Question Answers

Compiled by Khatim-ul-Ambia University (Hausary Madressa) Karachi


201

Category : روزہ

Question : اگر کوئی مجبوری میں یا جان بوجھ کر قی کرے تو اسکے روزے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: جان بوجھ کر قی (الٹی) کرنے سے روزہ باطل ہوجاتا ہے چاہے مجبوری ہی میں کیوں نہ ہو۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:305 | volume:0


Answer-2: جان بوجھ کر قی (الٹی)کرنے سے روزہ باطل ہوجاتا ہے چاہے مجبوری ہی میں کیوں نہ ہو۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:250 | volume:0


Answer-3: جان بوجھ کر قی (الٹی)کرنے سے روزہ باطل ہوجاتا ہے چاہے مجبوری ہی میں کیوں نہ ہو۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:281 | volume:0


Answer-4: جان بوجھ کر قی (الٹی)کرنے سے روزہ باطل ہوجاتا ہے چاہے مجبوری ہی میں کیوں نہ ہو۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:289 | volume:0



202

Category : روزہ

Question : روزے کی حالت میں پانی میں سر ڈبونے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: روزے کی حالت میں پورے سر کو پانی میں ڈبونے سے روزہ باطل نہیں ہوتا لیکن شدید مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:301 | volume:0


Answer-2: اگر جان بوجھ کر پورے سر کو پانی میں ڈبوئیں تو احتیاط واجب کی بنا پر اس دن کا روزہ قضا کریں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:245 | volume:0


Answer-3: اگر جان بوجھ کر پورے سر کو پانی میں ڈبوئیں تواس کا روزہ باطل ہوجاتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:276 | volume:0


Answer-4: اگر جان بوجھ کر پورے سر کو پانی میں ڈبوئیں تواس کا روزہ باطل ہوجاتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:284 | volume:0



203

Category : روزہ

Question : اگر کوئی شخص روزے کی حالت میں زوال کےبعد سفر کرے تو اس کے روزے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص روزے کی حالت میں زوال کےبعد سفر کرے تو احتیاط کی بنا پر روزہ پورا کرے اس کا روزہ صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:317 | volume:0


Answer-2: اگرکوئی شخص روزے کی حالت میں زوال کےبعد سفر کرےتو اس پر واجب ہے اپنے روزے کو پورا کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:261 | volume:0


Answer-3: اگرکوئی شخص روزے کی حالت میں زوال کےبعد سفر کرےتو اس پر واجب ہے اپنے روزے کو پورا کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:294 | volume:0


Answer-4: اگرکوئی شخص روزے کی حالت میں زوال کےبعد سفر کرےتو اس پر واجب ہے اپنے روزے کو پورا کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:300 | volume:0



204

Category : روزہ

Question : رمضان میں روزہ چھوڑنے کا کفارہ کیا ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص رمضان کا روزہ چھوڑے تو اسے اس روزے کی قضا کے علاوہ ایک غلام آزاد کرنا یا دو مہینے روزے رکھنا یا ساٹھ فقیروں کو کھانا کھلانا (یا پھرہر فقیر کو۷۵۰گرام غذا دینا)۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:308 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص رمضان کا روزہ چھوڑے تو اسے اس روزے کی قضا کے علاوہ ایک غلام آزاد کرنا یا دو مہینے روزے رکھنا یا ساٹھ فقیروں کو کھانا کھلانا (یا پھرہر فقیر کو۷۵۰گرام غذا دینا)۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:252 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص رمضان کا روزہ چھوڑے تو اسے اس روزے کی قضا کے علاوہ ایک غلام آزاد کرنا یا دو مہینے روزے رکھنا یا ساٹھ فقیروں کو کھانا کھلانا (یا پھرہر فقیر کو۷۵۰گرام غذا دینا)۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:285 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص رمضان کا روزہ چھوڑے تو اسے اس روزے کی قضا کے علاوہ ایک غلام آزاد کرنا یا دو مہینے روزے رکھنا یا ساٹھ فقیروں کو کھانا کھلانا (یا پھرہر فقیر کو۷۵۰گرام غذا دینا)۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:291 | volume:0



205

Category : روزہ

Question : اگر حلق میں مکھی یا مچھر چلاجائے اور اگر اسے نکالنے کے لئے قی کرنا پڑے تو کیا قی کرنے سے روزہ باطل ہو جائے گا؟


Answer-1: اگر حلق میں مکھی یا مچھر وغیرہ چلا جائے اور اگر اسے نکالنے کے لئے قی کرنا پڑے تو قی کرنے سے روزہ باطل ہوجائےگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:305 | volume:0


Answer-2: اگر حلق میں مکھی یا مچھر وغیرہ چلا جائے اور اگر اسے نکالنے کے لئے قی کرنا پڑے تو قی کرنے سے روزہ باطل ہوجائےگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:250 | volume:0


Answer-3: اگر حلق میں مکھی یا مچھر وغیرہ چلا جائے اور اگر اسے نکالنے کے لئے قی کرنا پڑے تو قی کرنے سے روزہ باطل ہوجائےگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:282 | volume:0


Answer-4: اگر حلق میں مکھی یا مچھر وغیرہ چلا جائے اور اگراسے نکالنے کے لئے قی کرنا پڑے تو قی کرنے سے روزہ باطل ہوجائےگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:289 | volume:0



206

Category : روزہ

Question : روزے کی حا لت میں اگر ڈکار کے ساتھ کوئی چیز منہ میں آجائے اور اسے جان بوجھ کر نگل لیں روزے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: روزے کی حا لت میں اگر ڈکار کے ساتھ کوئی چیز منہ میں آجائے تو اسے جان بوجھ کر نگلنے سے احتیاط کی بنا پرروزہ باطل ہوجاتا ہے قضا اور کفارہ واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:309 | volume:0


Answer-2: روزے کی حا لت میں اگر ڈکار کے ساتھ کوئی چیز منہ میں آجائے تو اسے جان بوجھ کر نگلنے سےروزہ باطل ہوجاتا ہے قضا اور کفارہ واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:254 | volume:0


Answer-3: روزے کی حا لت میںاگر ڈکار کے ساتھ کوئی چیز منہ میں آجائے تو اسے جان بوجھ کر نگلنے سےروزہ باطل ہوجاتا ہے قضا اور کفارہ واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:286 | volume:0


Answer-4: روزے کی حا لت میں اگر ڈکار کے ساتھ کوئی چیز منہ میں آجائے تو اسے جان بوجھ کر نگلنے سےروزہ باطل ہوجاتا ہے قضاواجب ہے احتیاط کی بنا پرکفارہ بھی واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:293 | volume:0



207

Category : روزہ

Question : رمضان میں سفر کرنےکا کیا حکم ہے؟


Answer-1: رمضان میں غیر ضروری سفر کرنا مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:316 | volume:0


Answer-2: رمضان میں روزے سے بچنے کے ارادے سے سفر کرنا مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:260 | volume:0


Answer-3: رمضان میں روزے سے بچنے کے ارادے سے سفر کرنا مکروہ ہے۔البتہ اس ارادے کے بغیر بھی 24 رمضان سے پہلے سفر کرنا مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:293 | volume:0


Answer-4: رمضان میں سفر کرنا مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:299 | volume:0



208

Category : روزہ

Question : اگر کسی شخص کو صبح 10 بجے سفر پر جانا ہو تو کیا اس دن کا روزہ اس شخص پر واجب ہے؟


Answer-1: اگر کسی شخص کو ظہر سے پہلے سفر پر جانا ہو تو احتیاط واجب کی بنا پر اس دن کا روزہ نہیں رکھے گا لیکن حد تر خص عبور کرنے سے پہلے مبطلات روزہ سے پرہیز کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:317 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص ظہر سے پہلے سفر پر جاتا ہے تو حد ترخص پر پہنچ کرروزے کو باطل کردےگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:261 | volume:0


Answer-3: گر کوئی شخص ظہر سے پہلے سفر پر جاتا ہے اور اس نے رات ہی سے سفر کا ارادہ کیا ہے تو حد ترخص کے بعد روزہ باطل ہو جائے گا اگر رات سے ارادہ نہ ہو تو احتیاط واجب کی بنا پر روزہ مکمل کرے گا اور قضا بھی کرے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:294 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص ظہر سے پہلے سفر کرے تو حد ترخص پر پہنچ کر روزہ باطل ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:300 | volume:0



209

Category : روزہ

Question : اگر کوئی شخص ظہر سے پہلے اپنے شہر پہنچ جائے جبکہ اس نے صبح صادق سے کوئی روزہ بابل کرنے والا کام انجام نہ دیا ہو کیااسکا روزہ ہو جائے گا؟


Answer-1: اگر ظہر سے پہلے اپنے شہر پہنچ جائے جبکہ صبح صادق سے کوئی مبطل روزہ بھی انجام نہ دیا ہو تو احتیاط کی بنا پر واجب ہے روزہ رکھے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:318 | volume:0


Answer-2: اگر ظہر سے پہلے اپنے شہر پہنچ جائے جبکہ صبح صادق سے کوئی مبطل روزہ بھی انجام نہ دیا ہو توروزہ رکھنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:261 | volume:0


Answer-3: اگر ظہر سے پہلے اپنے شہر پہنچ جائے جبکہ صبح صادق سے کوئی مبطل روزہ بھی انجام نہ دیا ہو توروزہ رکھنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:294 | volume:0


Answer-4: اگر ظہر سے پہلے اپنے شہر پہنچ جائے جبکہ صبح صادق سے کوئی مبطل روزہ بھی انجام نہ دیا ہو توروزہ رکھنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:300 | volume:0



210

Category : روزہ

Question : اگر کوئی شخص پچھلے رمضان میں بیماری کی وجہ سے روزے نہ رکھ سکے اور وہ بیماری اس رمضان تک باقی رہے تو قضا روزوں کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص پچھلے رمضان میں بیماری کی وجہ سے روزے نہ رکھ سکے اور وہ بیماری اس رمضان تک باقی رہے تو روزوں کی قضا واجب نہیں ہے البتہ ہر روزے کے بدلے ۷۵۰گرام غذا فقیر کو دینا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:315 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص پچھلے رمضان میں بیماری کی وجہ سے روزے نہ رکھ سکے اور وہ بیماری اس رمضان تک باقی رہے تو روزوں کی قضا واجب نہیں ہے البتہ ہر روزے کے بدلے ۷۵۰گرام غذا فقیر کو دینا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:259 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص پچھلے رمضان میں بیماری کی وجہ سے روزے نہ رکھ سکے اور وہ بیماری اس رمضان تک باقی رہے تو روزوں کی قضا واجب نہیں ہے البتہ ہر روزے کے بدلے ۷۵۰گرام غذا فقیر کو دینا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:291 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص پچھلے رمضان میں بیماری کی وجہ سے روزے نہ رکھ سکے اور وہ بیماری اس رمضان تک باقی رہے تو روزوں کی قضا واجب نہیں ہے البتہ ہر روزے کے بدلے ۷۵۰گرام غذا فقیر کو دینا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:297 | volume:0



211

Category : روزہ

Question : اگر کسی شخص نے پچھلے رمضان کے روزوں کی قضا اس رمضان تک انجام نہیں دی تو اسکا کیا وظیفہ ہے؟


Answer-1: اگر پچھلے رمضان کے روزوں کی قضا اس رمضان تک انجام نہیں دی تو قضا کے علاوہ ۷۵۰گرام غذا فقیر کو دے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:315 | volume:0


Answer-2: اگر پچھلے رمضان کے روزوں کی قضا اس رمضان تک انجام نہیں دی تو قضا کے علاوہ ۷۵۰گرام غذا فقیر کو دے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:259 | volume:0


Answer-3: اگر پچھلے رمضان کے روزوں کی قضا اس رمضان تک انجام نہیں دی تو قضا کے علاوہ ۷۵۰گرام غذا فقیر کو دے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:292 | volume:0


Answer-4: اگر پچھلے رمضان کے روزوں کی قضا اس رمضان تک انجام نہیں دی تو قضا کے علاوہ ۷۵۰گرام غذا فقیر کو دے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:298 | volume:0



212

Category : روزہ

Question : اگر کوئی شخص روزہ باطل کر لے اور پھر سفر پر چلا جائے تو کیا اس پر کفارہ واجب ہوجائے گا؟


Answer-1: اگر کوئی روزہ باطل کر لے اور پھر سفر پر چلا جائے تواس پر کفارہ واجب ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:310 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی روزہ باطل کر لے اور پھر سفر پر چلا جائے تواس پر کفارہ واجب ہوگا۔لیکن اگر اس کےلئے ظہر سے پہلے مسافرت پیش آجائے تو احتیاط کی بنا پر کفارہ واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:254 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی روزہ باطل کر لے اور پھر سفر پر چلا جائے تواس پر کفارہ واجب ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:287 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی روزہ باطل کر لے اور پھر سفر پر چلا جائے تواس پر کفارہ واجب ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:293 | volume:0



