Question Answers

Compiled by Khatim-ul-Ambia University (Hausary Madressa) Karachi


301

Category : خمس

Question : اگر مثلاً بیٹے کے اخراجات باپ اٹھاتا ہو تو اگر بیٹے کے ہاتھ کوئی مال لگے تو اسپر خمس ہوگا؟


Answer-1: اگر مثلاً بیٹے کے اخراجات باپ اٹھاتا ہو اور بیٹے کے ہاتھ کوئی مال لگے تو بیٹے پر اسکا خمس ادا کرنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:326 | volume:0


Answer-2: اگر مثلاً بیٹے کے اخراجات باپ اٹھاتا ہو اور بیٹےکے ہاتھ کوئی مال لگے تو بیٹے پر اسکا خمس واجب ہےلیکن اگر زیارت وغیرہ میں کچھ خرچ کردیا تو بقیہ کا خمس ادا کرنا ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:268 | volume:0


Answer-3: اگر مثلاً بیٹے کے اخراجات باپ اٹھاتا ہو اور بیٹےکے ہاتھ کوئی مال لگے تو بیٹے پر اسکا خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:303 | volume:0


Answer-4: اگر مثلاً بیٹے کے اخراجات باپ اٹھاتا ہو اور بیٹے کے ہاتھ کوئی مال لگے تو بیٹے پر اسکا خمس ادا کرنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:312 | volume:0



302

Category : خمس

Question : اگر فقیر نےمستجی صدقہ لیا تو اسپر خمس ہے؟


Answer-1: اگر فقیر نے مستجی صدقہ لیا ہو اور وہ سال کے اخراجات سے زیادہ نکل آئے تو احتیاط واجب کی بنا پر اس (زائد )کا خمس ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:326 | volume:0


Answer-2: اگر فقیر نے مستجی صدقہ لیا ہو تو اس پر خمس نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:268 | volume:0


Answer-3: اگر فقیر نے مستجی صدقہ لیا ہو اور وہ سال کے اخراجات سے زیادہ نکل آئے تو اسکا خمس ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:303 | volume:0


Answer-4: اگر فقیر نے مستجی صدقہ لیا ہو اور وہ سال کے اخراجات سے زیادہ نکل آئے تو اسکا خمس دینا ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:312 | volume:0



303

Category : خمس

Question : آیا میراث پرخمس ہے؟


Answer-1: جس میراث کی توقع ہو اور معتبر قواعد کے ذریعے ملی ہو اسپر خمس نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:326 | volume:0


Answer-2: میراث پرخمس نہیں ہے لیکن اگر دور کی رشتہ داری ہواور رشتہ داری کو نہ جانتا ہو اس سے میراث ملے اور سال کے خرچے سے زیادہ ہو تو احتیاط مستحب ہے اس زائد کا خمس ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:267 | volume:0


Answer-3: میراث پرخمس نہیں ہے لیکن اگر میراث ایسے رشتہ دار سے ملی ہو جس سے میراث ملنے کا گمان نہ تھا تو احتیاط واجب کی بنا پر اگر سال کے خرچے سے زیادہ ہو تو اسکا خمس ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:302 | volume:0


Answer-4: میراث پر خمس نہیں ہے لیکن اگر مثلاً ایسے رشتہ دار سے ارث ملے کہ جس سے ارث ملنے کا گمان نہ تھا تو اگر سال کے اخراجات سے زیادہ ہو تو اسکا خمس ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:312 | volume:0



304

Category : طہارت

Question : اگر کسی خاتون سے کوئی رطوبت خارج ہو اور وہ نہ جانتی ہو کہ پیشاب ہے یا کچھ اور تو اس رطوبت کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر کسی خاتون سے کوئی رطوبت خارج ہو جس کے بارے میں اسے معلوم نہ ہو کہ پیشاب ہے یا کچھ اور تو وہ رطوبت پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0


Answer-2: اگر کسی خاتون سے کوئی رطوبت خارج ہو جس کے بارے میں اسے معلوم نہ ہو کہ پیشاب ہے یا کچھ اورپاک رطوبت تو وہ رطوبت پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:13 | volume:0


Answer-3: اگر کسی خاتون سے کوئی رطوبت خارج ہو جس کے بارے میں اسے معلوم نہ ہو کہ پیشاب ہے یا کچھ اور تو وہ رطوبت پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:16 | volume:0


Answer-4: اگر کسی خاتون سے کوئی رطوبت خارج ہو جس کے بارے میں اسے معلوم نہ ہو کہ پیشاب ہے یا کچھ اور تو وہ رطوبت پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:18 | volume:0



305

Category : نماز

Question : اگر مسجد نجس ہو جائے تو اسے پاک کرنا واجب ہے؟


Answer-1: جس شخص کو معلوم ہو کہ مسجد نجس ہے اس پر واجب ہے کہ فوراً اسے پاک کرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:175 | volume:0


Answer-2: جس شخص کو معلوم ہو کہ مسجد نجس ہے اس پر واجب ہے کہ فوراً اسے پاک کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:143 | volume:0


Answer-3: جس شخص کو معلوم ہو کہ مسجد نجس ہے اس پر واجب ہے کہ فوراً اسے پاک کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:158 | volume:0


Answer-4: جس شخص کو معلوم ہو کہ مسجد نجس ہے اس پر واجب ہے کہ فوراً اسے پاک کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:165 | volume:0



306

Category : نماز

Question : کیا مسجد کا ہمسایہ اگر گھر میں نماز ادا کرے تو کیا اس کی نماز صحیح ہے؟


Answer-1: مسجد کا ہمسایہ اگر گھر میں نماز ادا کرے تو اس کی نماز صحیح ہے اگر عذر نہ ہو تو مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:174 | volume:0


Answer-2: مسجد کا ہمسایہ اگر گھر میں نماز ادا کرے تو اس کی نماز صحیح ہے اگر عذر نہ ہو تو مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:142 | volume:0


Answer-3: مسجد کا ہمسایہ اگر گھر میں نما ز ادا کرے تو اس کی نماز صحیح ہے اگر عذر نہ ہو تو مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:157 | volume:0


Answer-4: مسجد کا ہمسایہ اگر گھر میں نماز ادا کرے تو اس کی نماز صحیح ہے اگر عذر نہ ہو تو مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:164 | volume:0



307

Category : طہارت

Question : اگر کسی زندہ جانور سے جو خون جہندہ رکھتا ہو کوئی ایسا حصہ جدا کر لیا جائے جس میں روح ہو تو کیا وہ حصہ نجس ہے؟


Answer-1: اگر کسی زندہ جانور سے جو خون جہندہ رکھتا ہو کوئی ایسا حصہ جدا کر لیا جائے جس میں روح ہے تو و ہ حصہ نجس ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0


Answer-2: اگر کسی زندہ جانور سے جو خون جہندہ رکھتا ہو کوئی ایسا حصہ جدا کر لیا جائے جس میں روح ہے تو و ہ حصہ نجس ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0


Answer-3: اگر کسی زندہ جانور سے جو خون جہندہ رکھتا ہو کوئی ایسا حصہ جدا کر لیا جائے جس میں روح ہے تو و ہ حصہ نجس ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:18 | volume:0


Answer-4: اگر کسی زندہ جانور سے جو خون جہندہ رکھتا ہو کوئی ایسا حصہ جدا کر لیا جائے جس میں روح ہے تو و ہ حصہ نجس ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:20 | volume:0



308

Category : طہارت

Question : کیا مردار کے وہ حصے جن میں روح نہیں ہوتی پاک ہیں؟


Answer-1: اگرمردار عین نجس نہ ہو تو اس کےوہ اجزاء جن میں روح نہیں ہوتی جیسے بال ناخن وغیرہ پاک ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0


