدھا کھڑے ہو کر رکوع کرے اورباقی نماز پڑھے اورپھر دوبارہ نماز پڑھے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:163 | volume:0


Answer-4: اگر نمازی کسی رکعت میں رکوع بھول جائے اور پہلے سجدے کے بعد یاد آئے توسیدھا کھڑےہوکر رکوع کرے اور ترتیب کے ساتھ باقی نماز پڑھے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:201 | volume:0



32

Category : نماز

Question : نماز آیات واجب نمازوں میں سے ہے یا مستحب؟


Answer-1: نماز آیات واجب نمازوں میں سے ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:282 | volume:0


Answer-2: نماز آیات واجب نمازوں میں سے ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:230 | volume:0


Answer-3: نماز آیات واجب نمازوں میں سے ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:257 | volume:0


Answer-4: نماز آیات واجب نمازوں میں سے ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:264 | volume:0



33

Category : نماز

Question : آیا نماز آیات جماعت سے پڑھی جاسکتی ہے؟


Answer-1: نماز آیات کو جماعت سے پڑھنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:285 | volume:0


Answer-2: نماز آیات کو جماعت سے پڑھنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:233 | volume:0


Answer-3: نماز آیات کو جماعت سے پڑھنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:260 | volume:0


Answer-4: نماز آیات کو جماعت سے پڑھنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:267 | volume:0



34

Category : نماز

Question : نماز آیات کب واجب ہوتی ہے؟


Answer-1: نماز آیات تین چیزوں کے سبب واجب ہوتی ہے۱)سورج گرہن۲)چاند گرہن ۳)زلزلہ(احتیاط واجب )۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:282 | volume:0


Answer-2: نماز آیات چار چیزوں کے سبب واجب ہوتی ہے۔(۱)سورج گرہن(۲)چاند گرہن (۳)زلزلہ (۴)احتیاط واجب کی بناپرگرج چمک یا سرخ و کالی آندھی یا ان جیسی آسمانی آفتوں کے وقت کہ جو اکثر لوگوں کے ڈرنے کا سبب بنیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:230 | volume:0


Answer-3: نماز آیات چار چیزوں کے سبب واجب ہوتی ہے۔(۱)سورج گرہن(۲)چاند گرہن (۳)زلزلہ (۴)گرج چمک یا سرخ و کالی آندھی یا ان جیسی آسمانی آفتوں کے وقت کہ جو اکثر لوگوں کے ڈرنے کا سبب بنیں۔ اور احتیاط واجب کی بنا پر زمینی آفتوں کے وقت کہ جب اکثرلوگ اس سے ڈر جائیں جیسے سمندر /دریا کا خشک ہوجانا یا پہاڑوں کا گرنا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:257 | volume:0


Answer-4: نماز آیات چار چیزوں کے سبب واجب ہوتی ہے۔(۱)سورج گرہن(۲)چاند گرہن (۳)زلزلہ (۴)گرج چمک یا سرخ و کالی آندھی یا ان جیسی آسمانی آفتوں کے وقت کہ جو اکثر لوگوں کے ڈرنے کا سبب بنیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:264 | volume:0



35

Category : نماز

Question : ہم جس پیش نماز کو عادل سمجھتے تھے اب شک ہو رہا ہو کہ وہ عادل رہے یا نہیں توکیا انکے پیچھے نماز پڑھ سکتے ہیں؟


Answer-1: جس پیش نماز کو عادل سمجھتے تھے اب اگر عدالت کے باقی رہنے میں شک ہو رہا ہو تو بھی انکی اقتداء میں نماز پڑھ سکتے ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:259 | volume:0


Answer-2: جس پیش نماز کو عادل سمجھتے تھے اب اگر عدالت کے باقی رہنے میں شک ہو رہا ہو تو بھی انکی اقتداء میں نماز پڑھ سکتے ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:251 | volume:0


Answer-3: جس پیش نماز کو عادل سمجھتے تھے اب اگر عدالت کے باقی رہنے میں شک ہو رہا ہو تو بھی انکی اقتداء میں نماز پڑھ سکتے ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:225 | volume:0


Answer-4: جس پیش نماز کو عادل سمجھتے تھے اب اگر عدالت کے باقی رہنے میں شک ہو رہا ہو تو بھی انکی اقتداء میں نماز پڑھ سکتے ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:277 | volume:0



36

Category : حج

Question : قرض لے کرحج ادا کرنے سے واجب حج ادا ہوجاتا ہے یا نہیں؟


Answer-1: حج کے لئے قرضہ کرنا واجب نہیں ہےاگر چہ بعد میں آسانی سے ادا کر سکتا ہو لیکن اگر قرضہ لے جو حج کے مخارج پورے کر سکے اور بعد میں اسے ادا کرنے میں سختی نہ ہو تو حج واجب ادا ہوجائے گا اور حجۃ الاسلام کے لئے کافی ہے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:0 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص قرضہ لے تو اس پرحج واجب نہیں ہو گا اگر چہ قرض ادا کرسکتا ہو ،ہاںاگر قرض کی واپسی کا وقت اتنا زیادہ ہو کہ عقلاء اس کو اہمیت نہ دیں تو حج واجب ادا ہو جائے گا

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:0 | volume:0


Answer-3: اگر غیر مستطیع قرضہ لے کر حج کرے مستطیع نہیں ہو گا اگر چہ بعد میں قرضہ آسانی سے واپس کر سکتا ہو ، یہ حج واجب ادانہیں ہوگا ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج | Page:0 | volume:0


Answer-4: حج کے لئے قرضہ کرنا واجب نہیں اگر چہ بعد میں آسانی سے ادا کر سکتا ہو لیکن اگر قرضہ لے جو حج کے مخارج کیلئے کافی ہو اور اس کو ادا کرنے میں مشکل اور مشقت نہ ہو تو حج واجب انجام ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج | Page:0 | volume:0


Answer-5: غیر مستطیع شخص پر قرضہ لیکر حج کرنا واجب نہیں ہے اگر چہ آسانی سے ادا کر سکے لیکن قرضہ لے کے حج کرے تو واجب حج ادا ہوجائے گا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی خامنہ ای | Book:مناسک حج | Page:0 | volume:0



37

Category : نماز

Question : مرحوم کی قضا نماز کس پر واجب ہے؟


Answer-1: اگرشرائط موجود ہوں تو مرحوم کی قضا نماز احتیاط کی بنا پر بڑے بیٹے پر واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:268 | volume:0


Answer-2: اگرشرائط موجود ہوں تو مرحوم کی قضا نماز احتیاط کی بنا پر بڑے بیٹے پر واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:217 | volume:0


Answer-3: اگرشرائط موجود ہوں تو مرحوم کی قضا نماز احتیاط کی بنا پر بڑے بیٹے پر واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:242 | volume:0


Answer-4: اگرشرائط موجود ہوں تو مرحوم کی قضا نماز احتیاط کی بنا پر بڑے بیٹے پر واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:250 | volume:0



38

Category : نماز

Question : مرحوم والد کی قضا نماز جو بڑے بیٹے کی ذمہ داری ہے کیا لازم ہے کہ خود ہی پڑھے ؟


Answer-1: مرحوم والد کی قضا نماز ضروری ہے کہ بڑا بیٹا خود پڑھے یا کسی سے پڑھوائے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:268 | volume:0


Answer-2: مرحوم والد کی قضا نماز ضروری ہے کہ بڑا بیٹا خود پڑھے یا کسی سے پڑھوائے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:217 | volume:0


Answer-3: مرحوم والد کی قضا نماز ضروری ہے کہ بڑا بیٹا خود پڑھے یا کسی سے پڑھوائے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:242 | volume:0


Answer-4: مرحوم والد کی قضا نماز ضروری ہے کہ بڑا بیٹا خود پڑھے یا کسی سے پڑھوائے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:250 | volume:0



39

Category : خمس

Question : حیثیت سے بڑھ کر خرچ کرنے کی صورت میں جو خمس واجب ہے وہ پوری رقم پر ہے یا صرف اضافی خرچ پر ہے؟


Answer-1: حیثیت سے بڑھ کر خرچ کرنے کی صور ت میں جو اضافی خرچ کیا ہے صرف اس پر خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:368 | volume:1


Answer-2: حیثیت سے بڑھ کر خرچ کرنے کی صور ت میں جو اضافی خرچ کیا ہے صرف اس پر خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:327 | volume:1


Answer-3: حیثیت سے بڑھ کر خرچ کرنے کی صور ت میں جو اضافی خرچ کیا ہے صرف اس پر خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:352 | volume:1


Answer-4: حیثیت سے بڑھ کر خرچ کرنے کی صور ت میں جو اضافی خرچ کیا ہے صرف اس پر خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:352 | volume:1



40

Category : نماز

Question : اوقات نماز میں نصف شب سے کیا مراد ہے؟


Answer-1: اول غروب سے صبح صادق تک کا درمیانی وقت نصف شب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:147 | volume:0


Answer-2: احتیاط واجب کی بنا پر اول غروب سے صبح صادق تک کا درمیانی وقت نصف شب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:118 | volume:0


Answer-3: اول غروب سے طلوع آفتاب تک کا درمیانی وقت نصف شب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:132 | volume:0


Answer-4: احتیاط واجب کی بنا پراول غروب سے صبح صادق تک کا درمیانی وقت نصف شب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:137 | volume:0



41

Category : نماز

Question : نماز مغرب کس وقت تک پڑھی جاسکتی ہے؟


Answer-1: اختیارکی حالت میں انسان آدھی رات سے اتنا پہلے کہ نماز مغرب پڑھ کروقت کے اندرنماز عشاء پڑھ سکے تو ادا کی نیت سے مغرب پڑھ سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:147 | volume:0