213

Category : فطرہ

Question : اگر کسی شخص کا فطرہ کسی دوسرے شخص پر واجب ہو تو اس کا کیا وظیفہ ہے؟


Answer-1: اگر کسی شخص کا فطرہ کسی دوسرے شخص پر واجب ہو تو اس پر فطرہ ادا کرنا واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:372 | volume:0


Answer-2: اگر کسی شخص کا فطرہ کسی دوسرے شخص پر واجب ہو تو اس پر فطرہ ادا کرنا واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:305 | volume:0


Answer-3: اگر کسی شخص کا فطرہ کسی دوسرے شخص پر واجب ہو تو اس پر فطرہ ادا کرنا واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:343 | volume:0


Answer-4: اگر کسی شخص کا فطرہ کسی دوسرے شخص پر واجب ہو تو اس پر فطرہ ادا کرنا واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:354 | volume:0



214

Category : فطرہ

Question : اگر کسی شخص کا فطرہ کسی دوسرے شخص پر واجب ہو اور ادا نہ کرے تو کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر کسی شخص کا فطرہ کسی دوسرے شخص پر واجب ہو اور وہ ادا نہ کرےیا دے نہ سکتا ہوتو اگر فطرہ کی شرائط موجود ہوں تو احتیاط واجب کی بنا پر خود ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:372 | volume:0


Answer-2: اگر کسی شخص کا فطرہ کسی دوسرے شخص پر واجب ہو اور وہ ادا نہ کرے تو خود اس پر فطرہ ادا کرنا واجب نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:305 | volume:0


Answer-3: اگر کسی شخص کا فطرہ کسی دوسرے شخص پر واجب ہو اور وہ ادا نہ کرے تو خود اس پر فطرہ ادا کرنا واجب نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:343 | volume:0


Answer-4: اگر کسی شخص کا فطرہ کسی دوسرے شخص پر واجب ہو اوروہ ادا نہ کرےتو اگر فطرہ کی شرائط موجود ہوں تو احتیاط مستحب کی بنا پر خود ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:354 | volume:0



215

Category : فطرہ

Question : اگر فطرہ ادا کرنے والاسید نہ ہو تو کیا وہ سید کو فطرہ دے سکتا ہے؟


Answer-1: اگر فطرہ ادا کرنے والاسید نہ ہو تو وہ سید کو فطرہ نہیں دے سکتا اگر چہ اس نے یہ فطرہ کسی سید کا ہی کیوں نہ نکالا ہو۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:373 | volume:0


Answer-2: اگر فطرہ ادا کرنے والاسید نہ ہو تو وہ سید کو فطرہ نہیں دے سکتا اگر چہ اس نے یہ فطرہ کسی سید کا ہی کیوں نہ نکالا ہو۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:305 | volume:0


Answer-3: اگر فطرہ ادا کرنے والاسید نہ ہو تو وہ سید کو فطرہ نہیں دے سکتا اگر چہ اس نے یہ فطرہ کسی سید کا ہی کیوں نہ نکالا ہو۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:343 | volume:0


Answer-4: اگر فطرہ ادا کرنے والاسید نہ ہو تو وہ سید کو فطرہ نہیں دے سکتا اگر چہ اس نے یہ فطرہ کسی سید کا ہی کیوں نہ نکالا ہو۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:354 | volume:0



216

Category : فطرہ

Question : وہ شخص جس کا فطرہ دوسرے شخص پر واجب ہے اگر وہ خود اپنا فطرہ ادا کردے تو کیا حکم ہے؟


Answer-1: جس شخص کا فطرہ دوسرے شخص پر واجب ہے اگر وہ خود اپنا فطرہ ادا کردےتب بھی جس شخص پر اس کا فطرہ واجب تھا اس سے ساقط نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:373 | volume:0


Answer-2: جس شخص کا فطرہ دوسرے شخص پر واجب ہے اگر وہ خود اپنا فطرہ ادا کردےتب بھی جس شخص پر اس کا فطرہ واجب تھا اس سے ساقط نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:305 | volume:0


Answer-3: جس شخص کا فطرہ دوسرے شخص پر واجب ہے اگر وہ خود اپنا فطرہ ادا کردےتب بھی جس شخص پر اس کا فطرہ واجب تھا اس سے ساقط نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:343 | volume:0


Answer-4: جس شخص کا فطرہ دوسرے شخص پر واجب ہے اگر وہ خود اپنا فطرہ ادا کردےتب بھی جس شخص پر اس کا فطرہ واجب تھا اس سے ساقط نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:354 | volume:0



217

Category : فطرہ

Question : کیا دوسرے مذھب سے تعلق رکھنے والے مسلمان کو فطرہ دیا جاسکتا ہے؟


Answer-1: اگر آپکے شہر میں شیعہ فقیر نہ ہو تو دوسرے مذھب سے تعلق رکھنے والے مسلمان فقیر کوفطرہ دیا جاسکتا ہے۔لیکن ضروری ہے کہ وہ ناصبی نہ ہو۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:373 | volume:0


Answer-2: احتیاط مستحب کی بنا پر فطرہ شیعہ فقیر کو دیا جائے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:306 | volume:0


Answer-3: احتیاط مستحب کی بنا پر فطرہ شیعہ فقیر کو دیا جائے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:344 | volume:0


Answer-4: اگر آپکے شہر میں شیعہ فقیر نہ ہو تو دوسرے مذھب سے تعلق رکھنے والے مسلمان فقیر کوفطرہ دیا جاسکتا ہے۔لیکن ضروری ہے کہ وہ ناصبی نہ ہو۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:355 | volume:0



218

Category : فطرہ

Question : کیا بے نمازی شخص یا وہ جو کھلم کھلا گناہ انجام دیتا ہو اسے فطرہ دیا جاسکتا ہے؟


Answer-1: احتیاط واجب کی بنا پر بے نمازی یا وہ جو کھلم کھلا گناہ انجام دیتا ہو اسے فطرہ نہیں دے سکتے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:374 | volume:0


Answer-2: احتیاط واجب کی بنا پر اس شخص کو جو کھلم کھلا گناہ انجام دیتا ہو اسے فطرہ نہیں دے سکتے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:306 | volume:0


Answer-3: احتیاط واجب کی بنا پر بے نمازی یا وہ جو کھلم کھلا گناہ انجام دیتا ہو اسے فطرہ نہیں دے سکتے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:344 | volume:0


Answer-4: احتیاط واجب کی بنا پر بے نمازی یا وہ جو کھلم کھلا گناہ انجام دیتا ہو اسے فطرہ نہیں دے سکتے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:355 | volume:0



219

Category : فطرہ

Question : جو شخص عید الفطر کی نماز پڑھتا ہے اسے کس وقت تک فطرہ نکالنا ضروری ہے؟


Answer-1: جو شخص عید الفطر کی نماز پڑھتا ہے احتیاط واجب کی بنا پر عید کی نماز سے پہلے فطرہ ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:375 | volume:0


Answer-2: جو شخص عید الفطر کی نماز پڑھتا ہے احتیاط واجب کی بنا پر عید کی نماز سے پہلے فطرہ ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:307 | volume:0


Answer-3: جو شخص عید الفطر کی نماز پڑھتا ہے احتیاط واجب کی بنا پر عید کی نماز سے پہلے فطرہ ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:346 | volume:0


Answer-4: جو شخص عید الفطر کی نماز پڑھتا ہے احتیاط واجب کی بنا پر عید کی نماز سے پہلے فطرہ ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:356 | volume:0



220

Category : فطرہ

Question : جو شخص عید الفطر کی نماز نہیں پڑھتا وہ کس وقت تک فطرہ نکال سکتا ہے ؟


Answer-1: جو شخص عید الفطر کی نماز نہیں پڑھتا وہ ظہر سے پہلے فطرہ نکال سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:375 | volume:0


Answer-2: جو شخص عید الفطر کی نماز نہیں پڑھتا وہ ظہر سے پہلے فطرہ نکال سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:308 | volume:0


Answer-3: جو شخص عید الفطر کی نماز نہیں پڑھتا وہ ظہر سے پہلے فطرہ نکال سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:346 | volume:0


Answer-4: جو شخص عید الفطر کی نماز نہیں پڑھتا وہ ظہر سے پہلے فطرہ نکال سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:356 | volume:0



221

Category : فطرہ

Question : اگر کوئی شخص فطرہ کی نیت سے رقم علیحدہ کردے لیکن عید الفطر کی ظہر تک مستحق کو نہ دے تو اسکا کیا وظیفہ ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص فطرہ کی نیت سے رقم علیحدہ کردے لیکن عید الفطر کی ظہر تک مستحق کو نہ دےجب بھی مستحق کو دے فطرہ کی نیت کرے اور یہ تاخیر اگر کسی عقلائی غرض کی بنا پر ہو تو کوئی حرج نہیں ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:375 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص فطرہ کی نیت سے رقم علیحدہ کردے لیکن عید الفطر کی ظہر تک مستحق کو نہ دے تو احتیاط واجب کی بنا پر جب بھی مستحق کو دے فطرہ کی نیت کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:308 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص فطرہ کی نیت سے رقم علیحدہ کردے لیکن عید الفطر کی ظہر تک مستحق کو نہ دےجب بھی مستحق کو دے فطرہ کی نیت کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:346 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص فطرہ کی نیت سے رقم علیحدہ کردے لیکن عید الفطر کی ظہر تک مستحق کو نہ دےجب بھی مستحق کو دے فطرہ کی نیت کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:356 | volume:0



222

Category : فطرہ

Question : کیا فطرہ کی علیحدہ کی ہوئی رقم تبدیل کی جاسکتی ہے؟


Answer-1: فطرہ کی علیحدہ کی ہوئی رقم دوسرے مال سے تبدیل نہیں کی جاسکتی ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:375 | volume:0


Answer-2: فطرہ کی علیحدہ کی ہوئی رقم دوسرے مال سے تبدیل نہیں کی جاسکتی ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:308 | volume:0


Answer-3: فطرہ کی علیحدہ کی ہوئی رقم دوسرے مال سے تبدیل نہیں کی جاسکتی ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:346 | volume:0


Answer-4: فطرہ کی علیحدہ کی ہوئی رقم دوسرے مال سے تبدیل نہیں کی جاسکتی ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:357 | volume:0



223

Category : فطرہ

Question : اگر کوئی شخص عید الفطر کی ظہر تک فطرہ ادا نہ کرے اور نہ ہی اس کی رقم علیحدہ کرے تو اسکا کیا وظیفہ ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص عید الفطر کی ظہر تک فطرہ ادا نہ کرے اور نہ ہی اس کی رقم علیحدہ کرےتو احتیاط واجب کی بنا پر ادا یا قضا کی نیت کے بغیر فطرہ ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:375 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص عید الفطر کی ظہر تک فطرہ ادا نہ کرے اور نہ ہی اس کی رقم علیحدہ کرےتو احتیاط واجب کی بنا پر ادا یا قضا کی نیت کے بغیر فطرہ ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:308 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص عید الفطر کی ظہر تک فطرہ ادا نہ کرے اور نہ ہی اس کی رقم علیحدہ کرےتو احتیاط واجب کی بنا پر ادا یا قضا کی نیت کے بغیر فطرہ ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:346 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص عید الفطر کی ظہر تک فطرہ ادا نہ کرے اور نہ ہی اس کی رقم علیحدہ کرےتو احتیاط واجب کی بنا پر جو پروردگار نے اس سے چاہا ہے اس کی نیت کرے اور فطرہ ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:357 | volume:0



224

Category : فطرہ

Question : اگر بڑھاپے کی وجہ سے روزہ رکھنا مشقت اور سختی کا سبب بنے تو کیا وظیفہ ہے ؟


Answer-1: اگر بڑھاپے کی وجہ سے روزہ رکھنا مشقت اور سختی کا سبب بنے تو روزہ واجب نہیں ہے البتہ ہر روزے کے بدلے ۷۵۰گرام غذا فقیر کو دینا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:318 | volume:0


Answer-2: اگر بڑھاپے کی وجہ سے روزہ رکھنا مشقت اور سختی کا سبب بنے تو روزہ واجب نہیں ہے البتہ ہر روزے کے بدلے ۷۵۰گرام غذا فقیر کو دینا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:261 | volume:0


Answer-3: اگر بڑھاپے کی وجہ سے روزہ رکھنا مشقت اور سختی کا سبب بنے تو روزہ واجب نہیں ہے البتہ ہر روزے کے بدلے ۷۵۰گرام غذا فقیر کو دینا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:295 | volume:0