Answer-2: اگرمردار عین نجس نہ ہو تو اس کےوہ اجزاء جن میں روح نہیں ہوتی جیسے بال ناخن وغیرہ پاک ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0


Answer-3: اگرمردار عین نجس نہ ہو تو اس کےوہ اجزاء جن میں روح نہیں ہوتی جیسے بال ناخن وغیرہ پاک ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:17 | volume:0


Answer-4: اگرمردار عین نجس نہ ہو تو اس کےوہ اجزاء جن میں روح نہیں ہوتی جیسے بال ناخن وغیرہ پاک ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:20 | volume:0



309

Category : طہارت

Question : کیا ہر مردہ جانور نجس ہیں؟


Answer-1: ایسے جانور جو خون جہندہ رکھتے ہیں چاہے خود مرگئے ہوں یا غیر دستور شرعی سے ذبح ہوں نجس ہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0


Answer-2: ایسے جانور جو خون جہندہ رکھتے ہیں چاہے خود مرگئے ہوں یا غیر دستور شرعی سے ذبح ہوں نجس ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0


Answer-3: ایسے جانور جو خون جہندہ رکھتے ہیں چاہے خود مرگئے ہوں یا غیر دستور شرعی سے ذبح ہوں نجس ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:17 | volume:0


Answer-4: ایسے جانور جو خون جہندہ رکھتے ہیں چاہے خود مرگئے ہوں یا غیر دستور شرعی سے ذبح ہوں نجس ہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0



310

Category : خمس

Question : اگر کافر سے کوئی مال ملے تو آیا اسپر خمس ہوگا؟


Answer-1: اگر کافر سے کوئی مال ملے تو اسکا خمس واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:327 | volume:0


Answer-2: اگر کافر سے کوئی مال ملے تو اسکا خمس واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:269 | volume:0


Answer-3: اگر کافر سے کوئی مال ملے تو اسکا خمس واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:304 | volume:0


Answer-4: اگر کافر سے کوئی مال شیعہ اثنا عشری کو ملے تو اس کا خمس واجب نہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:313 | volume:0



311

Category : طہارت

Question : کیا مری ہوئی مچھلی نجس ہے؟


Answer-1: مری ہوئی مچھلی پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0


Answer-2: مری ہوئی مچھلی پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0


Answer-3: مری ہوئی مچھلی پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:17 | volume:0


Answer-4: مری ہوئی مچھلی پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0



312

Category : طہارت

Question : اگر ہونٹ کی کھال ہونٹوں سے کھینچی جائیں تو نجس ہونگیں؟


Answer-1: اگر ہونٹوں کی کھال جو آسانی سے نکل جائیں اور ان میں روح نہ ہو تو نکالنے کے بعد پاک رہیں گی۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0


Answer-2: ہونٹ کی ایسی کھال جس کے گرنے کا زمانہ نزدیک ہے اگر ا سی کھال کو کھینچ لیں تو پاک ہی رہیں گی لیکن اس کھال سے جس کے گرنے کا زمانہ نہیں آیا ہے اگر اسے کھینچ لیں تو احتیاط واجب کی بنا پراس سے اجتناب کریں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0


Answer-3: اگر ہونٹوں کی باریک سی کھال کھینچ لیں تو وہ پاک ہی رہیں گی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:18 | volume:0


Answer-4: اگر ہونٹوں کی باریک سی کھال کھینچ لیں تو وہ پاک ہی رہیں گی۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:20 | volume:0



313

Category : طہارت

Question : وہ اشیاء جیسے صابن یا کریم وغیرہ جنہیں بیرونی ممالک سے منگوایا جاتا ہے کیا یہ اشیاءپاک شمار ہونگی جب کے انکے پاک ہونے کا علم نہیں ہے؟


Answer-1: کریم ،تیل اور صابن وغیرہ اگر انکے نجاست کا یقین نہ ہو تو یہ پاک کہلائیں گی۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0


Answer-2: کریم ،تیل اور صابن وغیرہ اگر انکے نجاست کا یقین نہ ہو تو یہ پاک کہلائیں گی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0


Answer-3: کریم ،تیل اور صابن وغیرہ اگر انکے نجاست کا یقین نہ ہو تو یہ پاک کہلائیں گی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:18 | volume:0


Answer-4: کریم ،تیل اور صابن وغیرہ اگر انکے نجاست کا یقین نہ ہو تو یہ پاک کہلائیں گی۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:20 | volume:0



314

Category : طہارت

Question : اگر مردہ مرغی سے انڈا نکل آئے تو کیا یہ نجس ہے؟


Answer-1: اگر مردہ مرغی سے انڈا نکل آئےچاہے انڈے کا چھلکا سخت ہو یا نہ ہو انڈا پاک ہے لیکن اسکے چھلکے کو پاک کرنا ہوگا ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0


Answer-2: اگر مردہ مرغی سے انڈا نکل آئے جبکہ انڈے کا چھلکا سخت ہوچکا ہو تو انڈا پاک ہے لیکن اس کے چھلکے کو پاک کرنا ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0


Answer-3: اگر مردہ مرغی سے انڈا نکل آئے جبکہ انڈے کا چھلکا سخت ہوچکا ہو تو انڈا پاک ہے لیکن اس کے چھلکے کو پاک کرنا ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:18 | volume:0


Answer-4: اگر مردہ مرغی سے انڈا نکل آئے جبکہ انڈے کا چھلکا سخت ہوچکا ہو تو انڈا پاک ہے لیکن اس کے چھلکے کو پاک کرنا ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:20 | volume:0



315

Category : مسجد

Question : مسجد سے نکلتے وقت کونسا قدم پہلے باہر نکالا جائے؟


Answer-1: مستحب ہے مسجد سے نکلتے وقت پہلے بایاں پاؤں باہر رکھیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:177 | volume:0


Answer-2: مستحب ہے مسجد سے نکلتے وقت پہلے بایاں پاؤں باہر رکھیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:145 | volume:0


Answer-3: مستحب ہے مسجد سے نکلتے وقت پہلے بایاں پاؤں باہر رکھیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:159 | volume:0


Answer-4: مستحب ہے مسجد سے نکلتے وقت پہلے بایاں پاؤں باہر رکھیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:166 | volume:0



316

Category : مسجد

Question : مجبوری کے علاوہ مسجد میں سونے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: مجبوری کے علاوہ مسجد میں سونا مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:178 | volume:0


Answer-2: مجبوری کے علاوہ مسجد میں سونا مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:145 | volume:0


Answer-3: مجبوری کے علاوہ مسجد میں سونا مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:159 | volume:0


Answer-4: مجبوری کے علاوہ مسجد میں سونا مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:167 | volume:0



317

Category : مسجد

Question : مسجد میں داخل ہوتے وقت کونسا پیر پہلے داخل کیا جائے؟


Answer-1: مستحب ہے مسجد میں داخل ہوتے وقت پہلے دایاں پاؤں اندر رکھیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:177 | volume:0


Answer-2: مستحب ہے مسجد میں داخل ہوتے وقت پہلے دایاں پاؤں اندر رکھیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:145 | volume:0


Answer-3: مستحب ہے مسجد میں داخل ہوتے وقت پہلے دایاں پاؤں اندر رکھیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:159 | volume:0


Answer-4: مستحب ہے مسجد میں داخل ہوتے وقت پہلے دایاں پاؤں اندر رکھیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:166 | volume:0



318

Category : تقلید

Question : کیا اصول دین میں تقلید کی جاسکتی ہے؟


Answer-1: اصول دین میں تقلید نہیں کی جاسکتی۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:5 | volume:0


Answer-2: اصول دین میں تقلید نہیں کی جاسکتی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:5 | volume:0


Answer-3: اصول دین میں تقلید نہیں کی جاسکتی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:1 | volume:0