Answer-2: انسان آدھی رات سے اتنا پہلے کہ نماز مغرب پڑھ کروقت کے اندرنماز عشاء پڑھ سکے تو ادا کی نیت سے مغرب پڑھ سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:117 | volume:0


Answer-3: انسان آدھی رات سے اتنا پہلے کہ نماز مغرب پڑھ کروقت کے اندرنماز عشاء پڑھ سکے تو ادا کی نیت سے مغرب پڑھ سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:131 | volume:0


Answer-4: اختیارکی حالت میں انسان آدھی رات سے اتنا پہلے کہ نماز مغرب پڑھ کروقت کے اندرنماز عشاء پڑھ سکے تو ادا کی نیت سے مغرب پڑھ سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:137 | volume:0



42

Category : خمس

Question : کیا گھر کے سربراہ کے خمس نکالنےکے باوجود بقیہ افراد پرخمس واجب ہے؟


Answer-1: اگر شرائط پوری ہوں تو گھر کے سربراہ کی طرح گھر کے ہر مکلف فرد پراپنا خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:311 | volume:0


Answer-2: اگر شرائط پوری ہوں تو گھر کے سربراہ کی طرح گھر کے ہر مکلف فرد پراپنا خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:302 | volume:0


Answer-3: اگر شرائط پوری ہوں تو گھر کے سربراہ کی طرح گھر کے ہر مکلف فرد پراپنا خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:267 | volume:0


Answer-4: اگر شرائط پوری ہوں تو گھر کے سربراہ کی طرح گھر کے ہر مکلف فرد پراپنا خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:325 | volume:0



43

Category : نماز

Question : کیا ماں کی قضا نماز اولاد پر واجب ہے؟


Answer-1: ماں کی قضا نماز اولاد پر واجب نہیں ہے۔ البتہ بہتر ہے انجام دے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:268 | volume:0


Answer-2: ماں کی قضا نماز اولاد پر واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:217 | volume:0


Answer-3: ماں کی قضا نماز اولاد پر واجب نہیں ہے۔ البتہ بہتر ہے انجام دے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:242 | volume:0


Answer-4: ماں کی قضا نماز اولاد پر واجب نہیں ہے۔ البتہ بہتر ہے انجام دے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:250 | volume:0



44

Category : حج

Question : احرام کس مقام سے باندھا جائے گا؟


Answer-1: شریعت میں احرام باندھنےکے مقام کو معین کیا گیا ہے جسے میقات کہتے ہیں۔یہ نو مقام ہیں۔1-ذوالحلیفہ2-وادی عقیق3-حجفہ4-یلملم5-قران المنازل6-مذکورہ پانچ میقات کے محاذی قرار پا نا7-مکہ8-جس مکان میں مقیم ہے9-ادنی الحل

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:112 | volume:0


Answer-2: شریعت میں احرام باندھنےکے مقام کو معین کیا گیا ہے جسے میقات کہتے ہیں۔یہ نو مقام ہیں۔1-ذوالحلیفہ2-وادی عقیق3-حجفہ4-یلملم5-قران المنازل6-مذکورہ پانچ میقات کے محاذی قرار پا نا7-مکہ8-جس مکان میں مقیم ہے9-ادنی الحل

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:161 | volume:0


Answer-3: عمرہ تمتع کے احرام کو مختلف راستوں کے لحاظ سے پانچ مقامات سے باندھا جاسکتا ہے۔1- مسجد شجرہ2-وادی عقیق3-قرآن المنازل4-یلملم5-جحفہ-عمرہ مفردہ کے احرام کے لئے 1-ادنی الحل2-جعرانہ3-حدیبیہ4-تنعیم5-مکہ(حج تمتع کے احرام باندھنے کا مقام)

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:282 | volume:0


Answer-4: عمرہ تمتع کے احرام کو مختلف راستوں کے لحاظ سے پانچ مقامات سے باندھا جاسکتا ہے۔1- مسجد شجرہ2-وادی عقیق3-قرآن المنازل4-یلملم5-جحفہ-عمرہ مفردہ کے احرام کے لئے 1-ادنی الحل2-جعرانہ3-حدیبیہ4-تنعیم5-مکہ(حج تمتع کے احرام باندھنے کا مقام)

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:17 | volume:0


Answer-5: عمرہ تمتع کے احرام کو مختلف راستوں کے لحاظ سے پانچ مقامات سے باندھا جاسکتا ہے۔1- مسجد شجرہ2-وادی عقیق3-قرآن المنازل4-یلملم5-جحفہ-عمرہ مفردہ کے احرام کے لئے 1-ادنی الحل2-جعرانہ3-حدیبیہ4-تنعیم5-مکہ(حج تمتع کے احرام باندھنے کا مقام)

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:83 | volume:0


Answer-6: عمرہ تمتع کے احرام کو مختلف راستوں کے لحاظ سے پانچ مقامات سے باندھا جاسکتا ہے۔1- مسجد شجرہ2-وادی عقیق3-قرآن المنازل4-یلملم5-جحفہ-عمرہ مفردہ کے احرام کے لئے 1-ادنی الحل2-جعرانہ3-حدیبیہ4-تنعیم5-مکہ(حج تمتع کے احرام باندھنے کا مقام)

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:85 | volume:0


Answer-7: عمرہ تمتع کے احرام کو مختلف راستوں کے لحاظ سے پانچ مقامات سے باندھا جاسکتا ہے۔1- مسجد شجرہ2-وادی عقیق3-قران المنازل4-یلملم5-جحفہ-عمرہ مفردہ کے احرام کے لئے 1-ادنی الحل2-جعرانہ3-حدیبیہ4-تنعیم5-مکہ(حج تمتع کے احرام باندھنے کا مقام)

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:93 | volume:0


Answer-8: عمرہ تمتع کے احرام کو مختلف راستوں کے لحاظ سے پانچ مقامات سے باندھا جاسکتا ہے۔1- مسجد شجرہ2-وادی عقیق3-قران المنازل4-یلملم5-جحفہ-عمرہ مفردہ کے احرام کے لئے 1-ادنی الحل2-جعرانہ3-حدیبیہ4-تنعیم5-مکہ(حج تمتع کے احرام باندھنے کا مقام)

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:91 | volume:0


Answer-9: عمرہ تمتع کے احرام کو مختلف راستوں کے لحاظ سے پانچ مقامات سے باندھا جاسکتا ہے۔1- مسجد شجرہ2-وادی عقیق3-قران المنازل4-یلملم5-جحفہ-عمرہ مفردہ کے احرام کے لئے 1-ادنی الحل2-جعرانہ3-حدیبیہ4-تنعیم5-مکہ(حج تمتع کے احرام باندھنے کا مقام)

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:80 | volume:0


Answer-10: عمرہ تمتع کے احرام کو مختلف راستوں کے لحاظ سے پانچ مقامات سے باندھا جاسکتا ہے۔1- مسجد شجرہ2-وادی عقیق3-قران المنازل4-یلملم5-جحفہ-عمرہ مفردہ کے احرام کے لئے 1-ادنی الحل2-جعرانہ3-حدیبیہ4-تنعیم5-مکہ(حج تمتع کے احرام باندھنے کا مقام)

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج | Page:310 | volume:0


Answer-11: عمرہ تمتع کے احرام کو مختلف راستوں کے لحاظ سے پانچ مقامات سے باندھا جاسکتا ہے۔1- مسجد شجرہ2-وادی عقیق3-قران المنازل4-یلملم5-جحفہ-عمرہ مفردہ کے احرام کے لئے 1-ادنی الحل2-جعرانہ3-حدیبیہ4-تنعیم5-قدیمی مکہ(حج تمتع کے احرام باندھنے کا مقام)

Scholar:آیت اللہ سید علی خامنہ ای | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:58 | volume:0


Answer-12: عمرہ تمتع کے احرام کو مختلف راستوں کے لحاظ سے پانچ مقامات سے باندھا جاسکتا ہے۔1- مسجد شجرہ2-وادی عقیق3-قران المنازل4-یلملم5-جحفہ-عمرہ مفردہ کے احرام کے لئے 1-ادنی الحل2-جعرانہ3-حدیبیہ4-تنعیم5-قدیمی مکہ(حج تمتع کے احرام باندھنے کا مقام)

Scholar:آیت اللہ سید علی خامنہ ای | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:83 | volume:0


Answer-13: عمرہ تمتع کے احرام کو مختلف راستوں کے لحاظ سے پانچ مقامات سے باندھا جاسکتا ہے۔1- مسجد شجرہ2-وادی عقیق3-قران المنازل4-یلملم5-جحفہ-عمرہ مفردہ کے احرام کے لئے 1-ادنی الحل2-جعرانہ3-حدیبیہ4-تنعیم5-قدیمی مکہ(حج تمتع کے احرام باندھنے کا مقام)

Scholar:آیت اللہ سید علی خامنہ ای | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:17 | volume:0


Answer-14: عمرہ تمتع کے احرام کو مختلف راستوں کے لحاظ سے پانچ مقامات سے باندھا جاسکتا ہے۔1- مسجد شجرہ2-وادی عقیق3-قران المنازل4-یلملم5-جحفہ-عمرہ مفردہ کے احرام کے لئے 1-ادنی الحل2-جعرانہ3-حدیبیہ4-تنعیم5-قدیمی مکہ(حج تمتع کے احرام باندھنے کا مقام)

Scholar:آیت اللہ سید علی خامنہ ای | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:282 | volume:0