Answer-4: اگر بڑھاپے کی وجہ سے روزہ رکھنا مشقت اور سختی کا سبب بنے تو روزہ واجب نہیں ہے البتہ ہر روزے کے بدلے ۷۵۰گرام غذا فقیر کو دینا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:300 | volume:0



225

Category : روزہ

Question : اگر کوئی شخص بڑھاپے کی وجہ سے روزہ رکھنے کے قابل نہ ہو تو اس کے روزوں کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص بڑھاپے کی وجہ سے روزہ رکھنے کے قابل نہ ہو تو اس پر روزے واجب نہیں ہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:318 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص بڑھاپے کی وجہ سے روزہ رکھنے کے قابل نہ ہو تو اس پر روزے واجب نہیں ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:261 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص بڑھاپے کی وجہ سے روزہ رکھنے کے قابل نہ ہو تو اس پر روزے واجب نہیں ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:295 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص بڑھاپے کی وجہ سے روزہ رکھنے کے قابل نہ ہو تو اس پر روزے واجب نہیں ہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:300 | volume:0



226

Category : فطرہ

Question : اگر کسی کے علاقے میں فقیر ہو تو کیا وہ کسی دوسرے کے علاقے میں فطرہ کی رقم دے سکتا ہے؟


Answer-1: اگر کسی کے علاقے میں مستحق افراد موجود ہوں تو احتیاط واجب کی بنا پر وہ کسی دوسرے علاقے میں فطرہ کی رقم لے کرنہ جائے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:376 | volume:0


Answer-2: اگر کسی کے علاقے میں مستحق افراد موجود ہوں تو احتیاط واجب کی بنا پر جو فطرہ جدا کیا ہوا ہے وہ کسی دوسرے علاقے میں لے کرنہ جائے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:308 | volume:0


Answer-3: اگر کسی کے علاقے میں مستحق افراد موجود ہوں تو احتیاط واجب کی بنا پر وہ کسی دوسرے علاقے میں فطرہ کی رقم لے کرنہ جائے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:2043 | volume:0


Answer-4: اگر کسی کے علاقے میں مستحق افراد موجود ہوں تو احتیاط واجب کی بنا پرجوفطرہ جدا کیا ہواہےوہ کسی دوسرے علاقے میں فطرہ کی رقم لے کرنہ جائے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:357 | volume:0



227

Category : اعتکاف

Question : کیا اعتکاف میں روزہ رکھنا ضروری ہے؟


Answer-1: اعتکاف میں روزہ رکھنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:319 | volume:1


Answer-2: اعتکاف میں روزہ رکھنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:278 | volume:1


Answer-3: اعتکاف میں روزہ رکھنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:308 | volume:2


Answer-4: اعتکاف میں روزہ رکھنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:308 | volume:2



228

Category : اعتکاف

Question : اعتکاف میں کم از کم کتنے دن بیٹھنا ضروری ہے؟


Answer-1: تین دن سے کم اعتکاف صحیح نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:319 | volume:1


Answer-2: تین دن سے کم اعتکاف صحیح نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:278 | volume:1


Answer-3: تین دن سے کم اعتکاف صحیح نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:308 | volume:2


Answer-4: تین دن سے کم اعتکاف صحیح نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:308 | volume:2



229

Category : اعتکاف

Question : اعتکاف کن مساجدمیں کیا جاسکتا ہے؟


Answer-1: اعتکاف مسجد الحرام،مسجد النبوی،مسجد الکوفہ مسجد البصرہ اور شہر کی جامع مسجد میں کیا جاسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:320 | volume:1


Answer-2: اعتکاف مسجد الحرام،مسجد النبوی،مسجد الکوفہ،مسجد بصرہ میں کیا جاسکتا ہے۔شہر کی جامع مسجد میں بھی رجاء اور احتمال مطلوبت کی نیت سے کیا جاسکتا ہے۔غیر مسجد جامع بازار اور قبیلہ کی مسجد میں جائز نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:279 | volume:1


Answer-3: اعتکاف مسجد الحرام،مسجد النبوی،مسجد الکوفہ مسجد البصرہ اور شہر کی جامع مسجد میں کیا جاسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:308 | volume:2


Answer-4: اعتکاف مسجد الحرام،مسجد النبوی،مسجد الکوفہ مسجد البصرہ اور شہر کی جامع مسجد میں کیا جاسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:308 | volume:2



230

Category : روزہ

Question : کیا بلغم کو نگلنے سے روزہ باطل ہو جاتا ہے؟


Answer-1: بلغم کو نگلنے سے روزہ باطل نہیں ہوتا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:297 | volume:0


Answer-2: منہ میں آنے سے پہلے بلغم کو نگلنے میں کوئی حرج نہیں لیکن منہ میں آنے کے بعد نگلنے سے احتیاط واجب کی بنا پر روزہ باطل ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:242 | volume:0


Answer-3: منہ میں آنے سے پہلے بلغم کو نگلنے میں کوئی حرج نہیں لیکن منہ میں آنے کے بعد نگلنے سے احتیاط واجب کی بنا پر روزہ باطل ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:273 | volume:0


Answer-4: منہ میں آنے سے پہلے بلغم کو نگلنے میں کوئی حرج نہیں لیکن منہ میں آنے کے بعد نگلنے سے احتیاط واجب کی بنا پر روزہ باطل ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:280 | volume:0



231

Category : روزہ

Question : بعض کھانوں کو دیکھ کر منہ میں جو پانی بھر آتا ہے اسے نگلنے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: روزے کی حالت میں بعض کھانوں کو دیکھ کر منہ میں پانی بھر آتا ہے اسے نگلنے سے روزہ باطل نہیں ہوتا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:297 | volume:0


Answer-2: روزے کی حالت میں بعض کھانوں کو دیکھ کر منہ میں پانی بھر آتا ہے اسے نگلنے سے روزہ باطل نہیں ہوتا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:242 | volume:0


Answer-3: روزے کی حالت میں بعض کھانوں کو دیکھ کر منہ میں پانی بھر آتا ہے اسے نگلنے سے روزہ باطل نہیں ہوتا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:273 | volume:0


Answer-4: روزے کی حالت میں بعض کھانوں کو دیکھ کر منہ میں پانی بھر آتا ہے اسے نگلنے سے روزہ باطل نہیں ہوتا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:280 | volume:0



232

Category : اعتکاف

Question : اگر مسئلہ نہ جاننے کی وجہ سے مسجد سے باہر نکل گیا تو کیا اعتکاف باطل ہو جائے گا ؟


Answer-1: مسئلہ نہ جاننے کی وجہ سے بھی بلا جواز مسجد سے باہر نکل جائے تو اعتکاف باطل ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:320 | volume:1


Answer-2: مسئلہ نہ جاننے کی وجہ سے بھی بلا جواز مسجد سے باہر نکل جائے تو اعتکاف باطل ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:279 | volume:1


Answer-3: مسئلہ نہ جاننے کی وجہ سے بھی بلا جواز مسجد سے باہر نکل جائے تو اعتکاف باطل ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:309 | volume:2


Answer-4: مسئلہ نہ جاننے کی وجہ سے بھی بلا جواز مسجد سے باہر نکل جائے تو اعتکاف باطل ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:309 | volume:2



233

Category : روزہ

Question : روزے کی حالت میں ناک میں دوا دالنےکا کیا حکم ہے ؟


Answer-1: روزے حالت میں اگر کوئی شخص ناک میں دوا ڈالے اور دوا حلق میں چلی جائےاگر اسےحلق میں جانے کا علم تھا تو روزہ باطل وگرنہ مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:307 | volume:0


Answer-2: روزے حالت میں اگر کوئی شخص ناک میں دوا ڈالے اور دوا حلق میں چلی جائےاگر اسےحلق میں جانے کا علم تھا تو روزہ باطل وگرنہ مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:252 | volume:0


Answer-3: روزے حالت میں اگر کوئی شخص ناک میں دوا ڈالے اور دوا حلق میں چلی جائےاگر اسےحلق میں جانے کا علم تھا تو روزہ باطل وگرنہ مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:283 | volume:0


Answer-4: روزے حالت میں اگر کوئی شخص ناک میں دوا ڈالے اور دوا حلق میں چلی جائےاگر اسےحلق میں جانے کا علم تھا تو روزہ باطل وگرنہ مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:290 | volume:0



234

Category : روزہ

Question : کیا روزے کی حالت میں آنکھ میں دوا ڈالنا یا سر مہ لگانا جائزہے؟


Answer-1: روزے کی حالت میں اگر آنکھ میں دوا ڈالیں یا سرما لگائیں اور اس کا مزہ حلق تک پہنچے تو اسکا استعمال مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:307 | volume:0


Answer-2: روزے کی حالت میں اگر آنکھ میں دوا ڈالیں یا سرما لگائیں اور اس کا مزہ حلق تک پہنچے تو اسکا استعمال مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:252 | volume:0


Answer-3: روزے کی حالت میں اگر آنکھ میں دوا ڈالیں یا سرما لگائیں اور اس کا مزہ حلق تک پہنچے تو اسکا استعمال مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:283 | volume:0


Answer-4: روزے کی حالت میں اگر آنکھ میں دوا ڈالیں یا سرما لگائیں اور اس کا مزہ حلق تک پہنچے تو اسکا استعمال مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:290 | volume:0



235

Category : روزہ

Question : اگر روزہ دار اذان صبح کے بعد سونے کی حالت میں جنب ہو جائے تو اس کے روزے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر روزہ دار اذان صبح کے بعد سونے کی حالت میں جنب ہو جائے تو اس کا روزہ صحیح ہے اور فوراً غسل کرنا واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:303 | volume:0


Answer-2: اگر روزہ دار اذان صبح کے بعد سونے کی حالت میں جنب ہو جائے تو اس کا روزہ صحیح ہے اور فوراً غسل کرنا واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:248 | volume:0


Answer-3: اگر روزہ دار اذان صبح کے بعد سونے کی حالت میں جنب ہو جائے تو اس کا روزہ صحیح ہے اور فوراً غسل کرنا واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:279 | volume:0


Answer-4: اگر روزہ دار اذان صبح کے بعد سونے کی حالت میں جنب ہو جائے تو اس کا روزہ صحیح ہے اور فوراً غسل کرنا واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:287 | volume:0



236

Category : روزہ

Question : کیا سگریٹ کے دھوئیں سے روزہ باطل ہو جاتا ہے؟


Answer-1: احتیاط واجب کی بنا پر روزے دار سگریٹ کے دھوئیں کو حلق تک نہ پہنچائے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:301 | volume:0


Answer-2: احتیاط واجب کی بنا پر روزے دار سگریٹ کے دھوئیں کو حلق تک نہ پہنچائے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:245 | volume:0


Answer-3: احتیاط واجب کی بنا پر روزے دار سگریٹ کے دھوئیں کو حلق تک نہ پہنچائے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:276 | volume:0


Answer-4: احتیاط واجب کی بنا پر روزے دار سگریٹ کے دھوئیں کو حلق تک نہ پہنچائے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:284 | volume:0



237

Category : اعتکاف

Question : اگر کوئی بھولے سے مسجد سے باہر نکل جائے تو اس کے اعتکاف کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر کوئی بھولے سے بھی بغیر کسی جواز کے مسجد سے باہر نکل جائے تو اس کا اعتکاف باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:320 | volume:1


Answer-2: اگرکوئی بھولے سے بھی بغیر کسی جواز کے مسجد سے باہر نکل جائے تو اس کا اعتکاف باطل نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:279 | volume:1


Answer-3: اگرکوئی بھولے سے بھی بغیر کسی جواز کے مسجد سے باہر نکل جائے تو اس کا اعتکاف باطل ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:309 | volume:2


Answer-4: اگرکوئی بھولے سے بھی بغیر کسی جواز کے مسجد سے باہر نکل جائے تو احتیاط کی بنا پراس کا اعتکاف باطل ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:309 | volume:2



238

Category : روزہ

Question : اگر کوئی شخص رمضان کی رات میں جنب ہو اور غسل نہ کرےاور بعد میں غسل کرنے کا وقت نہ بچے تو اسکا کیا وظیفہ ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص رمضان کی رات میں جنب ہوجائےاور جان بوجھ کر غسل نہ کرےاور بعد میں وقت تنگ ہوجانے کی وجہ سے غسل نہ کرسکتا ہو توتیمم کرکے روزہ رکھے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:302 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص رمضان کی رات میں جنب ہوجائےاور جان بوجھ کر غسل نہ کرےاور بعد میں وقت تنگ ہوجائے تو تیمم کرکے روزہ رکھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:247 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص رمضان کی رات میں جنب ہوجائےاور عمداً غسل نہ کرے اور بعد میں وقت تنگ ہوجائے تو احتیاط واجب کی بنا پر تیمم کرکے روزہ رکھےاور قضا بھی انجام دے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:278 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص رمضان کی رات میں جنب ہوجائےاور جان بوجھ کر غسل نہ کرے اور بعد میں وقت تنگ ہوجائے تو احتیاط واجب کی بنا پر تیمم کرکے روزہ رکھےاور قضا بھی انجام دے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:285 | volume:0