Answer-4: اصول دین میں تقلید کرنا باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:5 | volume:0


Answer-5:

Scholar:آیت اللہ سید علی خامنہ ای | Book:توضیح المسائل | Page:3 | volume:0



319

Category : تقلید

Question : مجتھد کے عادل ہونے سے کیا مراد ہے؟


Answer-1: مجتھد کے عادل ہونے سے مراد یہ ہے کہ اپنے اوپر واجب ہونے والے کاموں کو انجام دیتا ہواور حرام کاموں کو ترک کرتا ہو۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0


Answer-2: مجتھد کے عادل ہونے سے مراد یہ ہے کہ اپنے اوپر واجب ہونے والے کاموں کو انجام دیتا ہواور حرام کاموں کو ترک کرتا ہو۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:4 | volume:0


Answer-3: مجتھد کے عادل ہونے سے مراد یہ ہے کہ اپنے اوپر واجب ہونے والے کاموں کو انجام دیتا ہواور حرام کاموں کو ترک کرتا ہو۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0



320

Category : تقلید

Question : اگر کوئی شخص کسی غلطی سے غلط فتوی بیان کردے تو اسکا کیا وظیفہ ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص غلطی سے غلط فتوی بیان کردے اورکوئی شخص اس پر عمل کرنے کی وجہ سے وظیفہ شرعی کے بر خلاف عمل کرے تو احتیاط لازم کی بنا پر اگر ممکن ہو تو غلطی دور کرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:8 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص غلطی سے غلط فتوی بیان کردے اگر اسکے لئے غلطی دور کرنا ممکن ہو تو غلطی دورکرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:4 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص غلطی سے غلط فتوی بیان کردے اگر اسکے لئے غلطی دور کرنا ممکن ہو تو غلطی دورکرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص غلطی سے غلط فتوی بیان کردے اگر وہ واجب کے ترک یا حرام کے مرتکب ہونے کا باعث ہو تو اگر غلطی دور کرنا ممکن ہو تو دور کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:8 | volume:0



321

Category : تقلید

Question : کیا شرعی مسائل کا سیکھنا ضروری ہے؟


Answer-1: وہ شرعی مسائل جن کے نہ سیکھنے کی وجہ سے گناہ میں پڑھنے کا احتمال ہو انکا سیکھنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:8 | volume:0


Answer-2: وہ شرعی مسائل جن کی عام طور پر ضرورت پیش آتی ہے انکا سیکھنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:3 | volume:0


Answer-3: وہ شرعی مسائل جن کی عام طور پر ضرورت پیش آتی ہے انکا سیکھنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:5 | volume:0


Answer-4: وہ شرعی مسائل جو عام طور پرپیش آتے ہیں انکا سیکھنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:8 | volume:0



322

Category : تقلید

Question : کیا اھل علم حضرات کے گروہ کے کہنے سے کسی کی اعلمیت ثابت ہوجاتی ہے؟


Answer-1: اگر اھل علم کا گروہ جو اعلم کو پہچانے کی صلاحیت رکھتا ہو کسی کی اعلمیت کی گواہی دے اور اس سے اطمنان حاصل ہو جائے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0


Answer-2: اگر اھل علم کا گروہ جو اعلم کو پہچانے کی صلاحیت رکھتا ہو کسی کی اعلمیت کی گواہی دے اور اس سے اطمنان حاصل ہو جائے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:2 | volume:0


Answer-3: اگر اھل علم کا گروہ جو اعلم کو پہچانے کی صلاحیت رکھتا ہو کسی کی اعلمیت کی گواہی دے اور اس سے اطمنان حاصل ہو جائے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:4 | volume:0


Answer-4: اگر اھل علم کا گروہ جو اعلم کو پہچانے کی صلاحیت رکھتا ہو کسی کی اعلمیت کی گواہی دے اور اس سے اطمنان حاصل ہو جائے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0



323

Category : تقلید

Question : کیا دو عالم و عادل افراد کی تصدیق سے مجتھد و اعلم کی تصدیق ہو سکتی ہے؟


Answer-1: اگر دو عالم و عادل افراد جو کہ اعلم کو پہنچاننے کی صلاحیت رکھتے ہوں کسی کی تصدیق کریں اور دوسرے دوعالم عادل افراد مخالفت نہ کریں تو مجتھد واعلم کی تصدیق ہوسکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0


Answer-2: اگر دو عالم و عادل افراد جو کہ اعلم کو پہنچاننے کی صلاحیت رکھتے ہوں کسی کی تصدیق کریں اور دوسرے دوعالم عادل افراد مخالفت نہ کریں تو مجتھد واعلم کی تصدیق ہوسکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:2 | volume:0


Answer-3: اگر دو عالم و عادل افراد جو کہ اعلم کو پہنچاننے کی صلاحیت رکھتے ہوں کسی کی تصدیق کریں اور دوسرے دوعالم عادل افراد مخالفت نہ کریں تو مجتھد واعلم کی تصدیق ہوسکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:4 | volume:0


Answer-4: اگر دو عالم و عادل افراد جو کہ اعلم کو پہنچاننے کی صلاحیت رکھتے ہوں کسی کی تصدیق کریں اور دوسرے دوعالم عادل افراد مخالفت نہ کریں تو مجتھد واعلم کی تصدیق ہوسکتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0



324

Category : تقلید

Question : کس صورت میں اعلم مجتہد کی تقلید کرنا ضروری ہے؟


Answer-1: اگر مبتلاء مسائل میں مجتہدوں کے فتوی میں اختلاف کا علم ہو تو اعلم مجتہد کی تقلید کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0


Answer-2: احتیاط واجب کی بنا پر اعلم مجتہد کی تقلید کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:1 | volume:0


Answer-3: اگر مبتلاء مسائل میں مجتہدوں کے فتوی میں اختلاف کا علم ہو تو اعلم مجتہد کی تقلید کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:2 | volume:0


Answer-4: اگر مبتلاء مسائل میں مجتہدوں کے فتوی میں اختلاف کا علم ہو تو اعلم مجتہد کی تقلید کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0



325

Category : تقلید

Question : مجتھد کی عدالت پہنچاننے کا کیا طریقہ ہے ؟


Answer-1: مجتھد کی عدالت پہنچاننے کا طریقہ یہ ہے کہ بظاہر اچھا انسان ہواور اگر اسکے قریب کے لوگوں سے پوچھا جائے تو اسکے اچھائی کی تصدیق کریں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0


Answer-2: مجتھد کی عدالت پہنچاننے کا طریقہ یہ ہے کہ بظاہر اچھا انسان ہواور اگر اسکے قریب کے لوگوں سے پوچھا جائے تو اسکے اچھائی کی تصدیق کریں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0


Answer-3: مجتھد کی عدالت پہنچاننے کا طریقہ یہ ہے کہ بظاہر اچھا انسان ہواور اگر اسکے قریب کے لوگوں سے پوچھا جائے تو اسکے اچھائی کی تصدیق کریں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:4 | volume:0



326

Category : تقلید

Question : شرعی احکام میں تقلید کرنے سے کیا مراد ہے؟


Answer-1: شرعی احکام میں تقلید کرنے سے مراد مجتھد کے بتائے ہوئے احکامات پر عمل کرنا ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0


Answer-2: شرعی احکام میں تقلید کرنے سے مراد مجتھد کے بتائے ہوئے احکامات پر عمل کرنا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:1 | volume:0


Answer-3: شرعی احکام میں تقلید کرنے سے مراد مجتھد کے بتائے ہوئے احکامات پر عمل کرنا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:3 | volume:0


Answer-4: شرعی احکام میں تقلید کرنے سے مراد مجتھد کے بتائے ہوئے احکامات پر عمل کرنا ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0