Answer-15: شریعت میں احرام باندھنےکے مقام کو معین کیا گیا ہے جسے میقات کہتے ہیں۔یہ دس مقام ہیں۔1-ذوالحلیفہ2-وادی عقیق3-حجفہ4-یلملم5-قران المنازل6-مکہ7-جس مکان میں مقیم ہے8-جعرانہ 9-مسجد شجرہ کے محاذی قرار پانا10-ادنی الحل۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:89 | volume:0


Answer-16: شریعت میں احرام باندھنےکے مقام کو معین کیا گیا ہے جسے میقات کہتے ہیں۔یہ دس مقام ہیں۔1-ذوالحلیفہ2-وادی عقیق3-حجفہ4-یلملم5-قران المنازل6-مکہ7-جس مکان میں مقیم ہے8-جعرانہ 9-مسجد شجرہ کے محاذی قرار پانا10-ادنی الحل۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:86 | volume:0



45

Category : وضو

Question : قرآن مجید کے الفاظ کوبغیر وضو چھونے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: قرآن مجید کے الفاظ کو بغیر وضوچھو نا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:61 | volume:0


Answer-2: قرآن مجید کے الفاظ کو بغیر وضوچھو نا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:48 | volume:0


Answer-3: قرآن مجید کے الفاظ کو بغیر وضوچھو نا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:55 | volume:0


Answer-4: قرآن مجید کے الفاظ کو بغیر وضوچھو نا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:56 | volume:0



46

Category : وضو

Question : قرآن مجید کے الفاظ کو بغیر وضو کے بوسہ لینے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: قرآن مجید کے الفاظ کوبغیر وضو بوسہ لینا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:61 | volume:0


Answer-2: قرآن مجید کے الفاظ کوبغیر وضو بوسہ لینا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:48 | volume:0


Answer-3: قرآن مجید کے الفاظ کوبغیر وضو بوسہ لینا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:55 | volume:0


Answer-4: قرآن مجید کے الفاظ کوبغیر وضو بوسہ لینا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:56 | volume:0



47

Category : وضو

Question : چھاردہ معصومینؑ کے ناموں کو بغیر وضو چھونے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: بہتر ہے کے چھاردہ معصو مین ؑ کے ناموں کو وضو کےبغیر نہ چھوا جائے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:61 | volume:0


Answer-2: چھاردہ معصومینؑ کے ناموں کو احتیاط واجب کی بنا پر بغیر وضو چھو نا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:48 | volume:0


Answer-3: بہتر ہے کے چھاردہ معصو مین ؑ کے ناموں کو وضو کے بغیر نہ چھوا جائے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:55 | volume:0


Answer-4: چھاردہ معصومینؑ کے ناموں کو احتیاط مستحب کی بنا پر بغیر وضونہ چھوا جائے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:57 | volume:0



48

Category : وضو

Question : خدا وندمتعال کے نام اور صفات ذاتیہ کو بغیر وضو چھونے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: خدا و ند متعال کے نام اوراسی سے خاص صفا ت کو بغیر و ضو چھونا احتیاط و اجب کی بنا پر حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:61 | volume:0


Answer-2: خدا و ند متعال کے نام اور اسی سے خاص صفات کو بغیر وضو کے چھونا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:27 | volume:1


Answer-3: خدا و ند متعال کے نام اوراسی سے خاص صفا ت کو بغیر و ضو چھونا احتیاط و اجب کی بنا پر حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:55 | volume:0


Answer-4: خدا و ند متعال کے نام اور اسماءصفا ت کو بغیر و ضو چھونا احتیاط و اجب کی بنا پر حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:57 | volume:0



49

Category : نماز

Question : اگر کوئی نماز میں حضرت رسول خدا ﷺ کا نام، لقب یا کنیت سنے تو صلوات پڑھنے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر کوئی نماز میں حضرت رسول خدا ﷺ کا نام، لقب یا کنیت سنے تو صلوات پڑھنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:219 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی نماز میں حضرت رسول خدا ﷺ کا نام، لقب یا کنیت سنے تو صلوات پڑھنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:177 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی نماز میں حضرت رسول خدا ﷺ کا نام، لقب یا کنیت سنے تو صلوات پڑھنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:194 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی نماز میں حضرت رسول خدا ﷺ کا نام، لقب یا کنیت سنے تو صلوات پڑھنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:203 | volume:0



50

Category : نماز

Question : اگر کوئی زلزلے سے واجب ہونے والی نماز آیات کو فورا ً نہ پڑھے تونماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر کوئی زلزلے سے واجب ہونے والی نماز آیات کو فوراً نہ پڑھے تو قضا واجب نہیں ہےلیکن پڑھنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:283 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی زلزلے سے واجب ہونے والی نماز آیات کو فوراً نہ پڑھے تو یہ نماز تاحیات اس پر واجب رہے گی اور جب بھی پڑھے گا تو ادا کی نیت سے پڑھے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:231 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی زلزلے سے واجب ہونے والی نماز آیات کو فوراً نہ پڑھے تو احتیاط واجب کی بنا پر تا حیات واجب رہے گی اور جب نماز پڑھے گا تو ادا و قضا کی نیت کے بغیر پڑھےگا ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:258 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی زلزلے سے واجب ہونے والی نماز آیات کو فوراً نہ پڑھے تو تاحیات اس پر واجب رہے گی اور جب پڑھے گا تو احتیاط واجب کی بنا پر ادا اور قضا کی نیت کے بغیر پڑھے گا ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:265 | volume:0



51

Category : نماز

Question : اگر نماز میں حمدا ور سورہ پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں پہنچنے سے پہلے یاد آجائے تو کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر نماز میں حمد اور سورہ پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں پہنچنے سے پہلے یاد آجائے تو سیدھا کھڑے ہو کر حمدا ور سورہ پڑھے گا اور پھر رکوع میں جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:191 | volume:0


Answer-2: اگر نماز میں حمد اور سورہ پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں پہنچنے سے پہلے یاد آجائے تو سیدھا کھڑے ہو کر حمدا ور سورہ پڑھے گا اور پھر رکوع میں جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:154 | volume:0


Answer-3: اگر نماز میں حمد اور سورہ پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں پہنچنے سے پہلے یاد آجائے تو سیدھا کھڑے ہو کر حمدا ور سورہ پڑھے گا اور پھر رکوع میں جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:170 | volume:0


Answer-4: اگر نماز میں حمد اور سورہ پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں پہنچنے سے پہلے یاد آجائے تو سیدھا کھڑے ہو کر حمدا ور سورہ پڑھے گا اور پھر رکوع میں جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:177 | volume:0



52

Category : نماز

Question : اگر نما ز میں حمدیا سورہ پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں جانے کے بعد یاد آئے تو نماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر نما ز میں حمدیا سورہ پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں جانے کے بعد یاد آئےتو نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:191 | volume:0


Answer-2: اگر نما ز میں حمدیا سورہ پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں جانے کے بعد یاد آئےتو نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:154 | volume:0


Answer-3: اگر نما ز میں حمدیا سورہ پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں جانے کے بعد یاد آئےتو نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:170 | volume:0


Answer-4: اگر نما ز میں حمدیا سورہ پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں جانے کے بعد یاد آئےتو نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:177 | volume:0



53

Category : نماز

Question : اگر نما ز میں حمداور سورہ پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں جانے کے بعد یاد آئے تو نماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر نما ز میں حمد ا ور سورۃپڑھنا بھول جائے اور رکوع میں جانے کےبعد یاد آئے تو نماز صحیح ہے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:191 | volume:0


Answer-2: اگر نما ز میں حمد ا ور سورۃپڑھنا بھول جائے اور رکوع میں جانے کےبعد یاد آئے تو نماز صحیح ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:154 | volume:0


Answer-3: اگر نما ز میں حمد ا ور سورۃپڑھنا بھول جائے اور رکوع میں جانے کےبعد یاد آئے تو نماز صحیح ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:170 | volume:0


Answer-4: اگر نما ز میں حمد ا ور سورۃپڑھنا بھول جائے اور رکوع میں جانے کےبعد یاد آئے تو نماز صحیح ہے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:177 | volume:0



54

Category : نماز

Question : کیا باپ کی قضا نماز بڑےبیٹے پر ہر صورت میں واجب ہے؟


Answer-1: باپ نے جو نمازیں نا فرمانی کی وجہ سے نہ چھوڑی ہوں اور ان کو قضا کر سکتا تھالیکن نہیں کی احتیاط کی بنا پر بڑے بیٹے پر ان کی قضا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:268 | volume:0


Answer-2: باپ جن نمازوں کی قضا کر سکتا تھا اور نہیں کی اگر نافرمانی کی وجہ سے نہ چھوڑی ہوں تو بڑے بیٹے پر واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:217 | volume:0


Answer-3: باپ جن نمازوں کی قضا کر سکتا تھا اور نہیں کی احتیاط کی بنا پر بڑے بیٹے پرانکی قضا واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:242 | volume:0


Answer-4: باپ جن نمازوں کی قضا کر سکتا تھا اور نہیں کی یا صحیح نماز نہ پڑھی ہو تو احتیاط کی بنا پر بڑے بیٹے پر انکی قضا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:250 | volume:0