239

Category : روزہ

Question : اگر کوئی شخص بھول جائے کہ روزے سے ہےاور گاڑھے غبار سے نہ بچے تو کیا اسکا روزہ باطل ہوجائے گا؟


Answer-1: اگر کوئی شخص بھول جائے کہ روزے سے ہے اور گاڑھے غبار سے نہ بچے تواسکا روزہ باطل نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:301 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص بھول جائے کہ روزے سے ہے اور گاڑھے غبار سے نہ بچے تواسکا روزہ باطل نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:245 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص بھول جائے کہ روزے سے ہے اور گاڑھے غبار سے نہ بچے تواسکا روزہ باطل نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:276 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص بھول جائے کہ روزے سے ہے اور گاڑھے غبار سے نہ بچے تواسکا روزہ باطل نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:284 | volume:0



240

Category : روزہ

Question : اگر بے اختیار روزہ دار کے حلق میں گاڑھا غبارچلا جائے تو کیا اسکا روزہ باطل ہے؟


Answer-1: روزے کی حالت میں بے اختیار حلق میں گاڑھا غبارپہنچ جائے تو اسکا روزہ باطل نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:301 | volume:0


Answer-2: روزے کی حالت میں بے اختیار حلق میں گاڑھا غبارپہنچ جائے تو اسکا روزہ باطل نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:245 | volume:0


Answer-3: روزے کی حالت میں بے اختیار حلق میں گاڑھا غبارپہنچ جائے تو اسکا روزہ باطل نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:276 | volume:0


Answer-4: روزے کی حالت میں بے اختیار حلق میں گاڑھا غبارپہنچ جائے تو اسکا روزہ باطل نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:284 | volume:0



241

Category : اعتکاف

Question : کیا اعتکاف میں جانے کے لئے والدین کی اجازت ضروری ہے؟


Answer-1: اگر اعتکاف میں جانا والدین کے لئے اذیت و تکلیف کا باعث ہو جو کہ شفقت کی بنا پر ہو تو اجازت لینا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:320 | volume:1


Answer-2: اگر اعتکاف میں جانا والدین کے لئے اذیت و تکلیف کا باعث ہو تو اجازت لینا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:279 | volume:1


Answer-3: اگر اعتکاف میں جانا والدین کے لئے اذیت و تکلیف کا باعث ہو جو کہ شفقت کی بنا پر ہو تو اجازت لینا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:309 | volume:2


Answer-4: اگر اعتکاف میں جانا والدین کے لئے اذیت و تکلیف کا باعث ہو جو کہ شفقت کی بنا پر ہو تو اجازت لینا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:309 | volume:2



242

Category : اعتکاف

Question : اعتکاف میں خرید و فروخت کرنے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اعتکاف کی حالت میں خرید و فروخت کا ترک کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:322 | volume:1


Answer-2: اعتکاف کی حالت میں خرید و فروخت کرنا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:282 | volume:1


Answer-3: اعتکاف کی حالت میں خرید و فروخت کا ترک کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:311 | volume:2


Answer-4: اعتکاف کی حالت میں خرید و فروخت کا ترک کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:311 | volume:2



243

Category : چاند

Question : اگر سعودی عرب میں چاند ثابت ہو جائے تو کیا پا کستان میں رہنے والوں کیلئے بھی ثابت ہوجائے گا؟


Answer-1: اگر سعودی عرب چاند ثابت ہوجائےتو پا کستان میں چاند ثابت نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:320 | volume:0


Answer-2: اگر سعودی عرب چاند ثابت ہوجائےتو پا کستان میں چاند ثابت نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:263 | volume:0


Answer-3: اگر سعودی عرب میں چاند ثابت ہوجائے تو پاکستان میں بھی ثابت ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:297 | volume:0


Answer-4: اگر سعودی عرب میں چاند ثابت ہوجائے تو پاکستان میں بھی ثابت ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:302 | volume:0



244

Category : اعتکاف

Question : اعتکاف میں خوشبو سونگھنے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اعتکاف میں خوشبو سونگھنا جائز نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:322 | volume:1


Answer-2: اعتکاف میں خوشبو سونگھنا جائز نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:282 | volume:1


Answer-3: اعتکاف میں خوشبو سونگھنا جائز نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:311 | volume:2


Answer-4: اعتکاف میں خوشبو سونگھنا جائز نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:311 | volume:2



245

Category : طہارت

Question : ایسا پانی جو مطلق تھا لیکن اب ہمیں معلوم نہیں ہے کہ یہ مطلق ہے یا مضاف تو اس پانی کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: ایسا پانی جو مطلق تھا لیکن اب معلوم نہیں کہ مضاف ہے یا مطلق تو ایسے پانی پر مطلق پانی کا حکم جاری ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0


Answer-2: ایسا پانی جو مطلق تھا لیکن اب معلوم نہیں کہ مضاف ہے یا مطلق تو ایسے پانی پر مطلق پانی کا حکم جاری ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:10 | volume:0


Answer-3: ایسا پانی جو مطلق تھا لیکن اب معلوم نہیں کہ مضاف ہے یا مطلق تو ایسے پانی پر مطلق پانی کا حکم جاری ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:12 | volume:0


Answer-4: ایسا پانی جو مطلق تھا لیکن اب معلوم نہیں کہ مضاف ہے یا مطلق تو ایسے پانی پر مطلق پانی کا حکم جاری ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:14 | volume:0



246

Category : طہارت

Question : کیا نجس مضاف پانی کو پاک کرنا ممکن ہے؟


Answer-1: نجس مضاف پانی اس طرح سے کریا جاری پانی سے مل جائے کہ اسے مضاف پانی نہ کہیں تو پاک ہوجائے گا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0


Answer-2: نجس مضاف پانی اس طرح سے کریا جاری پانی سے مل جائے کہ اسے مضاف پانی نہ کہیں تو پاک ہوجائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:10 | volume:0


Answer-3: نجس مضاف پانی اس طرح سے کریا جاری پانی سے مل جائے کہ اسے مضاف پانی نہ کہیں تو پاک ہوجائے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:14 | volume:0


Answer-4: نجس مضاف پانی اس طرح سے کریا جاری پانی سے مل جائے کہ اسے مضاف پانی نہ کہیں تو پاک ہوجائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:12 | volume:0



247

Category : نماز

Question : کیا عورت مرد سے آگے کھڑی ہوکر نماز پڑھ سکتی ہے؟


Answer-1: احتیاط لازم کی بناء پر عورت نماز میں مرد سے پیچھے کھڑی ہو اور کم سے کم عورت کے سجدہ کرنے کی جگہ مرد کے سجدے کی حالت میں دو زانو کے برابر ہو۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:173 | volume:0


Answer-2: احتیاط مستحب کی بناء پر عورت کو مرد کے پیچھے کھڑی ہوکر نماز پڑھنی چاہئے لیکن اگر آگے ہوکر بھی پڑھے تو نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:141 | volume:0


Answer-3: نماز کی حالت میں عورت اور مرد کے درمیان کم سے کم ایک بالشت کا فاصلہ ہونا ضروری ہے اس فاصلے کی رعایت کرتے ہوئے پڑھ سکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:155 | volume:0


Answer-4: نماز کی حالت میں عورت اور مرد کے درمیان کم سے کم ایک بالشت کا فاصلہ ہونا ضروری ہے اس فاصلے کی رعایت کرتے ہوئے پڑھ سکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:163 | volume:0



248

Category : طہارت

Question : مضاف پانی میں کوئی نجاست مل جائے تو مضاف پانی کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر نجاست کا کوئی زرہ بھی مضاف پانی سے مل جائے تو سارا کا سارا پانی نجس ہوجائے گا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0


Answer-2: اگر نجاست کا کوئی زرہ بھی مضاف پانی سے مل جائے تو سارا کا سارا پانی نجس ہوجائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:9 | volume:0


Answer-3: اگر نجاست کا کوئی زرہ بھی مضاف پانی سے مل جائے تو سارا کا سارا پانی نجس ہوجائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:11 | volume:0


Answer-4: اگر نجاست کا کوئی زرہ بھی مضاف پانی سے مل جائے تو سارا کا سارا پانی نجس ہوجائے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:13 | volume:0



249

Category : طہارت

Question : کیا کنویں کا پانی صرف نجاست کے ملنے سے نجس ہوجاتا ہے؟


Answer-1: کنویں کا پانی اگر چہ کر سے کم ہو صرف نجاست کے ملنے سے نجس نہیں ہوتا جب تک نجاست کی وجہ سے اس کا رنگ بو ،ذائقہ تبدیل نہ ہوجائے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0


Answer-2: کنویں کا پانی اگر چہ کر سے کم ہو صرف نجاست کے ملنے سے نجس نہیں ہوتا جب تک نجاست کی وجہ سے اس کا رنگ بو ،ذائقہ تبدیل نہ ہوجائے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:9 | volume:0


Answer-3: کنویں کا پانی اگر چہ کر سے کم ہو صرف نجاست کے ملنے سے نجس نہیں ہوتا جب تک نجاست کی وجہ سے اس کا رنگ بو ،ذائقہ تبدیل نہ ہوجائے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:11 | volume:0


Answer-4: کنویں کا پانی اگر چہ کر سے کم ہو صرف نجاست کے ملنے سے نجس نہیں ہوتا جب تک نجاست کی وجہ سے اس کا رنگ بو ،ذائقہ تبدیل نہ ہوجائے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:13 | volume:0



250

Category : طہارت

Question : جس پانی کے بارے میں پہلے علم تھا کہ پاک ہے اب معلوم نہیں کہ پاک ہے یا نجس تو اس پانی کا بارے میں کیا حکم ہے؟


Answer-1: جس پانی کے بارے میں پہلے علم تھا کہ پاک ہے اب معلوم نہیں کہ نجس ہے یا پاک تو اسے پاک ہی سمجھا جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:16 | volume:0


Answer-2: جس پانی کے بارے میں پہلے علم تھا کہ پاک ہے اب معلوم نہیں کہ نجس ہے یا پاک تو اسے پاک ہی سمجھا جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:10 | volume:0


Answer-3: جس پانی کے بارے میں پہلے علم تھا کہ پاک ہے اب معلوم نہیں کہ نجس ہے یا پاک تو اسے پاک ہی سمجھا جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:12 | volume:0


Answer-4: جس پانی کے بارے میں پہلے علم تھا کہ پاک ہے اب معلوم نہیں کہ نجس ہے یا پاک تو اسے پاک ہی سمجھا جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:14 | volume:0



251

Category : طہارت

Question : اگر پانی کےاطراف میں کوئی نجاست پڑی ہو جیسے کہ مردار اور اس کی وجہ سے پانی کی بو تبدیل ہوجائے تو پانی کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر پانی کے اطراف میں کوئی نجاست پڑی ہو جیسے کہ مردار اور اس کی وجہ سے پانی کی بو تبدیل ہوجائے تو پانی نجس نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:12 | volume:0


Answer-2: اگر پانی کے اطراف میں کوئی نجاست پڑی ہو جیسے کہ مردار اور اس کی وجہ سے پانی کی بو تبدیل ہوجائے تو پانی نجس نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:10 | volume:0


Answer-3: اگر پانی کے اطراف میں کوئی نجاست پڑی ہو جیسے کہ مردار اور اس کی وجہ سے پانی کی بو تبدیل ہوجائے تو پانی نجس نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:14 | volume:0


Answer-4: اگر پانی کے اطراف میں کوئی نجاست پڑی ہو جیسے کہ مردار اور اس کی وجہ سے پانی کی بو تبدیل ہوجائے تو پانی بنابر احتیاط لازم نجس ہوجائے گا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:16 | volume:0



252

Category : طہارت

Question : کیا نجس مٹی بارش کے برسنے سے پاک ہوجاتی ہے؟


Answer-1: اگر بارش کا پانی نجس مٹی کے تمام اجزاء تک پہنچ جائے تو وہ پاک ہوجاتی ہے بشرطیکہ انسان کو یقین نہ ہوجائے کہ مٹی سے ملنے کی وجہ سے بارش کا پانی مضاف ہو چکا ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:14 | volume:0


Answer-2: اگر بارش کی وجہ سے نجس مٹی کیچڑ میں تبدیل ہوجائے تو پاک ہوجاتی ہے بشرطیکہ پانی تمام نجس مٹی کو گھیرلے صرف بارش کی رطوبت پہنچنا کافی نہیں ہے