327

Category : تقلید

Question : جس مجتھد کی تقلید کی جائے اسمیں کن شرائط کا ہونا ضروری ہے؟


Answer-1: جس مجتھد کی تقلید کی جائے اسکا مرد ،بالغ ،عاقل ، شیعہ بارہ امامی، حلال زادہ ،زندہ اعلم اور عادل ہونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0


Answer-2: جس مجتھد کی تقلید کی جائے اسکا مرد ،بالغ ،عاقل ، شیعہ،بارہ امامی، حلال زادہ ،زندہ اور عادل ہونا ضروری ہے اور احتیاط واجب کی بنا پر دینا پرست نہ ہو اور اعلم ہو ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:1 | volume:0


Answer-3: جس مجتھد کی تقلید کی جائے اسکا مرد ،بالغ ،عاقل ، شیعہ ،بارہ امامی، حلال زادہ ،زندہ اعلم اور عادل ہونا ضروری ہے

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:3 | volume:0


Answer-4: جس مجتھد کی تقلید کی جائے اسکا مرد ،بالغ ،عاقل ، شیعہ بارہ امامی، حلال زادہ ،زندہ اعلم اور عادل ہونا ضروری ہے

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0



328

Category : تقلید

Question : کیا ہر بالغ عاقل شخص کے لئے تقلید کرنا ضروری ہے؟


Answer-1: اگر بالغ عاقل شخص مجتہد نہ ہو اور احتیاط پر عمل نہ کرسکتا ہو تواسکے لئے مجتہد کی تقلید کرنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:5 | volume:0


Answer-2: اگر بالغ عاقل شخص مجتہد نہ ہو اور احتیاط پر عمل نہ کرسکتا ہو تو اسکے لئے ضروری ہے کہ مجتہد کی تقلید کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:1 | volume:0


Answer-3: اگر بالغ عاقل شخص مجتہد نہ ہو اور احتیاط پر عمل نہ کرسکتا ہو تو اسکے لئے واجب ہے کہ مجتہد کی تقلید کرے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:3 | volume:0


Answer-4: اگر بالغ عاقل شخص مجتہد نہ ہو اور احتیاط پر عمل نہ کرسکتا ہو تو اسکے لئے ضروری ہے کہ مجتہد کی تقلید کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:5 | volume:0



329

Category : خمس

Question : تاجراور صنعت کار خمس دینے کیلئے ایک سال کا حساب کب سے کریں گے؟


Answer-1: تاجر صنعت کار جب کمائی یا کام شروع کریں اس وقت سے ایک سال کا حساب کریں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:327 | volume:0


Answer-2: تاجر صنعت کار جب کمائی یا کام شروع کریں اس وقت سے ایک سال کا حساب کریں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:269 | volume:0


Answer-3: تاجر صنعت کار کو جب بھی کوئی نفع ہو اس وقت سے ایک سال تک حساب کرسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:304 | volume:0


Answer-4: تاجر صنعت کار کو جب نفع ہو اس وقت سے ایک سال کا حساب کر یں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:313 | volume:0


Answer-5: تاجر صنعت کار کو جب بھی کوئی نفع ہو اس وقت سے ایک سال تک حساب کرسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:304 | volume:0



330

Category : خمس

Question : نفع کے بعد خمس دینے میں کتنی دیر تک تاخیر کرسکتے ہیں ؟


Answer-1: نفع کے بعد خمس سال کےآخر تک دے سکتے ہیں اور اگر معلوم ہو کہ سال کے آخر تک اس کی ضرورت نہیں ہوگی تو احتیاط واجب کی بنا پر فوراً خمس دینا ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:328 | volume:0


Answer-2: نفع کے بعد خمس سال کے آخر تک دے سکتے ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:269 | volume:0


Answer-3: نفع کے بعد خمس سال کے آخر تک دے سکتے ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:304 | volume:0


Answer-4: نفع کے بعد خمس سال کے آخر تک دے سکتے ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:313 | volume:0



331

Category : طہارت

Question : کیا مچھر کا خون پاک ہے؟


Answer-1: مچھر کا خون پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:23 | volume:0


Answer-2: مچھر کا خون پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:16 | volume:0


Answer-3: مچھر کا خون پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:18 | volume:0


Answer-4: مچھر کا خون پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:20 | volume:0



332

Category : طہارت

Question : اگر مسلمانوں کے بازار سے چمڑا خریدا جائے تو اس کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر یہ چمڑا ایسے جانور کا ہے جس کے بارے میں احتمال دیا جاتا ہو کہ دستور شرعی کے مطابق ذبح کیا گیا ہے تو چمڑاپاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0


Answer-2: ایسا چمڑا جو مسلمانوں کے بازا رمیں فروخت ہورہا ہو پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:15 | volume:0


Answer-3: اگر چمڑا مسلمانوں کے بازار سے خریدا گیا ہو تو پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:20 | volume:0


Answer-4: اگر یہ چمڑا ایسے جانور کا ہے جس کے بارے میں احتمال دیا جاتا ہو کہ دستور شرعی کے مطابق ذبح کیا گیا ہے تو چمڑاپاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:18 | volume:0



333

Category : نماز

Question : اگر کوئی بھولے سے قیام متصل بہ رکوع کوچھوڑدے تو کیا اس کی نماز صحیح ہے؟


Answer-1: قیام متصل بہ رکوع کوچھوڑنے سے نماز باطل ہوجاتی ہے چاہے بھولے ہی سے چھوڑا ہو۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:184 | volume:0


Answer-2: قیام متصل بہ رکوع کوچھوڑنے سے نماز باطل ہوجاتی ہے چاہے بھولے ہی سے چھوڑا ہو۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:149 | volume:0


Answer-3: قیام متصل بہ رکوع کوچھوڑنے سے نماز باطل ہوجاتی ہے چاہے بھولے ہی سے چھوڑا ہو۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:165 | volume:0


Answer-4: قیام متصل بہ رکوع کوچھوڑنے سے نماز باطل ہوجاتی ہے چاہے بھولے ہی سے چھوڑا ہو۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:171 | volume:0



334

Category : نماز

Question : اگر کسی نے تکبیر الاحرام کو بھولے سے انجام نہیں دیا تو اس کی نمازصحیح ہے؟


Answer-1: اگر کسی نے تکبیر الاحرام کو صحیح انجام نہیں دیا اس کی نماز باطل ہے چاہے اس نے بھول کرایسا کیا ہو۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:185 | volume:0


Answer-2: اگر کسی نے تکبیر الاحرام کو صحیح انجام نہیں دیا اس کی نماز باطل ہے چاہے اس نے بھول کرایسا کیا ہو۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:150 | volume:0


Answer-3: اگر کسی نے تکبیر الاحرام کو صحیح انجام نہیں دیا اس کی نماز باطل ہے چاہے اس نے بھول کرایسا کیا ہو۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:166 | volume:0


Answer-4: اگر کسی نے تکبیر الاحرام کو صحیح انجام نہیں دیا اس کی نماز باطل ہے چاہے اس نے بھول کرایسا کیا ہو۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:173 | volume:0



335

Category : نماز

Question : کیا زبان سے نماز کی نیت کی ادا ئیگی ضروری ہے؟


Answer-1: زبان سے نماز کی نیت کی ادائیگی ضروری نہیں ہے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:184 | volume:0


Answer-2: زبان سے نماز کی نیت کی ادائیگی ضروری نہیں ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:149 | volume:0


Answer-3: زبان سے نماز کی نیت کی ادائیگی ضروری نہیں ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:165 | volume:0


Answer-4: زبان سے نماز کی نیت کی ادائیگی ضروری نہیں ہے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:172 | volume:0



336

Category : خمس

Question : خمس دینے کے لئے شمسی سال کو معیار قراردے سکتے ہیں؟


Answer-1: خمس دینے کے لئے شمسی سال کو معیار قراردے سکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:328 | volume:0