55

Category : نماز

Question : نماز آیات کے پڑھنے کا کیا طریقہ ہے؟


Answer-1: نماز آیات دو رکعت ہےاور ہر رکعت میں پانچ رکوع ہیں اس کے پڑھنے کا آسان طریقہ یہ ہے کہ نیت کے بعد تکبیرۃالاحرام کہے اورسورہ الحمد پڑھنے کے بعد بِسْمِ اللَّهِ الرَّحْمَنِ الرَّحِيمِ إِنَّا أَنزَلْنَاهُ فِي لَيْلَةِ الْقَدْرِ پڑھےاور پہلارکوع کرےپھر کھڑا ہوکر وَمَا أَدْرَاكَ مَا لَيْلَةُ الْقَدْرِپڑھے پھردوسرا رکوع کرے اور پھر کھڑے ہوکہ لَيْلَةُ الْقَدْرِ خَيْرٌ مِّنْ أَلْفِ شَهْرٍپڑھے پھر تیسرارکوع کرےپھر کھڑے ہونے کےبعد تَنَزَّلُ الْمَلَائِكَةُ وَالرُّوحُ فِيهَا

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book: | Page:0 | volume:0


Answer-2: مثل سیستانی

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:232 | volume:0


Answer-3: مثل سیستانی

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:259 | volume:0


Answer-4: مثل سیستانی

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:266 | volume:0



56

Category : 285

Question : توضیح المسائل


Answer-1:

Scholar: | Book: | Page:0 | volume:0



57

Category : روزہ

Question : اگر روزہ رکھنے کی وجہ سے بیماری سےدیر میں افاقہ حاصل ہو تو کیا وظیفہ ہے؟


Answer-1: اگر روزہ رکھنے کی وجہ سے بیماری سےدیر میں افاقہ ہو اور اس بیماری کا طولانی ہونا معمولاً تحمل نہ کیا جاتا ہو تو روزہ صحیح نہیں ہوگا اور اگر روزہ ماہِ رمضان کا تھا تو بعد میں قضا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:310 | volume:0


Answer-2: اگر روزہ رکھنے کی وجہ سے بیماری سے دیر میں افاقہ حاصل ہو تو روزہ صحیح نہیں ہوگااور بعد میں قضا ماہ رمضان واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:267 | volume:0


Answer-3: اگر روزہ رکھنے کی وجہ سے بیماری سےدیر میں افاقہ ہو اوربیماری قابلِ توجہ ہو تو روزہ صحیح نہیں ہوگا اور بعد میں رمضان کے روزوں کی قضا واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:293 | volume:0


Answer-4: اگر روزہ رکھنے کی وجہ سے بیماری سےدیر میں افاقہ ہو اور بیماری قابلِ توجہ ہو تو روزہ صحیح نہیں ہوگا اور بعد میں رمضان کے روزوں کی قضا واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:293 | volume:0



58

Category : نماز

Question : اگر کوئی شخص نماز میں الحمد پڑھنا بھول جائےاور رکوع میں پہنچنے سے پہلے یاد آجائے تو نماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر نماز میں الحمد پڑھنا بھول جائےاور رکوع میں پہنچنے سے پہلے یاد آجائے تو سیدھا کھڑا ہو کر الحمد اور سورہ پڑھے اور نماز مکمل کرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:191 | volume:0


Answer-2: اگر نماز میں الحمد پڑھنا بھول جائےاور رکوع میں پہنچنے سے پہلے یاد آجائے تو سیدھا کھڑا ہو کر الحمد اور سورہ پڑھے اور نماز مکمل کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:154 | volume:0


Answer-3: اگر نماز میں الحمد پڑھنا بھول جائےاور رکوع میں پہنچنے سے پہلے یاد آجائے تو سیدھا کھڑا ہو کر الحمد اور سورہ پڑھے اور نماز مکمل کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:170 | volume:0


Answer-4: اگر نماز میں الحمد پڑھنا بھول جائےاور رکوع میں پہنچنے سے پہلے یاد آجائے تو سیدھا کھڑا ہو کر الحمد اور سورہ پڑھے اور نماز مکمل کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:177 | volume:0



59

Category : حج

Question : نیت کرتے وقت کن باتوں کا خیال رکھنا ضروری ہے؟


Answer-1: نیت میں تین باتوں کا خیال رکھنا ضروری ہے۔1-قصد قربت اور اخلاص یعنی اس عبادت کو انجام دینے سے پروردگار کی رضایت کا ارادہ رکھتا ہو اور کسی بھی ایسی چیز کا ارادہ نہ رکھتا ہو جو اس سے منا فات رکھتی ہو۔2-نیت اسکے مخصوص مقام پر کی جائے(جیسے میقات وغیرہ)۔3-جس عبادت کیلے احرام باندھا جارہا ہے اسے معین کرنا جیسے حج،عمرہ،حج ،تمتع،قران وغیرہ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:132 | volume:0


Answer-2: نیت میں تین باتوں کا خیال رکھنا ضروری ہے۔1-قصد قربت اور اخلاص یعنی اس عبادت کو انجام دینے سے پروردگار کی رضایت کا ارادہ رکھتا ہو اور کسی بھی ایسی چیز کا ارادہ نہ رکھتا ہو جو اس سے منا فات رکھتی ہو۔2-نیت اسکے مخصوص مقام پر کی جائے(جیسے میقات وغیرہ)۔3-جس عبادت کیلے احرام باندھا جارہا ہے اسے معین کرنا جیسے حج،عمرہ،حج ،تمتع،قران وغیرہ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:133 | volume:0


Answer-3: نیت میں تین باتوں کا خیال رکھنا ضروری ہے۔1-قصد قربت دوسری عبادتوں کی طرح۔(احرام کے علاوہ)2-احرام باندھتے وقت ینت کرنی چاہیے۔3-جس عبادت کیلے احرام باندھا جا رہا ہے اسے معین کر نا جیسے حج،عمرہ،حج تمتع،حجۃالاسلام،وغیرہ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:170 | volume:0


Answer-4: نیت میں تین باتوں کا خیال رکھنا ضروری ہے۔1-احرام پہننے کے وقت سے حج یا عمرہ کے اعمال کو انجام دینے کا قصد وارادہ رکھتا ہو۔2-قصد قر بۃ الی اللہ کے ساتھ ہو اور نیت خالصاً اطاعت پروردگار کے لئے ہو۔3-جس عبادت کیلئے احرام باندھا جارہا ہے اسے معین کرنا جیسے حج،عمرہ،حج ،تمتع،قران وغیرہ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی خامنہ ای | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:170 | volume:0


Answer-5: نیت میں تین باتوں کا خیال رکھنا ضروری ہے۔1-احرام پہننے کے وقت سے حج یا عمرہ کے اعمال کو انجام دینے کا قصد وارادہ رکھتا ہو۔2-قصد قر بۃ الی اللہ کے ساتھ ہو اور نیت خالصاً اطاعت پروردگار کے لئے ہو۔3-جس عبادت کیلئے احرام باندھا جارہا ہے اسے معین کرنا جیسے حج،عمرہ،حج ،تمتع،قران وغیرہ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی خامنہ ای | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:171 | volume:0


Answer-6: نیت میں تین باتوں کا خیال رکھنا ضروری ہے۔1-عمل خالصاً خدا کیلئے انجام دیا جائے۔2-نیت عمل کے شروع کرتے وقت کی جائے۔3- جس عبادت کیلے احرام باندھا جا رہا ہے اسے معین کرنا جیسے حج ،عمرہ،حج تمتع،حج قران وغیرہ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:96 | volume:0



60

Category : حج

Question : کیا نیت کے صحیح ہونے کیلے اسکا زبان پر جاری کرنا ضروری ہے؟


Answer-1: نیت کے صیحیح ہونے کیلے اسکا زبان پر جاری کرنا ضروری نہیں ہے۔لیکن ایسا کرنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:134 | volume:0


Answer-2: نیت کے صحیح ہونے کیلے اسکا زبان پر جاری کرنا ضروری نہیں ہے بلکہ فقط پروردگار کے تقرب کی غرض سے انجام دنیا کفایت کرتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:97 | volume:0



61

Category : روزہ

Question : جس دن کے بارے میں معلوم نہ ہو کہ رمضان کی پہلی ہے یا شعبان کی تیسویں اگر اس دن روزہ رکھنا چاہیں تو کیا نیت کریں ؟


Answer-1: جس دن کے بارے میں معلوم نہ ہو کہ رمضان کی پہلی ہے یا شعبان کی تیسویں اگر اس دن روزہ رکھنا چاہیں تو قضا روزے یا مستحب روزے کی نیت کریں اور اگر بعد میں پتا چلے کہ ماہ رمضان کی پہلی تاریخ تھی تو وہ رمضان کا روزہ شمار ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:295 | volume:0


Answer-2: جس دن کے بارے میں معلوم نہ ہو کہ رمضان کی پہلی ہے یا شعبان کی تیسویں اگر اس دن روزہ رکھنا چاہیں تو قضا روزے یا مستحب روزے کی نیت کریں اور اگر بعد میں پتا چلے کہ ماہ رمضان کی پہلی تاریخ تھی تو وہ رمضان کا روزہ شمار ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:240 | volume:0


Answer-3: جس دن کے بارے میں معلوم نہ ہو کہ رمضان کی پہلی ہے یا شعبان کی تیسویں اگر اس دن روزہ رکھنا چاہیں تو قضا روزے یا مستحب روزے کی نیت کریں اور اگر بعد میں پتا چلے کہ ماہ رمضان کی پہلی تاریخ تھی تو وہ رمضان کا روزہ شمار ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:271 | volume:0