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:8 | volume:0


Answer-3: اگر بارش کے برسنے کی وجہ سے نجس مٹی کیچڑ میں تبدیل ہوجائے تو پاک ہوجاتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:11 | volume:0


Answer-4: اگر بارش کا پانی مطلق حالت میں نجس مٹی کے تمام اجزاء تک پہنچ جائے تو مٹی پاک ہو جائے گی۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:13 | volume:0



253

Category : طہارت

Question : ایسا پانی جس کے بارے میں معلوم نہ ہوسکے کہ مطلق ہے یا مضاف اور یہ بھی معلوم نہ ہوکہ پہلے مطلق تھا یا مضاف تو اس پانی کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: ایسا پانی جس کے بارے میں معلوم نہ ہوسکے کہ مطلق ہے یا مضاف اور یہ بھی معلوم نہ ہوکہ پہلے مطلق تھا یا مضاف تو ایسے پانی سے وضو اور غسل کرنا صحیح نہیں ہے اور یہ نجاست کو بھی پاک نہیں کرے گا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0


Answer-2: ایسا پانی جس کے بارے میں معلوم نہ ہوسکے کہ مطلق ہے یا مضاف اور یہ بھی معلوم نہ ہوکہ پہلے مطلق تھا یا مضاف تو ایسے پانی سے وضو اور غسل کرنا صحیح نہیں ہے اور یہ نجاست کو بھی پاک نہیں کرے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:10 | volume:0


Answer-3: ایسا پانی جس کے بارے میں معلوم نہ ہوسکے کہ مطلق ہے یا مضاف اور یہ بھی معلوم نہ ہوکہ پہلے مطلق تھا یا مضاف تو ایسے پانی سے وضو اور غسل کرنا صحیح نہیں ہے اور یہ نجاست کو بھی پاک نہیں کرے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:12 | volume:0


Answer-4: ایسا پانی جس کے بارے میں معلوم نہ ہوسکے کہ مطلق ہے یا مضاف اور یہ بھی معلوم نہ ہوکہ پہلے مطلق تھا یا مضاف تو ایسے پانی سے وضو اور غسل کرنا صحیح نہیں ہے اور یہ نجاست کو بھی پاک نہیں کرے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:14 | volume:0



254

Category : طہارت

Question : اگر کنویں کے پانی میں نجاست اس طرح شامل ہوجائے کہ اس کا رنگ ،بو یا ذائقہ تبدیل کردے تو کنویں کا پانی پاک ہوسکتا ہے؟


Answer-1: اگر کنویں کے پانی میں نجاست کی وجہ سے جو رنگ ،بو، یا ذائقہ تبدیل ہوا تھا دوبارہ اپنی اصلی حالت پر آجائے تو کنویں کا پانی پاک ہوجاتا ہے البتہ احتیاط واجب کی بنا پرپھوٹنے والا پانی مخلوط ہو جائے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0


Answer-2: اگر کنویں کے پانی میں نجاست کی وجہ سے جو رنگ ،بو، یا ذائقہ تبدیل ہوا تھا دوبارہ اپنی اصلی حالت پر آجائے تو کنویں کا پانی پاک ہوجاتا ہے البتہ پھوٹنے والا پانی مخلوط ہو جائے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:9 | volume:0


Answer-3: اگر کنویں کے پانی میں نجاست کی وجہ سے جو رنگ ،بو، یا ذائقہ تبدیل ہوا تھا دوبارہ اپنی اصلی حالت پر آجائے تو کنویں کا پانی پاک ہو جاتا ہے البتہ احتیاط مستحب کی بنا پرپھوٹنے والا پانی مخلوط ہو جائے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:13 | volume:0


Answer-4: اگر کنویں کے پانی میں نجاست کی وجہ سے جو رنگ ،بو، یا ذائقہ تبدیل ہوا تھا دوبارہ اپنی اصلی حالت پر آجائے تو کنویں کا پانی پاک ہو جاتا ہے البتہ بہتر ہے کہ پھوٹنے والا پانی مخلوط ہو جائے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:11 | volume:0



255

Category : طہارت

Question : اگر کسی پانی کا رنگ،بویا ذائقہ عین نجاست کی وجہ سے تبدیل ہو جائے تو بارش کے پانی سے ملنے کی وجہ سے پاک ہو سکتا ہے؟


Answer-1: جس پانی کا رنگ،بویا ذائقہ عین نجاست کی وجہ سے تبدیل ہو جائے اور اس پانی پر بارش برس جائے اور نجاست کی وجہ سے جو تبدیلی رونما ہوئی تھی ختم ہو جائے تو یہ پانی پاک ہو جائے گا بشرطیکہ بارش کاپانی اس سے مخلوط ہو گیا ہو۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:16 | volume:0


Answer-2: جس پانی کا رنگ،بویاذائقہ عین نجاست کی وجہ سے تبدیل ہو جائے اور اس پانی پر بارش برس جائے اور نجاست کی وجہ سے جو تبدیلی رونما ہوئی تھی ختم ہو جائے تو یہ پانی پاک ہو جائے گا بشرطیکہ بارش کاپانی اس سے مخلوط ہو گیا ہو۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:10 | volume:0


Answer-3: جس پانی کا رنگ،بویاذائقہ عین نجاست کی وجہ سے تبدیل ہو جائے اور اس پانی پر بارش برس جائے اور نجاست کی وجہ سے جو تبدیلی رونما ہوئی تھی ختم ہو جائے تو یہ پانی پاک ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:12 | volume:0


Answer-4: جس پانی کا رنگ،بویاذائقہ عین نجاست کی وجہ سے تبدیل ہو جائے اور اس پانی پر بارش برس جائے اور نجاست کی وجہ سے جو تبدیلی رونما ہوئی تھی ختم ہو جائے تو یہ پانی پاک ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:14 | volume:0



256

Category : کھانے پینے کے احکام

Question : اونٹ کا پیشاب پینا کیسا ہے؟


Answer-1: اونٹ کا پیشاب احتیاط لازم کی بنا پر پینا حرام ہے لیکن علاج کیلئے جائز ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:515 | volume:0


Answer-2: اونٹ کا پیشاب پینا حلال ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:143 | volume:2


Answer-3: اونٹ کا پیشاب پینا حلال ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:476 | volume:0


Answer-4: اگر علاج کیلئے اونٹ کا پیشاب پیناضروری ہو تواونٹ کا پیشاب پینے میں کوئی حرج نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:514 | volume:0



257

Category : حج

Question : کیا احرام کی حالت میں بیوی کوبغیر شہوت کے چھونے یا بغل گیرکرنے سے کفارہ واجب ہوجاتا ہے؟


Answer-1: احرام کی حالت میں بیوی کو بغیر شہوت کے چھونے یا بغل گیرکرنے سے کفارہ واجب نہیں ہوتا ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:165 | volume:0


Answer-2: احرام کی حالت میں بیوی کو بغیر شہوت کے چھونے یا بغل گیرکرنے سے کفارہ واجب نہیں ہوتا ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:118 | volume:0



258

Category : نماز

Question : اگر کوئی بغیر سہارےکے کھڑا نہ رہ سکتا ہو تو کیا وہ بیٹھ کر نماز پڑھے گا؟


Answer-1: جو شخص سہارے کے ساتھ کھڑا رہ سکتا ہو وہ سہارے کے ساتھ کھڑے رہ کر نماز پڑھے گا بیٹھ کر نماز نہیں پڑھ سکتا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:189 | volume:0


Answer-2: جو شخص سہارے کے ساتھ کھڑا رہ سکتا ہو وہ سہارے کے ساتھ کھڑے رہ کر نماز پڑھے گا بیٹھ کر نماز نہیں پڑھ سکتا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:153 | volume:0


Answer-3: جو شخص سہارے کے ساتھ کھڑا رہ سکتا ہو وہ سہارے کے ساتھ کھڑے رہ کر نماز پڑھے گا بیٹھ کر نماز نہیں پڑھ سکتا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:168 | volume:0


Answer-4: جو شخص سہارے کے ساتھ کھڑا رہ سکتا ہو وہ سہارے کے ساتھ کھڑے رہ کر نماز پڑھے گا بیٹھ کر نماز نہیں پڑھ سکتا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:175 | volume:0



259

Category : نماز

Question : اگر کوئی نماز کے دوران کھڑا نہ رہ سکےتو نماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر کوئی نماز کے دوران کھڑا نہ رہ سکےتو بیٹھ کر بقیہ نماز ادا کرے البتہ جب تک بدن حرکت میں ہو واجب ذکر نہ پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:189 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی نماز کے دوران کھڑا نہ رہ سکےتو بیٹھ کر بقیہ نماز ادا کرے البتہ جب تک بدن حرکت میں ہو کچھ بھی نہ پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:153 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی نماز کے دوران کھڑا نہ رہ سکےتو بیٹھ کر بقیہ نماز ادا کرے البتہ جب تک بدن حرکت میں ہو واجب ذکر نہ پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:168 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی نماز کے دوران کھڑا نہ رہ سکے اور یہ حال آخر وقت تک باقی رہے تو بقیہ نماز بیٹھ کر ادا کرے البتہ جب تک بدن حرکت میں ہو واجب ذکر نہ پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:175 | volume:0



260

Category : حج

Question : کیا احرام کی حالت میں لحاف یا چادر وغیرہ اوڑھی جاسکتی ہے؟


Answer-1: احرام کی حالت میں لحاف یا چادر وغیرہ سے سر کے علاوہ بقیہ بدن دھانپا جاسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:175 | volume:0


Answer-2: احرام کی حالت میں لحاف یا چادر وغیرہ سے سر کے علاوہ بقیہ بدن دھانپا جاسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:استفتاات | Page:0 | volume:0


Answer-3: احرام کی حالت میں لحاف یا چادر وغیرہ سے سر کے علاوہ بقیہ بدن دھانپا جاسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی خامنہ ای | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:126 | volume:0


Answer-4: احرام کی حالت میں لحاف یا چادر وغیرہ سے سر کے علاوہ بقیہ بدن دھانپا جاسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:123 | volume:0



261

Category : نماز

Question : اگر کوئی جانتا ہو کہ پوری رکعت میں کھڑا نہیں رہ سکتا کیا رکعت کی ابتدا ہی سے بیٹھ کر نماز پڑھ سکتا ہے؟


Answer-1: اگر کوئی جانتا ہو کہ پوری رکعت میں کھڑا نہیں رہ سکتا جس حد تک کھڑا رہ سکتا ہے کھڑے ہوکر نماز پڑھےگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:189 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی جانتا ہو کہ پوری رکعت میں کھڑا نہیں رہ سکتا جس حد تک کھڑا رہ سکتا ہے کھڑے ہوکر نماز پڑھےگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:153 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی جانتا ہو کہ پوری رکعت میں کھڑا نہیں رہ سکتا جس حد تک کھڑا رہ سکتا ہے کھڑے ہوکر نماز پڑھےگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:168 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی جانتا ہو کہ پوری رکعت میں کھڑا نہیں رہ سکتا اور یہ حال آخری وقت تک باقی رہےگاجس حد تک کھڑا رہ سکتا ہے کھڑے ہو کر نماز پڑھے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:175 | volume:0



262

Category : طہارت

Question : کیا رفع حاجت کے وقت کسی بچے یا دیوانے سے بھی شرمگاہ چھپانا واجب ہے؟


Answer-1: رفع حاجت یا کسی دیگر موقع پر بھی ایسےبچے اور دیوانے سے بھی شرمگاہ کو چھپانا واجب ہےجو کہ ممیز ہوں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:16 | volume:0


Answer-2: رفع حاجت یا کسی دیگر موقع پر بھی ایسےبچے اور دیوانے سے بھی شرمگاہ کو چھپانا واجب ہےجو کہ ممیز ہوں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:11 | volume:0


Answer-3: رفع حاجت یا کسی دیگر موقع پر بھی ایسےبچے اور دیوانے سے بھی شرمگاہ کو چھپانا واجب ہےجو کہ ممیز ہوں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:13 | volume:0


Answer-4: رفع حاجت یا کسی دیگر موقع پر بھی ایسےبچے اور دیوانے سے بھی شرمگاہ کو چھپانا واجب ہےجو کہ ممیز ہوں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0



263

Category : حج

Question : کیا احرام کی حالت میں لنگی کو باندھنے کی غرض سے بیلڈ باندھی جاسکتی ہے؟


Answer-1: احرام کی حالت میں لنگی کو باندھنے کی غرض سے بیلڈ باندھی جاسکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک الحج و ملحقاتھا | Page:128 | volume:0


Answer-2: احرام کی حالت میں لنگی کو باندھنے کی غرض سے بیلڈ باندھی جاسکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:صراط النجاۃ | Page:505 | volume:1