Answer-2: خمس دینے کے لئے شمسی سال کو معیار قراردے سکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:269 | volume:0


Answer-3: خمس دینے کے لئے شمسی سال کو معیار قراردے سکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:304 | volume:0


Answer-4: خمس دینے کے لئے احتیاط واجب کی بنا پر قمری سال کا لحاظ کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:313 | volume:0



337

Category : نماز

Question : کیا تکبیرۃ الا حرام کے وقت قیام واجب رکنی ہے؟


Answer-1: تکبیرۃ الاحرام کےوقت قیام واجب رکنی ہے اسے ترک کرنے سے نماز باطل ہوجائے گی۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:188 | volume:0


Answer-2: تکبیرۃ الاحرام کےوقت قیام واجب رکنی ہے اسے ترک کرنے سے نماز باطل ہوجائے گی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:151 | volume:0


Answer-3: تکبیرۃ الاحرام کےوقت قیام واجب رکنی ہے اسے ترک کرنے سے نماز باطل ہوجائے گی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:167 | volume:0


Answer-4: تکبیرۃ الاحرام کےوقت قیام واجب رکنی ہے اسے ترک کرنے سے نماز باطل ہوجائے گی۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:174 | volume:0



338

Category : نماز

Question : کیا تکبیرۃ الاحرام اور دیگر تکبیرات کے وقت ہاتھوں کو کانوں تک لیجانا واجب ہے؟


Answer-1: تکبیرۃ الاحرام اور دیگر تکبیرات کے وقت ہاتھوں کو کانوں تک لیجانا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:186 | volume:0


Answer-2: تکبیرۃ الاحرام اور دیگر تکبیرات کے وقت ہاتھوں کو کانوں تک لیجانا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:151 | volume:0


Answer-3: تکبیرۃ الاحرام اور دیگر تکبیرات کے وقت ہاتھوں کو کانوں تک لیجانا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:167 | volume:0


Answer-4: تکبیرۃ الاحرام اور دیگر تکبیرات کے وقت ہاتھوں کو کانوں تک لیجانا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:174 | volume:0



339

Category : تقلید

Question : اگراعلم مجتہد کسی مسئلہ میں اسطرح کہہ کہ احتیاط کی بنا پر فلان طریقے پر عمل کرے تو مقلد کا کیاوظیفہ ہے؟


Answer-1: اگر اعلم مجتہد کسی میں اسطرح کہہ کہ احتیاط کی بنا پر فلان طریقے پر عمل کرے تو یا اسی احتیاط پر عمل کرے یا اسکے بعد والے مجتہد جو دوسروں سے اعلم ہو اس کے فتوی پر عمل کرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:7 | volume:0


Answer-2: اگر اعلم مجتہد کسی میں اسطرح کہہ کہ احتیاط کی بنا پر فلان طریقے پر عمل کرے تو یا اسی احتیاط پر عمل کرے یا اسکے بعد والے مجتہد جو دوسروں سے اعلم ہو اس کے فتوی پر عمل کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:2 | volume:0


Answer-3: اگر اعلم مجتہد کسی میں اسطرح کہہ کہ احتیاط کی بنا پر فلان طریقے پر عمل کرے تو یا اسی احتیاط پر عمل کرے یا اس مجتہد کے مسائل پر عمل کرے جس کی تقلید کرنا جائز ہو ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:5 | volume:0


Answer-4: اگر اعلم مجتہد کسی میں اسطرح کہہ کہ احتیاط کی بنا پر فلان طریقے پر عمل کرے تو یا اسی احتیاط پر عمل کرے یا اسکے بعد والے مجتہد جو دوسروں سے اعلم ہو اس کے فتوی پر عمل کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:7 | volume:0



340

Category : تقلید

Question : اگر کوئی شخص ایک مدت تک بغیر تقلید کے عمل کرتا رہے اسکے اعمال کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص بغیر تقلید کے عمل کرتا رہا ہو اگر اسکے اعمال واقع کے مطابق ہوں یا موجودہ جامع الشرائط مجتہدجو اس کا مرجع ہوسکتا ہواس کے فتوے کے مطابق ہوں تو صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:8 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص بغیر تقلید کے عمل کرتا رہا ہو اگر اسکے اعمال واقع کے مطابق ہوں یا ایسے جامع الشرائط مجتھد کے فتوے کے مطابق ہوں ۔جسکی تقلید اسکا وظیفہ تھا یا جسکی تقلید ابھی وظیفہ ہو تو صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:14 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص بغیر تقلید کے عمل کرتا رہا ہو اور پھر تقلید کرے تو اگر اسکا مجتہد اسکے گذشتہ اعمال کے صحیح ہونے کا حکم کرے تو وہ صحیح ہیں ورنہ باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص بغیر تقلید کے عمل کرتا رہا ہو اگر اسکے اعمال واقع کے مطابق ہوں یا موجودہ جامع الشرائط مجتہدجو اس کا مرجع ہوسکتا ہواس کے فتوے کے مطابق ہوں تو صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:8 | volume:0



341

Category : نماز

Question : اگر نمازمیں کوئی شخص شک کرے کہ تکبیرۃ الاحرام کہی ہے یا نہیں تو اس کی کیا ذمہ داری ہے؟


Answer-1: جو شخص نماز میں شک کرے کہ تکبیرۃ الاحرام کہی ہے یا نہیں اگر قرائت شروع کر چکا ہو تو شک کی پرواہ نہ کرے اور اگر قرائت شروع نہیں کی تو تکبیر کو ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:187 | volume:0


Answer-2: جو شخص نماز میں شک کرے کہ تکبیرۃ الاحرام کہی ہے یا نہیں اگر قرائت شروع کر چکا ہو تو شک کی پرواہ نہ کرے اور اگر قرائت شروع نہیں کی تو تکبیر کو ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:151 | volume:0


Answer-3: جو شخص نماز میں شک کرے کہ تکبیرۃ الاحرام کہی ہے یا نہیں اگر قرائت شروع کر چکا ہو تو شک کی پرواہ نہ کرے اور اگر قرائت شروع نہیں کی تو تکبیر کو ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:167 | volume:0


Answer-4: جو شخص نماز میں شک کرے کہ تکبیرۃ الاحرام کہی ہے یا نہیں اگر قرائت شروع کر چکا ہو تو شک کی پرواہ نہ کرے اور اگر قرائت شروع نہیں کی تو تکبیر کو ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:174 | volume:0



342

Category : تقلید

Question : کیا اس مجتہد کی تقلید کی جاسکتی ہے جو علم کے لحاظ سے دوسرے مجتہد سے کمتر ہو لیکن تقویٰ کے لحاظ سے برتر ہو؟


Answer-1: اگر معمولاً پیش آنے والے مسائل میں مجتہد ین کے فتوے میں اختلاف ہو تو اعلم مجتہد کی تقلید کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0


Answer-2: احتیاط واجب کی بنا پر اعلم مجتہد کی تقلید کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:1 | volume:0


Answer-3: اگر معمولاً پیش آنے والے مسائل میں مجتہد ین کے فتوے میں اختلاف ہو تو اعلم مجتہد کی تقلید کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:4 | volume:0


Answer-4: اگر معمولاً پیش آنے والے مسائل میں مجتہد ین کے فتوے میں اختلاف ہو تو اعلم مجتہد کی تقلید کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:6 | volume:0



343

Category : تقلید

Question : اگر اعلم مجتہد فتوی دینے کے بعد یا اس سے پہلے احتیاط کرنے کا کہہ تو کیا اس احتیاط پر عمل کرنا ضروری ہے؟