Answer-4: جس دن کے بارے میں معلوم نہ ہو کہ رمضان کی پہلی ہے یا شعبان کی تیسویں اگر اس دن روزہ رکھنا چاہیں تو قضا روزے یا مستحب روزے کی نیت کریں اور اگر بعد میں پتا چلے کہ ماہ رمضان کی پہلی تاریخ تھی تو وہ رمضان کا روزہ شمار ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:278 | volume:0



62

Category : نماز

Question : اگر ہم بیٹھ کر نماز پڑھ رہے ہوں تو رکوع کرنے کا طریقہ کیا ہے؟


Answer-1: جو شخص بیٹھ کر نماز پڑھ رہا ہورکوع میں ضروری ہے کہ اتنا جھکے کہ اس کا چہرہ زانوکے مدمقابل آجائے اور بہترہے اتنا جھکے کہ اسکا چہرہ سجدہ گاہ کے مدمقابل آجائے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:198 | volume:0


Answer-2: جو شخص بیٹھ کر نماز پڑھ رہا ہورکوع میں ضروری ہے کہ اتنا جھکے کہ اس کا چہرہ زانوکے مدمقابل آجائے اور بہترہے اتنا جھکے کہ اسکا چہرہ سجدہ گاہ کے نزدیک آجائے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:161 | volume:0


Answer-3: جو شخص بیٹھ کر نماز پڑھ رہا ہورکوع میں ضروری ہے کہ اتنا جھکے کہ اس کا چہرہ زانوکے مدمقابل آجائے اور بہترہے اتنا جھکے کہ اسکا چہرہ سجدہ گاہ کے نزدیک آجائے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:177 | volume:0


Answer-4: جو شخص بیٹھ کر نماز پڑھ رہا ہورکوع میں ضروری ہے کہ اتنا جھکے کہ اس کا چہرہ زانوکےمد مقابل آجائے اور احتیاط یہ ہےکہ اتنا جھکے کہ جتنا کھڑے ہوکر نماز پڑھنے والا رکوع میں جھکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:184 | volume:0



63

Category : نماز

Question : اگر کوئی نمازی قرات کے دوران شک کرے کہ اس نے سورہ کی کوئی آیت صحیح پڑھی یا نہیں تو اس کا وظیفہ کیا ہے؟


Answer-1: اگر نماز کی قرات کے دوران شک ہو جائے کہ کسی آیت کو صحیح پڑھا یا نہیں تو اس کی نماز صحیح ہےاور احتیاطاً آیت کو صحیح طور سے پڑھنا چاھے تو پڑھ سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:197 | volume:0


Answer-2: اگر نماز کی قرات کے دوران شک ہو جائے کہ کسی آیت کو صحیح پڑھا یا نہیں تو اس کی نماز صحیح ہےاور احتیاطاً آیت کو صحیح طور سے پڑھنا چاھے تو پڑھ سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:159 | volume:0


Answer-3: اگر نماز کی قرات کے دوران شک ہو جائے کہ کسی آیت کو صحیح پڑھا یا نہیں تو اس کی نماز صحیح ہےاور احتیاطاً آیت کو صحیح طور سے پڑھنا چاھے تو پڑھ سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:175 | volume:0


Answer-4: اگر نماز کی قرات کے دوران شک ہو جائے کہ کسی آیت کو صحیح پڑھا یا نہیں اور اس آیت سے فارغ ہو چکا ہو تو اس کی نماز صحیح ہےاور احتیاطاً آیت کو صحیح طور سے پڑھنا چاھے تو پڑھ سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:183 | volume:0



64

Category : نماز

Question : اگر نماز پڑھنےوالے کے پاس کسی نجس مردار کی کوئی چیز مثلاًہڈی یا کھال ہو تو نماز پڑھنے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر نماز پڑھنے والے کے پاس کسی نجس مردار کی کوئی چیز ہو تو اس کے ساتھ نماز پڑھنے میں کوئی حرج نہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:163 | volume:0


Answer-2: احتیاط واجب کی بنا ء پر نماز پڑھنے والے کے پاس مردار کی ایسی چیز جس میں روح ہو، نہیں ہونی چائیے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:132 | volume:0


Answer-3: اگر نماز پڑھنے والے کے پاس کسی نجس مردار کی ایسی کوئی چیزہو جسمیں روح ہوتی ہے تو اس کی نماز صحیح نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:146 | volume:0


Answer-4: احتیاط واجب کی بنا ء پر نماز پڑھنے والے کے پاس مردار کی ایسی چیز جس میں روح ہو، نہیں ہونی چائیے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:152 | volume:0



65

Category : نماز

Question : کیا رکوع کرتے وقت ہاتھوں کو گھٹنوں پر رکھناضروری ہے؟


Answer-1: رکوع میں رکوع کی مقدار تک جھکنا ضروری ہے ہاتھوں کا گھٹنوں پر رکھنا ضروری نہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:198 | volume:0


Answer-2: رکوع میں رکوع کی مقدار تک جھکنا ضروری ہے ہاتھوں کا گھٹنوں پر رکھنا ضروری نہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:160 | volume:0


Answer-3: رکوع میں رکوع کی مقدار تک جھکنا ضروری ہے ہاتھوں کا گھٹنوں پر رکھنا ضروری نہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:176 | volume:0


Answer-4: رکوع میں رکوع کی مقدار تک جھکنا ضروری ہے ہاتھوں کا گھٹنوں پر رکھنا ضروری نہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:184 | volume:0



66

Category : وضو

Question : کیا کافر کو قرآن دیاجاسکتاہے؟


Answer-1: کافر کو قرآن دینے سے قرآن کی بے حرمتی ہوتی ہو تو کافر کو قرآن نہیں دے سکتے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:28 | volume:0


Answer-2: احتیاط واجب کی بنا پر کافر کو قرآن دینا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:21 | volume:0


Answer-3: کافر کو قرآن دینے سے قرآن کی بے حرمتی ہوتی ہو تو کافر کو قرآن نہیں دے سکتے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:24 | volume:0


Answer-4: کافر کو قرآن دینے سے قرآن کی بے حرمتی ہوتی ہو تو کافر کو قرآن نہیں دے سکتے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:26 | volume:0



67

Category : وضو

Question : کیا ضروری ہےکہ بچوں کو قرآن چھونے سے روکا جائے ؟


Answer-1: اگر بچوں کے قرآن کو چھونے کی وجہ سے قرآن کی بے احترامی ہوتی ہو تو روکنا ضروری ہے ورنہ ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:61 | volume:0


Answer-2: اگر بچوں کے قرآن کو چھونے کی وجہ سے قرآن کی بے احترامی ہوتی ہو تو روکنا ضروری ہے ورنہ ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:48 | volume:0


Answer-3: اگر بچوں کے قرآن کو چھونے کی وجہ سے قرآن کی بے احترامی ہوتی ہو تو روکنا ضروری ہے ورنہ ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:55 | volume:0


Answer-4: اگر بچوں کے قرآن کو چھونے کی وجہ سے قرآن کی بے احترامی ہوتی ہو تو روکنا ضروری ہے ورنہ ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:57 | volume:0



68

Category : وضو

Question : آیا قرآن پڑھنے کے لیے وضو کرنا مستحب ہے؟


Answer-1: مشہور کی نگاہ میں قرآن پڑھنے کے لیے وضو کرنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:61 | volume:0


Answer-2: قرآن پڑھنے کے لیے وضو کرنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:48 | volume:0


Answer-3: قرآن پڑھنے کے لیے وضو کرنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:55 | volume:0


Answer-4: قرآن پڑھنے کے لیے وضو کرنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:57 | volume:0



69

Category : وضو

Question : آیا بغیرو ضو قرآن پڑھ سکتے ہیں؟


Answer-1: و ضوکے بغیر قرآن کو پڑھاجا سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:61 | volume:0


Answer-2: و ضوکے بغیر قرآن کو پڑھاجا سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:48 | volume:0


Answer-3: و ضوکے بغیر قرآن کو پڑھاجا سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:55 | volume:0


Answer-4: و ضوکے بغیر قرآن کو پڑھاجا سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:57 | volume:0



70

Category : وضو

Question : وضو کے بغیر قرآن کے ترجمے کو چھونے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: وضو کے بغیر قرآن کے ترجمے کو چھونا جائز ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:61 | volume:0


Answer-2: وضو کے بغیر قرآن کے ترجمے کو چھونا جائز ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:48 | volume:0


Answer-3: وضو کے بغیر قرآن کے ترجمے کو چھونا جائز ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:55 | volume:0


Answer-4: وضو کے بغیر قرآن کے ترجمے کو چھونا جائز ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:56 | volume:0



71

Category : نماز

Question : اگر صبح کی نماز میں شک ہو جائے کہ پہلی رکعت ہے یا دوسری تو نماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر صبح کی نماز میں شک ہو جائے کہ پہلی رکعت ہے یا دوسری اور شک باقی رہے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:0 | volume:1


Answer-2: اگر صبح کی نماز میں شک ہو جائے کہ پہلی رکعت ہے یا دوسری اور شک باقی رہے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:182 | volume:1


Answer-3: اگر صبح کی نماز میں شک ہو جائے کہ پہلی رکعت ہے یا دوسری اور شک باقی رہے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:249 | volume:2


Answer-4: اگر صبح کی نماز میں شک ہو جائے کہ پہلی رکعت ہے یا دوسری تو واجب ہے غور کرے اگر پھر بھی شک باقی رہے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:249 | volume:2



72

Category : نماز

Question : اگر نماز میں سورہ پڑھنے کے دوران یاد آئے کہ حمد نہیں پڑھی تو کیا کیا جائے؟