Answer-3: احرام کی حالت میں لنگی کو باندھنے کی غرض سے بیلڈ باندھی جاسکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی خامنہ ای | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:126 | volume:0


Answer-4: احرام کی حالت میں لنگی کو باندھنے کی غرض سے بیلڈ باندھی جاسکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:123 | volume:0



264

Category : طہارت

Question : ممیزبچوں سے کیا مراد ہے؟


Answer-1: ایسے بچے جو اچھے اور برُے کو سمجھتے ہوں ممیز بچے کہلاتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:16 | volume:0


Answer-2: ایسے بچے جو اچھے اور برُے کو سمجھتے ہوں ممیز بچے کہلاتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:11 | volume:0


Answer-3: ایسے بچے جو اچھے اور برُے کو سمجھتے ہوں ممیز بچے کہلاتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:13 | volume:0


Answer-4: ایسے بچے جو اچھے اور برُے کو سمجھتے ہوں ممیز بچے کہلاتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0



265

Category : طہارت

Question : کیا قبلہ رخ ہو کر رفع حاجت کرسکتے ہیں؟


Answer-1: احتیاط لازم کی بنا پر رفع حاجت کے وقت بدن کا اگلہ حصہ یعنی پیٹ اور سینہ روبہ قبلہ یا پشت بہ قبلہ نہیں ہونا چاہیئے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:17 | volume:0


Answer-2: رفع حاجت کے وقت بدن کا اگلہ حصہ یعنی پیٹ اور سینہ روبہ قبلہ یا پشت بہ قبلہ نہیں ہونا چاہیئے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:11 | volume:0


Answer-3: رفع حاجت کے وقت بدن کا اگلہ حصہ یعنی پیٹ اور سینہ روبہ قبلہ یا پشت بہ قبلہ نہیں ہونا چاہیئے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:13 | volume:0


Answer-4: رفع حاجت کے وقت بدن کا اگلہ حصہ یعنی پیٹ اور سینہ روبہ قبلہ یا پشت بہ قبلہ نہیں ہونا چاہیئے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0



266

Category : طہارت

Question : اگر کوئی شخص رفع حاجت کےوقت اپنی شرمگاہ کو قبلہ رخ ہونے سے موڑلے لیکن اس کے بدن کا اگلا حصہ قبلہ رخ ہی ہو تو کیا ایسا کرنا جائز ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص رفع حاجت کےوقت اپنی شرمگاہ کو قبلہ رخ ہونے سے موڑلے تو یہ کافی نہیں ہے بلکہ احتیاط واجب کی بنا پر شرمگاہ سمیت پورے بدن کا اگلہ حصہ قبلہ رخ یا پشت بہ قبلہ نہیں ہونا چائیے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:17 | volume:0


Answer-2: اگر رفع حاجت کے وقت بدن کا اگلہ یا پچھلا حصہ روبہ قبلہ ہو لیکن صرف شرمگاہ کو قبلہ رخ سے موڑلے تو یہ کافی نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:11 | volume:0


Answer-3: اگر رفع حاجت کے وقت بدن کا اگلہ یا پچھلا حصہ روبہ قبلہ ہو لیکن صرف شرمگاہ کو قبلہ رخ سے موڑلے تو یہ کافی نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:13 | volume:0


Answer-4: اگر رفع حاجت کے وقت بدن کا اگلہ یا پچھلا حصہ روبہ قبلہ ہو لیکن صرف شرمگاہ کو قبلہ رخ سے موڑلے تو یہ کافی نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0



267

Category : طہارت

Question : اگر رفع حاجت کے وقت صرف شرمگاہ قبلہ رخ ہو تو شرعی حکم کیا ہے؟


Answer-1: رفع حاجت کے وقت احتیاط واجب کی بنا پر شرمگاہ کو بھی قبلہ رخ یا پشت بہ قبلہ نہیں کرناچاہئے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:17 | volume:0


Answer-2: رفع حاجت کے وقت احتیاط واجب کی بنا پر شرمگاہ کو قبلہ رخ یا پشت بہ قبلہ نہیں کرناچاہئے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:11 | volume:0


Answer-3: رفع حاجت کے وقت احتیاط واجب کی بنا پر شرمگاہ کو قبلہ رخ یا پشت بہ قبلہ نہیں کرناچاہئے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:13 | volume:0


Answer-4: رفع حاجت کے وقت احتیاط واجب کی بنا پر شرمگاہ کو قبلہ رخ یا پشت بہ قبلہ نہیں کرناچاہئے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0



268

Category : حج

Question : دو عمرہ مفردہ کے درمیان کتنا فاصلہ ہونا ضروری ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص دو عمرہ مفردہ اپنے لئےیا کسی اور کےلئےانجام دے تو انکے درمیان قمری مہینے کا فرق ہونا چائیے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:93 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص دو عمرے انجام دے تو انکے درمیان ایک مہینے کا فاصلہ ہونا ضروری ہے احتیاطاً تیس دن کا فاصلہ دیا جائے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:استفتاات | Page:128 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص دو عمرہ مفردہ اپنے لئے یا کسی اور کے لئے انجام دے تو انکے درمیان قمری مہینے کا فرق ہونا چائیے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:85 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص دو عمرہ مفردہ اپنے لئے یا کسی اور کے لئے انجام دے تو انکے درمیان کسی خاص مدت کی شرط نہیں لیکن احتیاط مستحب کی بنا پر ایک قمری مہینے میں ایک عمرہ انجام دے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی خامنہ ای | Book:استفتاات | Page:119 | volume:0


Answer-5: اگر کوئی شخص دو عمرہ مفردہ اپنے لئے یا کسی اور کے لئے انجام دے تو انکے درمیان احتیاط واجب کی بنا پرقمری مہینے کا فرق ہونا چائیے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:70 | volume:0



269

Category : طہارت

Question : کیا استبراء کرتے وقت بھی بدن کا اگلا حصہ قبلہ رخ نہیں ہونا چاہئے؟


Answer-1: احتیاط مستحب کی بنا پر استبراء کرتے وقت بدن کا اگلا حصہ قبلہ رخ یا پشت بہ قبلہ نہ ہو۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:17 | volume:0


Answer-2: اگر استبراء کرتے وقت پیشاب یا پائخانہ نکل آئے تو اس صورت میں بدن کا اگلہ حصہ قبلہ رخ یا پشت بہ قبلہ کرنا حرام ہےوگرنہ کوئی حرج نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:11 | volume:0


Answer-3: احتیاط مستحب کی بنا پر استبراء کرتے وقت بدن کا اگلا حصہ قبلہ رخ یا پشت بہ قبلہ نہ ہو۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:13 | volume:0


Answer-4: احتیاط مستحب کی بنا پر استبراء کرتے وقت بدن کا اگلا حصہ قبلہ رخ یا پشت بہ قبلہ نہ ہو۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0



270

Category : طہارت

Question : کیا رفع حاجت کے بعد شرمگاہ کو پاک کرتے وقت بھی قبلہ رخ ہونا حرام ہے؟


Answer-1: احتیاط مستحب کی بنا پر شرمگاہ کو پاک کرتے وقت بدن کا اگلا حصہ روبہ قبلہ یا پشت بہ قبلہ نہ ہو۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:17 | volume:0


Answer-2: رفع حاجت کے بعد شرمگاہ کو پاک کرتے وقت بدن کا قبلہ رخ یا پشت بہ قبلہ ہونے میں کوئی حرج نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:11 | volume:0


Answer-3: احتیاط مستحب کی بنا پر شرمگاہ کو پاک کرتے وقت بدن کا اگلا حصہ روبہ قبلہ یا پشت بہ قبلہ نہ ہو۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:13 | volume:0


Answer-4: احتیاط مستحب کی بنا پر شرمگاہ کو پاک کرتے وقت بدن کا اگلا حصہ روبہ قبلہ یا پشت بہ قبلہ نہ ہو۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0



271

Category : طہارت

Question : اگر کوئی شخص رفع حاجت کے وقت قبلہ رخ ہونے پر مجبور ہو تو اس کا کیا وظیفہ ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص رفع حاجت کے وقت قبلہ رخ ہونے پر مجبور ہوتواحتیاط لازم کی بنا پر پشت بہ قبلہ بیٹھے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:17 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص رفع حاجت کے وقت قبلہ رخ ہونے پر مجبور ہو تو قبلہ رخ ہونے میں کوئی حرج نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:11 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص رفع حاجت کے وقت قبلہ رخ ہونے پر مجبور ہو تو قبلہ رخ ہونے میں کوئی حرج نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:13 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص رفع حاجت کے وقت قبلہ رخ ہونے پرمجبور ہو تواحتیاط واجب کی بنا پر پشت بہ قبلہ بیٹھے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0



272

Category : طواف

Question : کیا طواف کے درمیان فاصلہ دیا جاسکتا ہے؟


Answer-1: طواف کے درمیان عرفاً موالات کی رعایت کرناضروری ہے یعنی اتنا فاصلہ نہ ہو کہ طواف کی حالت سے باہر نکل جائے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:226 | volume:0


Answer-2: طواف کے درمیان عرفاً موالات کی رعایت کرنااحتیاط واجب کی بنا پر ضروری ہے یعنی اتنا فاصلہ نہ ہو کہ طواف کی حالت سے باہر نکل جائے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:175 | volume:0


Answer-3: طواف کے درمیان عرفاً موالات کی رعایت کرناضروری ہے یعنی اتنا فاصلہ نہ ہو کہ طواف کی حالت سے باہر نکل جائے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:209 | volume:0


Answer-4: طواف کے درمیان عرفاً موالات کی رعایت کرناضروری ہے یعنی اتنا فاصلہ نہ ہو کہ طواف کی حالت سے باہر نکل جائے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی خامنہ ای | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:175 | volume:0


Answer-5: طواف کے درمیان عرفاً موالات کی رعایت کرناضروری ہے یعنی اتنا فاصلہ نہ ہو کہ طواف کی حالت سے باہر نکل جائے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:159 | volume:0



273

Category : حج

Question : اگر کوئی شخص طواف کرتے وقت بدن یا لباس کی نجاست کو بھول جائے تو اسکا کیا وظیفہ ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص طواف کرتے وقت بدن یا لباس کی نجاست کو بھول جائے اور طواف کے بعد یاد آئے طواف صحیح ہے اور نماز کے بعد یاد آئے تو احتیاط واجب کی بنا پر دوبارہ نماز پڑھےاگر سھل انگاری کی وجہ سے بھولا تھا ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:220 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص طواف کرتے وقت بدن یا لباس کی نجاست کو بھول جائےتو احتیاط واجب کی بنا پر دوبارہ طواف کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:174 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص طواف کرتے وقت بدن یا لباس کی نجاست کو بھول جائے اور بعد میں یاد آئے توطواف صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:192 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص طواف کرتے وقت بدن یا لباس کی نجاست کو بھول جائے اور بعد میں یاد آئے توطواف صحیح ہے لیکن اگر نماز طواف بھی پڑھی ہو تواسکا اعادہ کرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی خامنہ ای | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:174 | volume:0


Answer-5: اگر کوئی شخص طواف کرتے وقت بدن یا لباس کی نجاست کو بھول جائے اور بعد میں یاد آئے توطواف صحیح ہے

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:151 | volume:0



274

Category : حج

Question : کیا طواف کرتے وقت بدن یا لباس کا پاک ہونا ضروری ہے؟


Answer-1: طواف کرتے وقت بدن یا لباس کا پاک ہونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:218 | volume:0


Answer-2: طواف کرتے وقت بدن یا لباس خون اور دوسری نجاست سے احتیاط واجب کی بنا پر ہوناچاہیے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:172 | volume:0


Answer-3: طواف کرتے وقت بدن یا لباس خون اور دوسری نجاست سے احتیاط واجب کی بنا پرپاک ہوناچاہیے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:190 | volume:0


Answer-4: طواف کرتے وقت بدن یا لباس خون اور دوسری نجاست سے احتیاط واجب کی بنا پر ہوناچاہیے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی خامنہ ای | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:172 | volume:0


Answer-5: طواف کرتے وقت بدن یا لباس خون اور دوسری نجاست سے احتیاط واجب کی بنا پرپاک ہوناچاہیے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:150 | volume:0



275

Category : حج

Question : وہ نجاست جو نمازی کے بدن یا لباس میں معاف ہیں کیا طواف کے دوران بھی معاف ہیں؟


Answer-1: وہ نجاست جو نمازی کے بدن یا لباس میں معاف ہیں احتیاط واجب کی بنا پر طواف کے دوران ان سے پرہیز کیا جائے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:218 | volume:0