Answer-1: اگراعلم مجتہد فتوی دینے کے بعد یا اس سے پہلے احتیاط کرنے کا کہہ تو اس پر عمل کرنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:7 | volume:0


Answer-2: اگراعلم مجتہد فتوی دینے کے بعد یا اس سے پہلے احتیاط کرنے کا کہہ تو اس پر عمل کرنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:3 | volume:0


Answer-3: اگراعلم مجتہد فتوی دینے کے بعد یا اس سے پہلے احتیاط کرنے کا کہہ تو اس پر عمل کرنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:5 | volume:0


Answer-4: اگراعلم مجتہد فتوی دینے کے بعد یا اس سے پہلے احتیاط کرنے کا کہہ تو اس پر عمل کرنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:8 | volume:0



344

Category : نماز

Question : اگر تکبیر الاحرام کے بعد شک ہوجائے کہ صحیح ادا کی ہے یا نہیں تو کیا حکم ہے ؟


Answer-1: اگر تکبیر الاحرام کے بعد شک ہوجائے کہ صحیح ادا کی ہے یا نہیں تو اس شک کی پرواہ نہ کریں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:187 | volume:0


Answer-2: اگر تکبیر الاحرام کے بعد شک ہوجائے کہ صحیح ادا کی ہے یا نہیں تو اس شک کی پرواہ نہ کریں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:151 | volume:0


Answer-3: اگر تکبیر الاحرام کے بعد شک ہوجائے کہ صحیح ادا کی ہے یا نہیں تو اس شک کی پرواہ نہ کریں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:167 | volume:0


Answer-4: اگر تکبیر الاحرام کے بعد شک ہوجائے کہ صحیح ادا کی ہے یا نہیں تو اس شک کی پرواہ نہ کریں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:174 | volume:0



345

Category : تقلید

Question : ہم جس اعلم مجتہد کی تقلید کرتے ہوں اگر اسکی وفات ہوجائے تو کیا حکم ہے؟


Answer-1: جس مجتہد کی تقلید کرتے ہوں اگر اسکی وفات ہوجائے تو اگر وہ زندہ مجتہد سے اعلم ہو تو اسی کی تقلید پر باقی رہنا ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:7 | volume:0


Answer-2: جس مجتہد کی تقلید کرتے ہوں اگر اسکی وفات ہوجائے تو اگر زندہ مجتہد مرحوم مجتہد کی تقلید پر باقی رہنے کی اجازت دے تو باقی رہے سکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:3 | volume:0


Answer-3: جس مجتہد کی تقلید کرتے ہوں اگر اسکے مسائل جو سیکھے تھے اور یاد ہوں تو ان پر عمل کرسکتے ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:5 | volume:0


Answer-4: جس مجتہد کی تقلید کرتے ہوں اگر اسکی وفات ہوجائے تو اگر وہ زندہ مجتہد سے اعلم ہو تو چاہے اسکے مسائل پر عمل کیا ہو یا نہ کیا ہو اس کی تقلید پر باقی رہےگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:8 | volume:0



346

Category : خمس

Question : آیا جب بھی نفع ہو اسکا خمس فوراً ادا کرسکتے ہیں؟


Answer-1: جب بھی نفع ہو اسکا فوراً خمس دینا واجب نہیں ہے لیکن اگر معلوم ہوکہ سال آخر تک اسکی ضرورت نہیں ہوگی تو احتیاط واجب کی بنا پر فوراً خمس دے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:328 | volume:0


Answer-2: جب بھی نفع ہو اسکا فوراً خمس دینا واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:269 | volume:0


Answer-3: جب بھی نفع ہو اسکا فوراً خمس دینا واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:304 | volume:0


Answer-4: جب بھی نفع ہو اسکا فوراً خمس دینا واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:313 | volume:0



347

Category : خمس

Question : اگر نفع ہو اورسال مکمل ہونے سے پہلے مرجائے تو کیاحکم ہوگا؟


Answer-1: اگر کوئی منافع حاصل ہو اور سال مکمل ہونے سے پہلے وہ شخص مرجائے تو مرنے تک جتنے اخراجات ہوں گے وہ نفع سے منھا کردیں اور باقی ماندہ کا خمس فوراً ادا کرنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:328 | volume:0


Answer-2: اگر تاجر و دکان داروغیرہ کو کہ جنکا خمس دینے کا سال مقرر ہے کوئی نفع ہو اور وہ سال سے پہلےمر جائے تو مرنے تک جتنے اخراجات ہوئےہیں اسکو منھا کر کے باقی ماندہ کاخمس ادا کرنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:313 | volume:0


Answer-3: اگر تاجر دکان دار وغیرہ کوکہ جن کو خمس دینے کیلئے سال مقرر کرنا چاہیے کوئی نفع ہو اور وہ سال سے پہلے مرجائے تو مرنے تک جتنے اخراجات ہوئے ہیں نفع سے منھا کر کے با قی ماندہ کا خمس دینا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:269 | volume:0


Answer-4: اگر تاجر دکان دار جیسے لوگوں کو جو خمس دینے کیلئے سال قرار دیں کوئی نفع ہو اور سال سے پہلے مرجائے تو مرنے تک جتنے اخراجات ہوتے ہیں نفع سے منھا کرکے باقی ماندہ کا خمس دینا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:304 | volume:0



348

Category : خمس

Question : اگر کسی کا کوئی مستقل ذریعہ معاش نہ ہو حکومت وغیرہ کے ذریعےکوئی فائدہ حاصل ہوتا ہو تو وہ کب سے سال کا حساب کرےگا؟


Answer-1: جسکا کوئی مستقل ذریعہ معاش نہ ہو اگر اسےاتفاق سے کوئی فائدہ حاصل ہوجائے تو جب سے فائدہ ہواسوقت سے سال کا حساب کریں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:327 | volume:0


Answer-2: جسکا کوئی مستقل ذریعہ معاش نہ ہو اگر اسےاتفاق سے کوئی فائدہ حاصل ہوجائے تو جب سے فائدہ ہو اسوقت سے سال کا حساب کریں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:269 | volume:0


Answer-3: جسکا کوئی مستقل ذریعہ معاش نہ ہو اگر اسےاتفاق سے کوئی فائدہ حاصل ہوجائے تو جب سے فائدہ ہو اسوقت سےسال کا حساب کریں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:304 | volume:0


Answer-4: جسکا کوئی مستقل ذریعہ معاش نہ ہواگر اسے اتفاق سے کوئی فائدہ حاصل ہوجائے تو جب سے فائدہ ہو اسوقت سےسال کا حساب کریں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:313 | volume:0



349

Category : خمس

Question : جو تحفہ شادی وغیرہ میں دیا جاتا ہے اسکا خمس دینا واجب ہے؟


Answer-1: جو تحفہ اپنی حیثیت سے زیادہ نہ ہو تو اسکا خمس دینا واجب نہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:329 | volume:0


Answer-2: جو تحفہ اپنی حیثیت سے زیادہ نہ ہو تو اسکا خمس دینا واجب نہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:271 | volume:0


Answer-3: جو تحفہ اپنی حیثیت سے زیادہ نہ ہو تو اسکا خمس دینا واجب نہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:306 | volume:0


Answer-4: جو تحفہ اپنی حیثیت سے زیادہ نہ ہو تو اسکا خمس دینا واجب نہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:315 | volume:0



350

Category : خمس

Question : جو پیسے زیارت پر جانے میں استعمال ہون تو آیا اسکا خمس دینا واجب ہے؟


Answer-1: جو پیسے زیارت کے دوران اپنی حیثیت کے مطابق خرچوں میں استعمال ہوں تو اسکا خمس دینا واجب نہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:329 | volume:0


Answer-2: جو پیسے زیارت کے دوران اپنی حیثیت اور ضرورت کے مطابق خرچوں میں استعمال ہوں اسکا خمس دینا واجب نہیں