Answer-1: اگر نماز میں سورہ پڑھتے ہوئے یاد آئے کہ حمد نہیں پڑھی تو سورہ کو چھوڑ کر حمد پڑھے اور پھر مکمل سورہ پڑھے گا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:191 | volume:0


Answer-2: اگر نماز میں سورہ پڑھتے ہوئے یاد آئے کہ حمد نہیں پڑھی تو سورہ کو چھوڑ کر حمد پڑھے اور پھر مکمل سورہ پڑھے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:154 | volume:0


Answer-3: اگر نماز میں سورہ پڑھتے ہوئے یاد آئے کہ حمد نہیں پڑھی تو سورہ کو چھوڑ کر حمد پڑھے اور پھر مکمل سورہ پڑھے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:170 | volume:0


Answer-4: اگر نماز میں سورہ پڑھتے ہوئے یاد آئے کہ حمد نہیں پڑھی تو سورہ کو چھوڑ کر حمد پڑھے اور پھر مکمل سورہ پڑھے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:177 | volume:0



73

Category : نماز

Question : رکوع کسے کہتے ہیں؟


Answer-1: نماز میں قرآت کے بعد اتنی مقدار میں کمر کا خم کرنا کہ ہاتھوں کی انگلیاں اور انگوٹھوں کے سرے گھٹنوں تک پہنچ جائیں ،رکوع کہلاتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:عروۃالوثقیٰ | Page:211 | volume:2


Answer-2: نماز میں قرآت کے بعد اتنی مقدار میں کمر کا خم کرنا کہ ہاتھوں کی انگلیاں اور انگوٹھوں کے سرے گھٹنوں تک پہنچ جائیں ،رکوع کہلاتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:عروۃالوثقیٰ | Page:211 | volume:2


Answer-3: نماز میں قرآت کے بعد اتنی مقدار میں کمر کا خم کرنا کہ ہاتھوں کی انگلیاں اور انگوٹھوں کے سرے گھٹنوں تک پہنچ جائیں ،رکوع کہلاتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:عروۃالوثقیٰ | Page:211 | volume:2


Answer-4: نماز میں قرآت کے بعد اتنی مقدار میں کمر کا خم کرنا کہ ہاتھوں کی انگلیاں اور انگوٹھوں کے سرے گھٹنوں تک پہنچ جائیں ،رکوع کہلاتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:184 | volume:0



74

Category : طہارت

Question : کیا پیشاب کرنے کے بعد پانی کے علاوہ کسی اور چیز سے پاک کرسکتے ہیں؟


Answer-1: مقام پیشاب پانی کے علاوہ کسی بھی دوسری چیز سے پاک نہیں ہو سکتا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:18 | volume:0


Answer-2: مقام پیشاب پانی کے علاوہ کسی بھی دوسری چیز سے پاک نہیں ہو سکتا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:12 | volume:0


Answer-3: مقام پیشاب پانی کے علاوہ کسی بھی دوسری چیز سے پاک نہیں ہو سکتا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:14 | volume:0


Answer-4: مقام پیشاب پانی کے علاوہ کسی بھی دوسری چیز سے پاک نہیں ہو سکتا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:16 | volume:0



75

Category : روزہ

Question : کیا روزے کی حالت میں سوئمیگ کرنے سے روزہ باطل ہو جاتا ہے؟


Answer-1: روزے کی حالت میں اگر اسطرح سوئمنگ کریں کے پورا سر پانی میں ڈوب جائے،تو یہ کام شدید مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:301 | volume:0


Answer-2: روزے کی حالت میں اگر اسطرح سوئمنگ کریں کے پورا سر پانی میں ڈوب جائےتو احتیاط واجب کی بنا پر روزے کی قضا کرنی پڑے گی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:245 | volume:0


Answer-3: روزے کی حالت میں اگر اسطرح سوئمنگ کریں کے پورا سر پانی میں ڈوب جائے،تو روزہ باطل ہوجائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:276 | volume:0


Answer-4: روزے کی حالت میں اگر اسطرح سوئمنگ کریں کے پورا سر پانی میں ڈوب جائے،تو روزہ باطل ہوجائے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:284 | volume:0



76

Category : طہارت

Question : کرُ پانی کسے کہتے ہیں؟


Answer-1: اگر کسی ظرف میں 36 کیوبک بالشت پانی ہو تو یہ کرُ پانی کہلائے گا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:10 | volume:0


Answer-2: اگر کسی ظرف میں جس کی لمبائی ،چوڑائی اور گہرائی ہر ایک ساڑے تین بالش پانی ہو تو یہ کر پانی کہلائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:5 | volume:0


Answer-3: اگر کسی ظرف میں 27کیوبک بالشت پانی ہو تو یہ کرُ پانی کہلائے گا

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:9 | volume:0


Answer-4: اگر کسی ظرف میں 27کیوبک بالشت پانی ہو تو یہ کرُ پانی کہلائے گا

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:7 | volume:0



77

Category : طہارت

Question : کیا انگور یا تربوز کا رس مضاف پانی کہلاتا ہے ؟


Answer-1: انگور یا تربوز کا رس مضاف پانی میں شمار ہوتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:10 | volume:0


Answer-2: انگور یا تربوز کا رس مضاف پانی میں شمار ہوتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:5 | volume:0


Answer-3: انگور یا تربوز کا رس مضاف پانی میں شمار ہوتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:7 | volume:0


Answer-4: انگور یا تربوز کا رس مضاف پانی میں شمار ہوتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:9 | volume:0



78

Category : روزہ

Question : کیا عرفہ(۹ذی الحجہ)کے دن کا روزہ رکھنا مستحب ہے؟


Answer-1: عرفہ کے دن کا روزہ مستحب ہے لیکن اگر روزے کی وجہ سے کمزوری کے سبب عرفہ کے دن کی دعائیں نہ پڑھ سکے تو مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:323 | volume:0


Answer-2: عرفہ کے دن کا روزہ مستحب ہے لیکن اگر روزے کی وجہ سے کمزوری کے سبب عرفہ کے دن کی دعائیں نہ پڑھ سکے تومکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:265 | volume:0


Answer-3: عرفہ کے دن کا روزہ مستحب ہے لیکن اگر روزے کی وجہ سے کمزوری کے سبب عرفہ کے دن کی دعائیں نہ پڑھ سکے تو مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:300 | volume:0


Answer-4: عرفہ کے دن کا روزہ مستحب ہے لیکن اگر روزے کی وجہ سے کمزوری کے سبب عرفہ کے دن کی دعائیں نہ پڑھ سکے تو مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:304 | volume:0



79

Category : روزہ

Question : ماہ رمضان میں روزہ کی حالت میں انجکشن لگانے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: روزے کی حالت میں انجکشن لگوانے سے روزہ باطل نہیں ہوتا اگر چہ یہ انجکشن طاقت کیلئے ہی کیوں نہ ہو۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:297 | volume:0


Answer-2: روزے کی حالت میں احتیاط واجب کی بنا پر غذا کی جگہ استعمال ہونے والے انجکشن نہ لگوایں لیکن عضو کو بے حس کرنے والے یا دوا کے طور پر استعمال ہونے والے انجکشن لگوانے میں کوئی حرج نہیں ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:242 | volume:0


Answer-3: روزے کی حالت میں دوا کے طور پر یا سُن کرنے کیلئے استعمال ہونے والے انجکشن کے استعمال میں کوئی حرج نہیں البتہ بہتر ہے کہ دوا اور غذا کے طور پر استعمال ہونے والے انجکشن سے پرہیز کیا جائے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:272 | volume:0


Answer-4: روزے کی حالت میں احتیاط واجب یہ ہے کہ روزہ دار ان انجکشنوں سے جو طاقت یا غذا کیلئے استعمال ہوتے ہوں اور ان انجکشنوں سے جو رگ میں لگائے جاتے ہیں اجتناب کرے لیکن وہ انجکشن جو دوا کیلئے گوشت میں لگائے جاتے ہیں اور جو عضو کو سُن کرنے کیلئے استعمال ہوتےہیں لگوانے میں کوئی حرج نہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی خامنہ ای | Book:اجوبۃ الاستفتاات | Page:158 | volume:0


Answer-5: روزے کی حالت میں دوا کے طور پر یا سُن کرنے کیلئے استعمال ہونے والے انجکشن کے استعمال میں کوئی حرج نہیں البتہ احتیاط مستحب کی بنا پر پانی یا غذا کے طور پر استعمال ہونے والے انجکشن سے پرہیز کیا جائے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:280 | volume:0



80

Category : روزہ

Question : ماہ رمضان میں ہر دن کے روزے کی نیت کرنا ضروری ہے یا ایک مرتبہ پورے مہینے کے روزوں کی نیت کی جاسکتی ہے؟


Answer-1: ماہ رمضان میں ہر دن روزے کی نیت کرنا ضروری نہیں ہے بلکہ پورے مہینے کے روزوں کی ایک ساتھ بھی نیت کی جاسکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:297 | volume:1


Answer-2: ماہ رمضان میں ہر دن روزے کی نیت علیحدہ بھی کی جاسکتی ہے لیکن بہتر ہے کہ پہلی رمضان کی رات پورے مہینے کی نیت بھی کر لے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:238 | volume:0


Answer-3: ماہ رمضان میں ہر دن روزے کے کی نیت علیحدہ بھی کی جاسکتی ہے لیکن بہتر ہے کہ پہلی رمضان کی رات پورے مہینے کی نیت بھی کر لے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:268 | volume:0


Answer-4: ماہ رمضان میں ہر دن کے روزے کی نیت علیحدہ بھی کی جاسکتی ہے۔اور پورے مہینے کی ایک ساتھ بھی کی جاسکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:275 | volume:0