Answer-2: وہ نجاست جو نمازی کے بدن یا لباس میں معاف ہیں احتیاط واجب کی بنا پر طواف کے دوران ان سے پرہیز کیا جائے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:172 | volume:0


Answer-3: وہ نجاست جو نمازی کے بدن یا لباس میں معاف ہیں احتیاط واجب کی بنا پر طواف کے دوران ان سے پرہیز کیا جائے لیکن چھوٹے لباس جیسے موزے،انگوٹھی وغیرہ میں کوئی حرج نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:191 | volume:0


Answer-4: وہ نجاست جو نمازی کے بدن یا لباس میں معاف ہیں طواف کے دوران بھی معاف ہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی خامنہ ای | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:172 | volume:0


Answer-5: وہ نجاست جو نمازی کے بدن یا لباس میں معاف ہیں طواف کے دوران معاف نہیں ہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:150 | volume:0



276

Category : طہارت

Question : کیا بچوں کو انکے رفع حاجت کے وقت بھی قبلہ رخ بٹھانا جائز نہیں ہے؟


Answer-1: احتیاط مستحب کی بنا پر بچوں کو انکے رفع حاجت کے وقت قبلہ رخ یا پشت بہ قبلہ نہ بٹھائیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:17 | volume:0


Answer-2: احتیاط واجب کی بنا پر بچوں کو انکے رفع حاجت کے وقت قبلہ رخ یا پشت بہ قبلہ نہ بٹھائیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:11 | volume:0


Answer-3: احتیاط واجب کی بنا پر بچوں کو انکے رفع حاجت کے وقت قبلہ رخ یا پشت بہ قبلہ نہ بٹھائیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:13 | volume:0


Answer-4: احتیاط مستحب کی بنا پر بچوں کو انکے رفع حاجت کے وقت قبلہ رخ یا پشت بہ قبلہ نہ بٹھائیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0



277

Category : حج

Question : اگر طواف کے دوران نماز جماعت کے انعقاد کی وجہ سےطواف کرنا ممکن نہ ہو تو کیا وظیفہ ہے؟


Answer-1: اگر طواف کے دوران نماز جماعت کے انعقاد کی وجہ سے چوتھے چکر کے بعد طواف ترک کیا ہو تو اسے مکمل کرنا کافی ہےاور اگر چوتھے چکر سے پہلے ترک کریں اور موالات عرفیہ فوت نہ ہوں جہاں سے چھوڑاتھا وہیں سے مکمل کریں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:استفتاات | Page:332 | volume:0


Answer-2: اگر طواف کے دوران نماز جماعت کے انعقاد کی وجہ سے چوتھے چکر کے بعد طواف کرنا روک دیا جائے تو اسی مقام سے طواف مکمل کریں اور اگر چوتھے چکر سے پہلے ترک کریں اور زیادہ وقت گذرجائے تو دوبارہ طواف کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:191 | volume:0


Answer-3: اگر طواف کے دوران نماز جماعت کے انعقاد کی وجہ سے طواف ترک کرنے سے موالات عرفیہ فوت ہوجائیں تو طواف باطل اور دوبارہ کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:استفتاات | Page:331 | volume:0


Answer-4: اگر طواف کے دوران نماز جماعت کے انعقاد کی وجہ سے آدھا طواف مکمل کرنے کے بعد طواف روک دیا جائے تو اسی مقام سے طواف مکمل کریںاور اگر آدھا طواف مکمل کرنے سے پہلے ترک کریں اورزیادہ وقت گذر جائے تو احتیاط واجب کی بنا پر دوبارہ طواف کریں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی خامنہ ای | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:158 | volume:0



278

Category : نماز

Question : اگر کسی نے لباس غصب کیا اور بھول گیا پھر اس نماز میں نماز پڑھ لی کیا اس کی نماز صحیح ہے؟


Answer-1: اگر کسی نے لباس غصب کیا اور بھول گیا پھر اس لباس میں نماز پڑھ لی احتیاط واجب کی بنا پر اس کی نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:162 | volume:0


Answer-2: اگر کسی نے لباس غصب کیا اور بھول گیا پھر اس لباس میں نماز پڑھ لی احتیاط واجب کی بنا پرنمازدوبارہ پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:131 | volume:0


Answer-3: اگر کسی نے لباس غصب کیا اور بھول گیا پھر اس نماز میں نماز پڑھ لی احتیاط واجب کی بنا پر اس کی نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:145 | volume:0


Answer-4: اگر کسی نے لباس غصب کیا اور بھول گیا پھر اسی سے ستر کرکے نماز پڑھی اگر غصب سے توبہ نہ کی ہو تو نماز باطل ہے۔ورنہ احتیاط واجب کی بنا پر باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:152 | volume:0



279

Category : نماز

Question : اگر نہ جانتا ہو کہ لباس غصبی ہے اور نماز پڑھ لے بعد میں معلوم ہو تو نماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر نہ جانتا ہو کہ لباس غصبی ہے اور نماز پڑھ لے بعد میں معلوم ہو تو نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:162 | volume:0


Answer-2: اگر نہ جانتا ہو کہ لباس غصبی ہے اور نماز پڑھ لے بعد میں معلوم ہو تو نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:131 | volume:0


Answer-3: اگر نہ جانتا ہو کہ لباس غصبی ہے اور نماز پڑھ لے بعد میں معلوم ہو تو نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:145 | volume:0


Answer-4: اگر نہ جانتا ہو کہ لباس غصبی ہے اور نماز پڑھ لے بعد میں معلوم ہو تو نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:152 | volume:0



280

Category : طہارت

Question : اگر کسی نے استبراءنہ کیا ہو اور اس سے رطوبت خارج ہوکہ جسکے بارے میں وہ نہ جانتا ہوکہ پاک ہے یا نجس تو اس رطوبت کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر پیشاب کرنے کے بعد استبراء نہ کیا ہو اورکوئی ایسی رطوبت خارج ہوجائے کہ جس کے پاک ہونے کے بارے میں نہ جانتا ہو تو وہ رطوبت نجس ہےالبتہ اگر اتناوقت گزر گیا ہو جس سےاطمینان ہوجائے کہ اب پیشاب نالی میں نہیں ہےتو یہ تری پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0


Answer-2: اگر پیشاب کرنے کے بعد استبراء نہ کیا ہو اورکوئی ایسی رطوبت خارج ہوجائے کہ جس کے پاک ہونے کے بارے میں نہ جانتا ہو تو وہ رطوبت نجس ہےالبتہ اگر اتناوقت گزر گیا ہو جس سے یقین ہوجائے کہ اب پیشاب نالی میں نہیں ہےتو یہ تری پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:13 | volume:0


Answer-3: اگر پیشاب کرنے کے بعد استبراء نہ کیا ہو اورکوئی ایسی رطوبت خارج ہوجائے کہ جس کے پاک ہونے کے بارے میں نہ جانتا ہو تو وہ رطوبت نجس ہےالبتہ اگر اتناوقت گزر گیا ہو جس سے یقین ہوجائے کہ اب پیشاب نالی میں نہیں ہےتو یہ تری پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0


Answer-4: اگر پیشاب کرنے کے بعد استبراء نہ کیا ہو اورکوئی ایسی رطوبت خارج ہوجائے کہ جس کے پاک ہونے کے بارے میں نہ جانتا ہو تو وہ رطوبت نجس ہےالبتہ اگر اتناوقت گزر گیا ہو جس سےیقین یااطمینان ہوجائے کہ اب پیشاب نالی میں نہیں ہےتو یہ تری پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:18 | volume:0



281

Category : نماز

Question : اگر کسی نے بھولے سے غصبی لباس میں نماز پڑھی جو اس نے خود عضب نہ کیا ہو اس کی نماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر کوئی لباس کے غصبی ہونےکو بھول گیا اور اس میں نماز پڑھ لے جبکہ اس نے خود عضب نہ کیا ہو اس کی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:162 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی لباس کے غصبی ہونےکو بھول گیا اور اس میں نماز پڑھ لے جبکہ اس نے خود عضب نہ کیا ہو اس کی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:131 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی لباس کے غصبی ہونےکو بھول گیا اور اس میں نماز پڑھ لے جبکہ اس نے خود عضب نہ کیا ہو اس کی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:145 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی لباس کے عضبی ہونےکو بھول گیا اور اس میں نماز پڑھ لے جبکہ اس نے خود عضب نہ کیا ہو اس کی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:152 | volume:0



282

Category : نماز

Question : اگر نماز کے دوران پتہ چلے کہ لباس غصبی ہے تو کیا زمہ داری ہے؟


Answer-1: اگر نماز کے دوران پتہ چلے کہ لباس غصبی ہے اگر کوئی اور چیز ستر کرسکتی ہےتو موالات کو ختم کئےبغیر اس لباس کو اتارے اگر ایسا نہ کرسکتا ہو تو نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:162 | volume:0


Answer-2: اگر نماز کے دوران پتہ چلے کہ لباس غصبی ہے اگر کوئی اور چیز ستر کر سکتی ہے تو موالات کو ختم کئے بغیر اس لباس کو اتارسکتاتو نماز صحیح ہےورنہ اگر ایک رکعت کا وقت بھی باقی ہے تو نمازدوبارہ پڑھے ورنہ بغیرلباس کے نماز پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:131 | volume:0


Answer-3: اگر نماز کے دوران پتہ چلے کہ لباس غصبی ہے اگر کوئی اور چیز ستر کر سکتی ہے تو موالات کو ختم کئے بغیر اس لباس کو اتارسکتاتو نماز صحیح ہےورنہ اگر ایک رکعت کا وقت بھی باقی ہے تو نمازدوبارہ پڑھے ورنہ بغیرلباس کے نماز پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:145 | volume:0


Answer-4: اگر نماز کے دوران پتہ چلے کہ لباس غصبی ہے اگر کوئی اور چیز ستر کر سکتی ہے تو موالات کو ختم کئے بغیر اس لباس کو اتارسکتاتو نماز صحیح ہےورنہ اگر ایک رکعت کا وقت بھی باقی ہے تو نمازدوبارہ پڑھے ورنہ بغیرلباس کے نماز پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:152 | volume:0



283

Category : خمس

Question : آیا اجرت پر نماز یا روزہ ررکھ کر یا قرآن پڑھ کر جو پیسے آتے ہیں اس پر خمس ہے؟


Answer-1: اجرت پر نماز یا روزہ ررکھ کر یا قرآن پڑھ کر جو کمائی ہو اگر یہ شرائط کے ساتھ ہو تو اس پر خمس واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:325 | volume:0


Answer-2: اجرت پر نماز یا روزہ ررکھ کر یا قرآن پڑھ کر جو کمائی ہو اگر یہ شرائط کے ساتھ ہو تو اس پر خمس واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:267 | volume:0


Answer-3: اجرت پر نماز یا روزہ ررکھ کر یا قرآن پڑھ کر جو کمائی ہو اگر یہ شرائط کے ساتھ ہو تو اس پر خمس واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:302 | volume:0


Answer-4: اجرت پر نماز یا روزہ ررکھ کر یا قرآن پڑھ کر جو کمائی ہو اگر یہ شرائط کے ساتھ ہو تو اس پر خمس واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:311 | volume:0



284

Category : خمس

Question : خمس سے کیا مراد ہے؟


Answer-1: خمس یعنی یہ کہ اگر انسان تجارت صنعت یا دوسرے کمانے کے طریقے سے پیسے کمائے اور وہ کمائی اسکے اور اسکے اہل و عیال کے اخراجات سے زیادہ ہوں تو اسکا پانچواں حصہ دینا واجب ہے اسے خمس کہتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:325 | volume:0


Answer-2: خمس یعنی یہ کہ اگر انسان تجارت صنعت یا دوسرے کمانے کے طریقے سے پیسے کمائے اور وہ کمائی اسکے اور اسکے اہل و عیال کے اخراجات سے زیادہ ہوں تو اسکا پانچواں حصہ دینا واجب ہےاسے خمس کہتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:267 | volume:0


Answer-3: خمس یعنی یہ کہ اگرانسان تجارت صنعت یا دوسرے کمانے کے طریقے سے پیسے کمائے اور وہ کمائی اسکے اور اسکے اہل و عیال کے اخراجات سے زیادہ ہوں تو اسکا پانچواں حصہ دینا واجب ہے اسے خمس کہتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:302 | volume:0


Answer-4: خمس یعنی یہ کہ اگر انسان تجارت صنعت یا دوسرے کمانے کے طریقے سے پیسے کمائے اور وہ کمائی اسکے اور اسکے اہل و عیال کے اخراجات سے زیادہ ہوں تو اسکا پانچواں حصہ دینا واجب ہے اسے خمس کہتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:311 | volume:0



285

Category : خمس

Question : کتنی چیزوں پر خمس واجب ہے؟


Answer-1: سات چیزوں پر خمس واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:325 | volume:0