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:270 | volume:0


Answer-3: جو پیسے زیارت کے دوران اپنی حیثیت اور ضرورت کے مطابق خرچوں میں استعمال ہوں اسکا خمس دینا واجب نہیں

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:305 | volume:0


Answer-4: جو پیسے زیارت کے دوران اپنی حیثیت کے مطابق خرچوں میں استعمال ہوں تو اسکا خمس دینا واجب نہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:315 | volume:0



351

Category : خمس

Question : اگر سال کے نفع سے منت کو پورا کریں تو اسکا خمس ادا کرنے کے بعد پورا کریں گے؟


Answer-1: سال کے نفع سے منت ادا کرنے کیلئے اسکا خمس دینا واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:329 | volume:0


Answer-2: سال کے نفع سے منت ادا کرنے کیلئے اسکا خمس دینا واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:271 | volume:0


Answer-3: سال کے نفع سے منت ادا کرنے کیلئے اسکا خمس دینا واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:306 | volume:0


Answer-4: سال کے نفع سے منت ادا کرنے کیلئے اسکا خمس دینا واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:315 | volume:0



352

Category : طہارت

Question : بعض اوقات انڈے کی زردی میں خون کا زرہ ہوتا ہے تو ایسے انڈے کا کھانا کیسا ہے؟


Answer-1: ایسے انڈے سے جس کی زردی میں خون کا زرہ ہواحتیاط مستحب کی بناء پر اجتناب کیا جائے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:23 | volume:0


Answer-2: وہ خون جو انڈے کی زردی میں نظر آتا ہے نجس نہیں ہے لیکن احتیاط واجب کی بنا پر اس کے کھانے سے اجتناب کیا جائے البتہ اگر زردی کو پھیٹنے سے خون زائل ہوجائے تو اس کا کھا نا صحیح ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:16 | volume:0


Answer-3: ایسے انڈے جس کی زردی میں خون ہو بنا پر احتیاط واجباب اجتناب کیا جائے لیکن اگر زردی کے اوپر کی جھلی سالم ہے تو سفیدی پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:18 | volume:0


Answer-4: ایسے انڈے جسکی زردی میں خون ہو اسکا کھانا حرام اور احتیاط کی بنا پر نجس ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:21 | volume:0



353

Category : طہارت

Question : جانور کو ذبح کرنے کے بعد جو عام طورسے خون بدن میں رہ جاتا ہے اس کا حکم شرعی کیا ہے؟


Answer-1: اگر حلال جانور کو شرعی طریقے سے ذبح کیا جائے اور اتنا خون باہر نکل آئے کہ جتنا عام طور سے نکلتا ہے تو بدن میں باقی بچ جانے والا خون پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:23 | volume:0


Answer-2: اگر حلال جانور کو شرعی طریقے سے ذبح کیا جائے اور اتنا خون باہر نکل آئے کہ جتنا عام طور سے نکلتا ہے تو بدن میں باقی بچ جانے والا خون پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:16 | volume:0


Answer-3: اگر حلال جانور کو شرعی طریقے سے ذبح کیا جائے اور اتنا خون باہر نکل آئے کہ جتنا عام طور سے نکلتا ہے تو بدن میں باقی بچ جانے والا خون پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:18 | volume:0


Answer-4: اگر حلال جانور کو شرعی طریقے سے ذبح کیا جائے اور اتنا خون باہر نکل آئے کہ جتنا عام طور سے نکلتا ہے تو بدن میں باقی بچ جانے والا خون پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:20 | volume:0



354

Category : خمس

Question : جو پیسہ بچے کی شادی پر صرف ہو اس پر خمس واجب ہے یا نہیں ؟


Answer-1: جو پیسے بچے کی شادی میں اپنی شان کے مطابق صرف ہو تو اسکا خمس واجب نہیں ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:329 | volume:0


Answer-2: جو پیسے بچے کی شادی میں اپنی حیثیت کے مطابق اور ضرورت سے زیادہ صرف نہ ہو تو اسکا خمس واجب نہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:270 | volume:0


Answer-3: جو پیسے بچے کی شادی میں اپنی حیثیت کے مطابق اور ضرورت سے زیادہ صرف نہ ہو تو اسکا خمس واجب نہیں ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:305 | volume:0


Answer-4: جو پیسے بچے کی شادی میں اپنی شان کے مطابق صرف ہو تو اسکا خمس واجب نہیں ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:315 | volume:0



355

Category : تقلید

Question : کیا کسی مورد اطمینان شخص سے مجتہد کا فتویٰ سن کر اس پر عمل کیا جاسکتا ہے؟


Answer-1: اگر انسان کسی ایسے شخص سے مجتہد کا فتویٰ سنے کہ جسکے کہنے سے اطمینان حاصل ہوجائے تو عمل کرسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:7 | volume:0


Answer-2: اگر انسان کسی شخص سے مجتہد کا فتویٰ سنے جو مورد اطمینان ہو اور سچا ہو تو اس پر عمل کرسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:4 | volume:0


Answer-3: اگر انسان کسی ایسے شخص سے مجتہد کا فتویٰ سنے کہ جسکے کہنے سے اطمینان حاصل ہوجائے تو عمل کرسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:2 | volume:0


Answer-4: اگر انسان کسی ایسے شخص سے مجتہد کا فتویٰ سنے کہ جسکے کہنے سے اطمینان حاصل ہوجائے تو عمل کرسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:7 | volume:0



356

Category : تقلید

Question : اگر کوئی شخص مجتہد کا فتویٰ بیان کرے تو کیا اس پر عمل کیا جاسکتا ہے ؟


Answer-1: اگر کسی ایسے شخص سے مجتہد کا فتویٰ سنے کےجس پر اطمینان ہو تو عمل کیا جاسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:7 | volume:0


Answer-2: اگر کسی ایسے شخص سے مجتہد کا فتویٰ سنے کے جسکے اوپر اطمینان ہو اور وہ سچا ہو تو عمل کیا جاسکتا ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:2 | volume:0


Answer-3: اگر کسی ایسے شخص سے مجتہد کا فتویٰ سنے کےجس پر اطمینان ہو تو عمل کیا جاسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:4 | volume:0


Answer-4: اگر کسی ایسے شخص سے مجتہد کا فتویٰ سنے کے جو مورد اطمینان ہو اور اس کے بتائے ہوئے مسئلے کے بر خلاف گمان نہ ہو یا اسکے کہنے پر اطمینان ہو تو عمل کیا جاسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:7 | volume:0



357

Category : خمس

Question : نفع سے پوشاک اور اشیاء خریدنا خمس نکال کر ضروری ہے یا خمس نکالے بغیر خرید سکتے ہیں؟


Answer-1: اگر پوشاک اور اشیاء شان اورحیثیت کے مطابق ہوں تو نفع سے خمس نکالے بغیر خرید سکتے ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:329 | volume:0


Answer-2: اگر پوشاک اور اشیا ء حیثیت کے مطابق اور ضرورت کی مقدار میں ہوں تو نفع سے خمس نکالے بغیر خرید سکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:270 | volume:0


Answer-3: اگر پوشاک اور اشیا ء حیثیت کے مطابق اور ضرورت کی مقدار میں ہوں تو نفع سے خمس نکالے بغیر خرید سکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:305 | volume:0


Answer-4: اگر پوشاک اور اشیاء شان اورحیثیت کے مطابق ہوں تو نفع سے خمس نکالے بغیر خرید سکتے ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:315 | volume:0



358

Category : خمس

Question : اگر کھانے پینے کی اشیاء خریدنا ہو ں تو نفع سے خمس نکال کر خریدنا ہوں گی یا خمس کے بغیر بھی خرید سکتے ہیں؟