81

Category : نماز

Question : نماز اور روزہ کے قصر کیلئے کتنا فاصلہ کرنا ضروری ہے؟


Answer-1: پورا سفر ۸فرسخ (تقریباً ۴۴ کلومیٹر)ہونا ضروری ہے چاہے کوئی ایک طرف ۴ فرسخ سے کم ہی کیوں نہ ہو ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:248 | volume:0


Answer-2: ضروری ہے کہ پورا سفر ۸ فرسخ (تقریباً ۴۴ کلومیٹر) سے کم نہ ہو اور رفت و آمد دونوں میں کوئی بھی ۴ فرسخ سے کم نہ ہو ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:222 | volume:0


Answer-3: پورا سفر ۸ فرسخ (تقریباً ۴۴ کلومیٹر)سے کم نہ ہو اور جانے اور آنے میں سے کوئی بھی ۴ فرسخ سے کم نہ ہو۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:231 | volume:0


Answer-4: نماز اور روزہ کے قصر کیلئے ضروری ہے کہ رفت و آمد ۸ فرسخ شرعی (45کلومیٹر) ہونا چاہئے ،اس شرط کے ساتھ کے جانا ۴ فرسخ سے کم نہ ہو ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:استفتاات | Page:194 | volume:1



82

Category : نماز

Question : کیا ایک نماز و حشتِ قبر ایک سے زیادہ افراد کے لئے پڑھی جاسکتی ہے ؟


Answer-1: اگر ایک ساتھ انتقال ہوا ہو اور ایک ہی وقت میں دفن ہوئے ہوں تو رجاء کی نیت سے ایک نماز وحشت قبرپڑھی جاسکتی ہے ورنہ ہر ایک کے لئے جدا نماز ادا کی جانی چاہئے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:استفتاات | Page:5 | volume:0


Answer-2: اگر مستحب پر عمل کرنا چاہتے ہیں تو ہر جنازے کے لئے الگ نماز ِو حشتِ قبر ادا کرنی ہو گی۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:استفتاات | Page:5 | volume:0



83

Category : نماز

Question : ایک جنازے پر ایک سے زیادہ نماز میت پڑھی جاسکتی ہے؟


Answer-1: ایک جنازے پر ایک سے زیادہ نماز میت پڑھی جاسکتی ہے مکروہ بھی نہیں ہے خصوصاً اگر میت کسی عالم یا صاحب تقویٰ شخص کی ہو۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:113 | volume:0


Answer-2: میت پر ایک سے زیادہ نماز پڑھنا مکروہ ہے البتہ میت کسی عالم یا صاحب تقویٰ کی ہو تو مکروہ نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:92 | volume:0


Answer-3: میت پر ایک سے زیادہ نماز پڑھنا مکروہ ہے البتہ میت کسی عالم یا صاحب تقویٰ کی ہو تو مکروہ نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:102 | volume:0


Answer-4: جائز ہے ایک میت پر ایک سے زیادہ مرتبہ نماز پڑھی جائے

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:108 | volume:0



84

Category : نماز

Question : کیا ایک نماز جنازہ ایک سے زیادہ جنازوں پر پڑھی جاسکتی ہے؟


Answer-1: ایک نماز جنازہ ایک سے زیادہ جنازوں پر پڑھی جاسکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:101 | volume:1


Answer-2: ایک نماز جنازہ ایک سے زیادہ جنازوں پر پڑھی جاسکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:77 | volume:1


Answer-3: ایک نماز جنازہ ایک سے زیادہ جنازوں پر پڑھی جاسکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:97 | volume:2


Answer-4: ایک نماز جنازہ ایک سے زیادہ جنازوں پر پڑھی جاسکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:97 | volume:2



85

Category : غسل

Question : کیا غسل جنابت کے دوران حدثِ اصغر جیسے پیشاب کرنے سے غسل باطل ہوجاتا ہے؟


Answer-1: اگر غسل کے دوران حدث اصغر سر زد ہوجائےتو غسل کو مکمل کرسکتا ہے اور احتیاط لازم کی بنا پر وضو بھی کرے لیکن اگر غسل ترتیبی کو چھوڑ کر ارتماسی یا برعکس کرے تو وضو بھی لازم نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:72 | volume:0


Answer-2: اگر غسل کے دوران اس سے حدثِ اصغر سرزد ہوجائے مثلاً پیشاب کرے تو غسل باطل نہیں ہوتا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:58 | volume:0


Answer-3: اگر غسل کے دوران اس سے حدث اصغر سرزد ہوجائے مثلاً پیشاب کرے تو چاہئے غسل کو چھوڑے اور دوسرا غسل کرے اور چنانچہ غسل ترتیبی کرنا چاہتا ہو تو احتیاط مستحب کی بنا پر وضو بھی کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:65 | volume:0


Answer-4: اگر غسل کے دوران حدثِ اصغر سرزد ہوجائے مثلاً پیشاب کرےبنا پر احتیاط واجب غسل کو مکمل کرے اور دوسرا غسل بھی کرے اور وضو بھی کرے مگر یہ کہ غسل ترتیبی سے غسل ارتماسی کی طرف عدول کرلے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:68 | volume:0



86

Category : نماز

Question : پیش نماز کی شرائط میں ایک شرط اسکا عادل ہونا ہےاس سے کیا مراد ہے؟


Answer-1: پیش نماز کے لئے عادل ہونے سے مرادواجبات کو انجام دیتا ہو اور حرام سے بچتا ہو اس کی پہچان ظاہر حال ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:277 | volume:0


Answer-2: پیش نماز کے لئے عادل ہونے سے مراد نفسانی حالت ہے جسکا لازمہ تقویٰ ہے اور جو گناہ کبیرہ وصغیرہ سے روکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:249 | volume:1


Answer-3: پیش نماز کے لئے عادل ہونے سے مرادواجبات کو انجام دیتا ہو اور حرام سے بچتا ہو اس کی پہچان ظاہر حال ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:4 | volume:0


Answer-4: پیش نماز کے لئے عادل ہونے سے مرادواجبات کو انجام دیتا ہو اور حرام سے بچتا ہو اس کی پہچان ظاہر حال ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0



87

Category : طہارت

Question : میت کے بدن کا کوئی حصہ غسل سے پہلے الگ ہوجائے تو کیا اسے چھونے کی صورت میں غسل مس میت واجب ہے؟


Answer-1: میت کے بدن کا کوئی حصہ غسل سے پہلے الگ ہوجائے تو اسے چھونے سے غسل مس میت واجب نہیں ہوتا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:102 | volume:0


Answer-2: میت کے بدن کا کوئی حصہ غسل سے پہلے الگ ہوجائے تو اسے چھونے سے غسل مس میت واجب ہوجاتاہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:83 | volume:0


Answer-3: میت کے بدن کا وہ حصہ جو ہڈی پر مشتمل ہو اگر غسل سے پہلے الگ ہو جائے اسے مس کرنے کی صورت میں مس میت واجب ہوجائےگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:92 | volume:0


Answer-4: میت کے بدن کا وہ حصہ جو ہڈی پر مشتمل ہو اگر غسل سے پہلے الگ ہو جائے اسے مس کرنے کی صورت میں احتیاط کی بنا پرغسل مس میت واجب ہوجائے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:98 | volume:0



88

Category : طہارت

Question : اگر زندہ انسان کے بدن کا کوئی حصہ کٹ جائے تو ہاتھ لگانے سے غسل مس میت واجب ہوتا ہے ؟


Answer-1: اگرزندہ انسان کا کو ئی حصہ کٹ جائے تو اسے ہاتھ لگانے سے غسل مس میت واجب نہیں ہوتا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:102 | volume:0


Answer-2: اگرزندہ انسان کا ھڈی والا حصہ کٹ جائے جسےغسل نہ دیا ہو تواسے مس کرنے سےغسل میت واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:83 | volume:0


Answer-3: اگرزندہ انسان کا ھڈی والا حصہ کٹ جائے جسےغسل نہ دیا ہو تواسے مس کرنے سےغسل میت واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:92 | volume:0


Answer-4: اگرزندہ انسان کا کو ئی حصہ کٹ جائے تو اسے ہاتھ لگانے سے غسل مس میت واجب نہیں ہوتا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:98 | volume:0



89

Category : حج

Question : گونگے شخص کا تلبیہ کہنے کی نسبت کیا وظیفہ ہے؟


Answer-1: گونگا شخص تلبیہ کہنے کیلئے اپنی زبان اور ہونٹوں کو کسی تلبیہ کہنے والے کی طرح حرکت دے اور اپنی انگلی سے بھی اشارہ کرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:137 | volume:0


Answer-2: گونگا شخص تلبیہ کہنے کیلئے اپنی زبان اور ہونٹوں کو کسی تلبیہ کہنے والے کی طرح حرکت دے اور اپنی انگلی سے بھی اشارہ کرے۔اور اپنی طرف سے تلبیہ کہنے کے لئے نائب بھی بنائے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:99 | volume:0



90

Category : حج

Question : غیر ممیز بچہ کا تلبیہ کی نسبت کیا وظیفہ ہے؟


Answer-1: غیر ممیز بچہ کی جگہ کوئی اور تلبیہ کہے گا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:137 | volume:0


Answer-2: غیر ممیز بچہ کی جگہ کوئی اور تلبیہ کہے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:99 | volume:0



91

Category : نماز

Question : کیا مستحب نماز میں روبقبلہ ہونا ضروری ہے؟


Answer-1: اگر سواری میں یا راہ چلتے ہوئے مستحب نماز ادا کی جائے تو قبلہ رخ ہونا ضروری نہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:155 | volume:0