Answer-2: سات چیزوں پر خمس واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:267 | volume:0


Answer-3: سات چیزوں پر خمس واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:302 | volume:0


Answer-4: سات چیزوں پر خمس واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:311 | volume:0



286

Category : خمس

Question : شوہر کو خلع کے عوض جو مال ملتا ہے آیا اس پر خمس واجب ہے؟


Answer-1: شوہر کو خلع کے عوض جو مال ملتاہےاس پرخمس واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:325 | volume:0


Answer-2: شوہر کو خلع کے عوض جو مال ملتاہےاس پرخمس واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:326 | volume:1


Answer-3: شوہر کو خلع کے عوض جو مال ملتاہےاس پرخمس واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:302 | volume:0


Answer-4: شوہر کو خلع کے عوض جو مال ملتاہےاس پرخمس واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:311 | volume:0



287

Category : خمس

Question : عورت کے مھر پر خمس ہے؟


Answer-1: عورت کے مھر پر خمس واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:325 | volume:0


Answer-2: عورت کے مھر پر خمس واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:267 | volume:0


Answer-3: عورت کے مھر پر خمس واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:302 | volume:0


Answer-4: عورت کے مھر پر خمس واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:311 | volume:0



288

Category : خمس

Question : اگر وارث کو معلوم ہو کہ میراث پر خمس واجب تھا لیکن میت نے نہیں اداکیاتھا تو اس کی کیا ذمہ داری ہے؟


Answer-1: اگر وارث کو معلوم ہو کہ میراث کا خمس ادا نہیں کیا گیا تو اس کو خمس دینا ہو گا۔لیکن اگرمرنے والا خمس کا عقیدہ نہیں رکھتا تھا یا خمس نہیں دیتا تھا تو وارث پر خمس واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:325 | volume:0


Answer-2: اگر وارث کو معلوم ہو کہ میراث کا خمس ادا نہیں کیا گیا تو اس کو خمس دینا ہو گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:267 | volume:0


Answer-3: اگر وارث کو معلوم ہو کہ میراث کا خمس ادا نہیں کیا گیا تو احتیاط واجب کی بنا پراسکا خمس دے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:303 | volume:0


Answer-4: اگر میراث ایسے شخص سے ملی ہو جو خمس کا اعتقاد رکھتا ہے اور وارث کو معلوم ہے کہ میراث کا خمس ادا نہیں ہے تو حاکم شرعی کی اجازت سے اسکا خمس ادا کرے

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:312 | volume:0



289

Category : نماز

Question : اگر شک ہو کہ یہ لباس حرام گوشت حیوان کی کھال سے بنا ہے تو کیا اس میں نماز پڑھی جا سکتی ہے؟


Answer-1: اگر شک ہو کہ یہ لباس حرام گوشت حیوان کی کھال سے بنا ہے تو اس میں نماز پڑھنا جائز ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:164 | volume:0


Answer-2: اگر شک ہو کہ یہ لباس حرام گوشت حیوان کی کھال سے بنا ہے تو اس میں نماز پڑھنا جائز ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:133 | volume:0


Answer-3: اگر شک ہو کہ یہ لباس حرام گوشت حیوان کی کھال سے بنا ہے تو اس میں نماز پڑھنا جائز ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:146 | volume:0


Answer-4: اگر شک ہو کہ یہ لباس حرام گوشت حیوان کی کھال سے بنا ہے تو اس میں نماز پڑھنا جائز ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:153 | volume:0



290

Category : نماز

Question : گوشت کی بوٹیاں بنے کے دوران جو خون لباس پر آجاتا ہےکیا اس میں نماز ہوجائے گی؟


Answer-1: اگر حلال گوشت جانور کو شرعی طریقے سے ذبح کیا جائے تو اسکی بوٹیاں بنے کے دوران جو خون لباس پر آجاتا ہے وہ پاک ہے اس میں نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:23 | volume:0


Answer-2: اگر حلال گوشت جانور کو شرعی طریقے سے ذبح کیا جائے تو اسکی بوٹیاں بنے کے دوران جو خون لباس پر آجاتا ہے وہ پاک ہے اس میں نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:16 | volume:0


Answer-3: اگر حلال گوشت جانور کو شرعی طریقے سے ذبح کیا جائے تو اسکی بوٹیاں بنے کے دوران جو خون لباس پر آجاتا ہے وہ پاک ہے اس میں نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:18 | volume:0


Answer-4: اگر حلال گوشت جانور کو شرعی طریقے سے ذبح کیا جائے تو اسکی بوٹیاں بنے کے دوران جو خون لباس پر آجاتا ہے وہ پاک ہے اس میں نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:20 | volume:0



291

Category : نماز

Question : کیا حلال گو شت مردار کے بال یا اون سے بنے ہوئے لباس میں نماز پڑھنا جائز ہے؟


Answer-1: حلال گو شت مردار کے بال یا اون سے بنے ہوئے لباس میں نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:163 | volume:0


Answer-2: حلال گو شت مردار کے بال یا اون سے بنے ہوئے لباس میں نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:132 | volume:0


Answer-3: حلال گو شت مردار کے بال یا اون سے بنے ہوئے لباس میں نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:146 | volume:0


Answer-4: حلال گو شت مردار کے بال یا اون سے بنے ہوئے لباس میں نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:153 | volume:0



292

Category : نماز

Question : موم بتی یا چراغ سامنے رکھ کرنماز پڑھنا کیسا ہے؟


Answer-1: موم بتی یا چراغ سامنے رکھ کر نماز پڑھنا جائز ہے البتہ مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:175 | volume:0


Answer-2: موم بتی یا چراغ سامنے رکھ کر نماز پڑھنا جائز ہے البتہ مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:143 | volume:0


Answer-3: موم بتی یا چراغ سامنے رکھ کر نماز پڑھنا جائز ہے البتہ مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:157 | volume:0


Answer-4: موم بتی یا چراغ سامنے رکھ کر نماز پڑھنا جائز ہے البتہ مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:164 | volume:0



293

Category : نماز

Question : اگر عورت مرد کے برابر یا آگے نماز پڑھے تو کیا ان کی نماز صحیح ہے؟


Answer-1: اگر عورت مرد کے برابر یا آگے نماز پڑھے تو احتیاط واجب کی بنا پر دونوں دوبارہ نماز پڑھیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:173 | volume:0


Answer-2: اگر عورت مرد کے برابر یا آگے نماز پڑھے تو ان کی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:141 | volume:0


Answer-3: اگر عورت مرد کے برابر یا آگے ایک بالشت کے فاصلے پر نماز پڑھے تو انکی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:156 | volume:0


Answer-4: اگر عورت مرد کے برابر یا آگے ایک بالشت کے فاصلے پرنماز پڑھے تو انکی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:163 | volume:0



294

Category : نماز

Question : اگر لباس پر خون لگ جائے کیا اس لباس میں نماز پڑھی جاسکتی ہے؟


Answer-1: جو خون لباس پر لگا ہے اس کی مقداراحتیاط واجب کی بنا پر اگر انگوٹھے کے پور سے کم ہو تو اس لباس میں نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:166 | volume:0


Answer-2: جو خون لباس پر لگا ہے اس کی مقدار اگر ایک درھم تقریباً ایک اشرفی سے کم ہے تو اس لباس میں نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:135 | volume:0


Answer-3: جو خون لباس پر لگا ہےاگر اس کی مقدار تقریباً شہادت کی انگلی کے پور سے کم ہےتو اس لباس میں نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:149 | volume:0


Answer-4: جو خون لباس پر لگا ہےاگر اس کی مقدار تقریباً شہادت کی انگلی کے پور سے کم ہےتو اس لباس میں نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:156 | volume:0



295

Category : خمس

Question : اگر قناعت کرکے جو چیز سال کے خرچے سے زیادہ نکل آئے تو آیا اس پر خمس واجب ہے؟


Answer-1: اگر قناعت کرکے جو چیز سال کےاخراجات سے زیادہ نکل آئے تو اسکا خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:326 | volume:0


Answer-2: اگر قناعت کرکے جو چیز سال کےاخراجات سے زیادہ نکل آئے تو اسکا خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:268 | volume:0


Answer-3: اگر قناعت کرکے جو چیز سال کےاخراجات سے زیادہ نکل آئے تو اسکا خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:303 | volume:0


Answer-4: اگر قناعت کرکے جو چیز سال کےاخراجات سے زیادہ نکل آئے تو اسکا خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:312 | volume:0



296

Category : طہارت

Question : کیا حرام مچھلی کا فضلہ نجس ہے؟


Answer-1: مچھلی چاہے حرام ہو یا حلال اس کا فضلہ پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:21 | volume:0


Answer-2: مچھلی چاہے حرام ہو یا حلال اس کا فضلہ پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:14 | volume:0


Answer-3: مچھلی چاہے حرام ہو یا حلال اس کا فضلہ پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:17 | volume:0


Answer-4: مچھلی چاہے حرام ہو یا حلال اس کا فضلہ پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0



297

Category : طہارت

Question : کیا مکھی کا فضلہ نجس ہے؟


Answer-1: مکھی کا فضلہ نجس نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:21 | volume:0


Answer-2: مکھی کا فضلہ نجس نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:14 | volume:0


Answer-3: مکھی کا فضلہ نجس نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:17 | volume:0


Answer-4: مکھی کا فضلہ نجس نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0



298

Category : طہارت

Question : کیاحرام گوشت پر ندوں کا پیشاب و فضلہ نجس ہے؟


Answer-1: حرام گوشت پر ندوں کا پیشاب و فضلہ پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:21 | volume:0


Answer-2: حرام گوشت پر ندوں کا فضلہ نجس ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0


Answer-3: حرام گوشت پر ندوں کا پیشاب و فضلہ پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:17 | volume:0


Answer-4: حرام گوشت پر ندوں کا پیشاب و فضلہ پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0



299

Category : خمس

Question : اگر کمائی کے بغیر آمدنی ہو جائے مثلاًتحفہ مل جائےتو خمس واجب ہوگا؟


Answer-1: اگر کمائی کے بغیر کوئی مال مل جائے مثلاًتحفہ تو اگر سال کے اخراجات کے بعد باقی رہے تو اسکاخمس ادا کرنا ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:325 | volume:0


Answer-2: اگر کمائی کے بغیرکوئی مال مل جائےمثلاً تحفہ ملے تو اس پر خمس واجب نہیں ہےاگرچہ احتیاط مستحب ہے کہ اگر سال کے اخراجات کے بعد باقی رہے تو اسکاخمس ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:267 | volume:0


Answer-3: اگر کمائی کے بغیر کوئی مال مل جائے مثلاًتحفہ تو اگر سال کے اخراجات کے بعد باقی رہے تو اسکاخمس ادا کرنا ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:302 | volume:0


Answer-4: اگر کمائی کے بغیر کوئی مال مثلاً تحفہ ملے اور وہ لوگوں کی نگاہ میں قابل توجہ قدر و قیمت رکھتی ہو اور سال کے اخراجات کے بعد باقی رہے تو اسکا خمس ادا کرنا ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:311 | volume:0



300

Category : خمس

Question : اگر وارث کو معلوم ہو کہ مرنے والے پر میراث کے علاوہ کسی مال پر خمس واجب تھا جو اس نے ادا نہیں کیا تو اسکی کیا ذمہ داری ہے؟


Answer-1: اگر وارث کو معلوم ہو کہ مرنے والے پرخمس واجب تھا جو اس نے ادا نہیں کیا تو اسکے مال سے خمس دے لیکن اگر مرنےوالا خمس کا عقیدہ نہیں رکھتا تھایا نہیں دیتا تھا تو وارث پر خمس دینا لازم نہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:326 | volume:0


Answer-2: اگر وارث کو معلوم ہو کہ مرنے والے کے کسی مال پر خمس واجب تھا جو اس نے ادا نہیں کیا تو وارث پر اسکے مال سے خمس دینا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:2 | volume:0


Answer-3: اگر وارث کو معلوم ہو کہ مرنے والے کے کسی مال پر خمس واجب تھا جو اس نے ادا نہیں کیا تو وارث پر اسکے مال سے خمس دینا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:303 | volume:0


Answer-4: اگر وارث کو معلوم ہو کہ مرنے والے پرخمس واجب تھا جو اس نے ادا نہیں کیا تو جو مال ارث میں ملا ہے اس سے خمس کا تعلق ہو گاجب تک خمس ادا نہ کیا ہو تصرف کرنے کا حق نہیں ہوگا اب اگر اسی مال سے خمس دینا چاہے تو حاکم شرعی کی اجازت ضروری ہوگی ورنہ نہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:312 | volume:0