Answer-2: اگر سواری میں یا راہ چلتے ہوئے مستحب نماز ادا کی جائے تو قبلہ رخ ہونا ضروری نہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:125 | volume:0


Answer-3: اگر سواری میں یا راہ چلتے ہوئے مستحب نماز ادا کی جائے تو قبلہ رخ ہونا ضروری نہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:139 | volume:0


Answer-4: اگر سواری میں یا راہ چلتے ہوئے مستحب نماز ادا کی جائے تو قبلہ رخ ہونا ضروری نہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:145 | volume:0



92

Category : نماز

Question : جب نماز قصر ہو کیا ظہر اور عصر کی نافلہ (نوافل) پڑھ سکتے ہیں؟


Answer-1: جب نماز قصر ہو تو ظہر اور عصر کی نوافل نہیں پڑھ سکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:153 | volume:0


Answer-2: جب نماز قصر ہو تو ظہر اور عصر کی نوافل نہیں پڑھ سکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:123 | volume:0


Answer-3: جب نماز قصر ہو تو ظہر اور عصر کی نوافل نہیں پڑھ سکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:136 | volume:0


Answer-4: جب نماز قصر ہو تو ظہر اور عصر کی نوافل نہیں پڑھ سکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:143 | volume:0



93

Category : کھانے پینے کے احکام

Question : کیا حلال گوشت جانور کا خون پینا حلال ہے؟


Answer-1: جانور کا خون پینا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:514 | volume:0


Answer-2: جانور کا خون پینا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:419 | volume:0


Answer-3: جانور کا خون پینا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:390 | volume:3


Answer-4: جانور کا خون پینا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:513 | volume:0



94

Category : نماز

Question : نماز جمعہ کا وقت کب تک باقی رہتا ہے؟


Answer-1: نماز جمعہ کا وقت اول عرفی زوال ہے اس سے تا خیر کی صورت میں ظہر واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:144 | volume:0


Answer-2: احتیاط واجب کی بنا پر نماز جمعہ کا وقت اول عرفی ظہر ہے اس سے تا خیر کی صورت میں ظہر واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:117 | volume:0


Answer-3: نماز جمعہ کا وقت شاخص کا سایہ شاخص کے برابر ہونے تک باقی رہتا ہے اس کے بعد ظہر واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:129 | volume:0


Answer-4: احتیاط واجب کی بنا پرنماز جمعہ کا وقت اول ظہر شرعی ہے اس سے تا خیر کی صورت میں ظہر واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:137 | volume:0



95

Category : طہارت

Question : اگر حمام کی ٹونٹی کے نیچے کسی کپڑے کو اک کر یں تو وہ پانی جو کپڑے سے نیچے گررہا ہے پاک ہوگا یا نجس؟


Answer-1: اگر حمام کی ٹونٹی کا پانی کر ُ پانی سے منصل ہو اور وہ نجس لباس کو لگ کر نیچے آیا ہو اسمیں اتصال موجود ہو اور پانی میں نجاست کا رنگ بو اور زائقہ نہ ہو اور کوئی عینی نجاست بھی نہ ہو تو پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:11 | volume:0


Answer-2: اگر حمام کی ٹونٹی کا پانی کر ُ پانی سے منصل ہو اور وہ نجس لباس کو لگ کر نیچے آیا ہو اسمیں اتصال موجود ہو اور پانی میں نجاست کا رنگ بو اور زائقہ نہ ہو تو پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0


Answer-3: اگر حمام کی ٹونٹی کا پانی کر ُ پانی سے منصل ہو اور وہ نجس لباس کو لگ کر نیچے آیا ہو اسمیں اتصال موجود ہو اور پانی میں نجاست کا رنگ بو اور زائقہ نہ ہو اور کوئی عینی نجاست بھی نہ ہو تو پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:8 | volume:0


Answer-4: اگر حمام کی ٹونٹی کا پانی کر ُ پانی سے منصل ہو اور وہ نجس لباس کو لگ کر نیچے آیا ہو اسمیں اتصال موجود ہو اور پانی میں نجاست کا رنگ بو اور زائقہ نہ ہو تو پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:10 | volume:0



96

Category : نماز

Question : قرآن میں واجب سجدے ہیں اس سے کیا مراد ہے؟


Answer-1: قرآن میں چار آیتیں ایسی ہیں کہ اگر ان میں سے کسی کو مکمل پڑھے یا سنے تو ضروری ہے کہ سجدہ کرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:عروۃالوثقیٰ | Page:241 | volume:2


Answer-2: قرآن میں چار آیتیں ایسی ہیں کہ اگر ان میں سے کسی کو مکمل پڑھے یا سنے تو ضروری ہے کہ سجدہ کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:170 | volume:0


Answer-3: قرآن میں چار آیتیں ایسی ہیں کہ اگر ان میں سے کسی کو مکمل پڑھے یا سنے تو ضروری ہے کہ سجدہ کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:187 | volume:0


Answer-4: قرآن میں چار آیتیں ایسی ہیں کہ اگر ان میں سے کسی کو مکمل پڑھے یا سنے تو ضروری ہے کہ سجدہ کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:194 | volume:0



97

Category : نماز

Question : قرآن میں کتنے واجب سجدے ہیں ؟


Answer-1: قرآن میں چار واجب سجدے ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:210 | volume:0


Answer-2: قرآن میں چار واجب سجدے ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:170 | volume:0


Answer-3: قرآن میں چار واجب سجدے ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:187 | volume:0


Answer-4: قرآن میں چار واجب سجدے ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:194 | volume:0



98

Category : نماز

Question : قرآن کے چار واجب سجدے کن سوروں میں ہیں ؟


Answer-1: قرآن کے چار واجب سجدے مندرجہ ذیل سوروں میں ہیں۔1- سورہ الم ہ تننزیلُ الکتٰب(سجدہ:32) 2-سورہ حمد سجدہ (فصلت: 41) 3- سورہ والنجم 4-سورہ اقرا(علق:96)

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:210 | volume:0


Answer-2: قرآن کے چار واجب سجدے مندرجہ ذیل سوروں میں ہیں۔1- سورہ الم ہ تننزیلُ الکتٰب(سجدہ:32) 2-سورہ حمد سجدہ (فصلت: 41) 3- سورہ والنجم 4-سورہ اقرا(علق:96)

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:170 | volume:0


Answer-3: قرآن کے چار واجب سجدے مندرجہ ذیل سوروں میں ہیں۔1- سورہ الم ہ تننزیلُ الکتٰب(سجدہ:32) 2-سورہ حمد سجدہ (فصلت: 41) 3- سورہ والنجم 4-سورہ اقرا(علق:96)

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:187 | volume:0


Answer-4: قرآن کے چار واجب سجدے مندرجہ ذیل سوروں میں ہیں۔1- سورہ الم ہ تننزیلُ الکتٰب(سجدہ:32) 2-سورہ حمد سجدہ (فصلت: 41) 3- سورہ والنجم 4-سورہ اقرا(علق:96)

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:194 | volume:0



99

Category : طہارت

Question : ایسا پانی جس کےکُرہونے کا یقین تھا پھر ہم شک کریں کہ ابھی بھی کرہے کہ نہیں تو ایسے پانی پر کر پانی کا حکم جاری ہوگا؟


Answer-1: ایسا پانی جس کےکرہونے کا یقین تھا پھر اسکے کر ہونے میں شک ہو جائے تو ایسے پانی پر کر کا حکم جاری ہوگا اور محض نجاست کے ملنے سے نجس نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:11 | volume:0


Answer-2: ایسا پانی جس کےکرہونے کا یقین تھا پھر اسکے کر ہونے میں شک ہو جائے تو ایسے پانی پر کر کا حکم جاری ہوگا اور محض نجاست کے ملنے سے نجس نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0


Answer-3: ایسا پانی جس کےکرہونے کا یقین تھا پھر اسکے کر ہونے میں شک ہو جائے تو ایسے پانی پر کر کا حکم جاری ہوگا اور محض نجاست کے ملنے سے نجس نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:8 | volume:0


Answer-4: ایسا پانی جس کےکرہونے کا یقین تھا پھر اسکے کر ہونے میں شک ہو جائے تو ایسے پانی پر کر کا حکم جاری ہوگا اور محض نجاست کے ملنے سے نجس نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:10 | volume:0



100

Category : طہارت

Question : جس پانی کے بارے میں یقین تھا کہ کُر سے کم ہے بعد میں شک ہو کہ کُرہوا ہے کہ نہیں تو ایسے پانی پر کُرکے احکام جاری ہونگے؟


Answer-1: جس پانی کے بارے میں یقین تھا کہ کُر سے کم ہے بعد میں شک ہو کہ کُرہوا ہے کہ نہیں تو اسے کُر سے کم ہی شمار کیا جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:11 | volume:0


Answer-2: جس پانی کے بارے میں یقین تھا کہ کُر سے کم ہے بعد میں شک ہو کہ کُرہوا ہے کہ نہیں تو اسے کُر سے کم ہی شمار کیا جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0


Answer-3: جس پانی کے بارے میں یقین تھا کہ کُر سے کم ہے بعد میں شک ہو کہ کُرہوا ہے کہ نہیں تو اسے کُر سے کم ہی شمار کیا جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:8 | volume:0


Answer-4: جس پانی کے بارے میں یقین تھا کہ کُر سے کم ہے بعد میں شک ہو کہ کُرہوا ہے کہ نہیں تو اسے کُر سے کم ہی شمار کیا جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:10 | volume:0