Answer-1: اشیاء خوردونوش حیثیت کے مطابق ہوں تو خریدنے کیلئے خمس نکالنے کی ضرورت نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:329 | volume:0


Answer-2: اشیاء خوردونوش حیثیت کے مطابق ہوں تو اور ضرورت کی مقدار میں ہوں تو خمس نکالنے کی ضرورت نہیں ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:270 | volume:0


Answer-3: اشیاء خوردونوش حیثیت کے مطابق ہوں اور ضرورت کی مقدار میں ہو ں تو خمس نکالنے کی ضرورت نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:305 | volume:0


Answer-4: اشیاء خوردونوش حیثیت کے مطابق ہوں خریدنے کیلئے خمس نکالنے کی ضرورت نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:315 | volume:0



359

Category : خمس

Question : نفع سے گھر خریدنے کیلئے خمس نکالنا ہوگایا خمس نکالے بغیر بھی خریدسکتے ہیں؟


Answer-1: اگر گھر اپنی حیثیت کے مطابق ہو تو خمس نکال کر خریدنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:329 | volume:0


Answer-2: اگر گھر حیثیت اور ضرورت کے مطابق ہو تو خمس نکال کر خریدنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:270 | volume:0


Answer-3: اگر گھر حیثیت اور ضرورت کے مطابق ہو تو خمس نکال کر خریدنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:305 | volume:0


Answer-4: اگر گھراپنی حیثیت کے مطابق ہو تو خمس نکال کر خریدنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:315 | volume:0



360

Category : خمس

Question : اگر کسی شخص نے سال کے منافع سے استعمال کے لئے کچھ چیزیں خریدیں سال کے آخر میں اس سے کچھ بچ جائے تو کیا حکم ہے ؟


Answer-1: اگر سال کے استعمال کے لئے سال کے منافع سے کچھ چیزیں خریدیں ہوں اور سال کے آخر میں اس میں سے کچھ بچ جائیں تو اسکا خمس دینا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:330 | volume:0


Answer-2: اگر سال کے استعمال کے لئے سال کے منافع سے کچھ چیزیں خریدیں ہوں اور سال کے آخر میں اس میں سے کچھ بچ جائیں تو اسکا خمس دینا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:271 | volume:0


Answer-3: اگر سال کے استعمال کے لئے سال کے منافع سے کچھ چیزیں خریدیں ہوں اور سال کے آخر میں اس میں سے کچھ بچ جائیں تو اسکا خمس دینا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:306 | volume:0


Answer-4: اگر سال کے استعمال کے لئے سال کے منافع سے کچھ چیزیں خریدیں ہوں اور سال کے آخر میں اس میں سے کچھ بچ جائیں تو اسکا خمس دینا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:316 | volume:0



361

Category : طہارت

Question : جانور سے دودھ دوھتے وقت خون نکل آئے تو کیا دودھ نجس ہے؟


Answer-1: جانور کے دودھ دوھنے کے دوران اگر خون نکل آئےتو یہ دودھ کو نجس کردیگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:23 | volume:0


Answer-2: جانور کے دودھ دوھنے کے دوران اگر خون نکل آئےتو یہ دودھ کو نجس کردیگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:16 | volume:0


Answer-3: جانور کے دودھ دوھنے کے دوران اگر خون نکل آئےتو یہ دودھ کو نجس کردیگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0


Answer-4: جانور کے دودھ دوھنے کے دوران اگر خون نکل آئےتو یہ دودھ کو نجس کردیگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:21 | volume:0



362

Category : طہارت

Question : کبھی کبھار دانتوں کے درمیان سے خون رسنے لگتا ہے کیا اس خون سے اجتناب کرنا چاھئیے؟


Answer-1: اگر دانتوں کے درمیان رسنے والا خون لعاب دھن سے مخلوط ہونے کی وجہ سے زائل ہوجائے تو ایسی صورت میں اجتناب ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:23 | volume:0


Answer-2: اگر دانتوں کے درمیان رسنے والا خون لعاب دھن سے مخلوط ہونے کی وجہ سے زائل ہوجائے تو ایسی صورت میں اجتناب ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:16 | volume:0


Answer-3: اگر دانتوں کے درمیان رسنے والا خون لعاب دھن سے مخلوط ہونے کی وجہ سے زائل ہوجائے تو ایسی صورت میں اجتناب ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0


Answer-4: اگر دانتوں کے درمیان رسنے والا خون لعاب دھن سے مخلوط ہونے کی وجہ سے زائل ہوجائے تو ایسی صورت میں اجتناب ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:21 | volume:0



363

Category : طہارت

Question : اگر کھانا پکاتے وقت خون کا معمولی سا قطرہ کھانے میں گر جائے تو کیا برتن اور غذا دونوں نجس ہوجائیں گے؟


Answer-1: کھانا پکاتے وقت اگر معمولی سا خون کا قطرہ کھانے میں گر جائے تو احتیاط لازم کی بنا پر برتن اور غذا دونوں نجس ہوجائیں گے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:23 | volume:0


Answer-2: کھانا پکاتے وقت اگر معمولی سا خون کا قطرہ کھانے میں گر جائے تو بر تن اور غذا دونوں نجس ہوجائیں گے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:17 | volume:0


Answer-3: کھانا پکاتے وقت اگر معمولی سا خون کا قطرہ کھانے میں گر جائے تو بر تن اور غذا دونوں نجس ہوجائیں گے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0


Answer-4: کھانا پکاتے وقت اگر معمولی سا خون کا قطرہ کھانے میں گر جائے تو بر تن اور غذا دونوں نجس ہوجائیں گے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:21 | volume:0



364

Category : طہارت

Question : بعض اوقات چوٹ لگنے سے ناخن میں خون جمع ہوجاتا ہے یا نیلا پڑجاتا ہے تو اس کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: وہ خون جو چوٹ لگنے سےناخن یا کھال کے نیچے مر جاتا ہےاگر اسے خون کہا جائے اور ظاہر بھی ہوجائے تو نجس ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:23 | volume:0


Answer-2: وہ خون جو چوٹ لگنے سےناخن یا کھال کے نیچے مر جاتا ہےاگر اسے خون نہ کہا جائے تو پاک ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:16 | volume:0


Answer-3: وہ خون جو چوٹ لگنے سےناخن یا کھال کے نیچے مر جاتا ہےاگر اسے خون کہا جائے تو نجس ہے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:21 | volume:0


Answer-4: وہ خون جو چوٹ لگنے سےناخن یا کھال کے نیچے مر جاتا ہےاگر اسے خون نہ کہا جائے تو پاک ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0



365

Category : خمس

Question : جو خرچے فائدہ حاصل کرنے کے لئے مثلاً حمالی وغیرہ کیے جاتے ہیں آیا ان کو منافع سے منھا کیا جاسکتا ہے تا کہ اس کا خمس دینا لازم نہ ہو؟


Answer-1: جو خرچے فائدہ حاصل کرنے کے لئے کیےجاتے ہیں ان کو منافع سے منھا کیا جاسکتا ہے اسکا خمس دینا لازم نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:329 | volume:0


Answer-2: جو خرچے فائدہ حاصل کرنے کے لئے کیےجاتے ہیں ان کو منافع سے منھا کیا جاسکتا ہے اسکا خمس دینا لازم نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:270 | volume:0


Answer-3: جو خرچے فائدہ حاصل کرنے کے لئے کیےجاتے ہیں ان کو منافع سے منھا کیا جاسکتا ہے اسکا خمس دینا لازم نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:305 | volume:0


Answer-4: جو خرچے فائدہ حاصل کرنے کے لئے کیےجاتے ہیں ان کو منافع سے منھا کیا جاسکتا ہے اسکا خمس دینا لازم نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:315 | volume:0



366

Category : طہارت

Question : زخم کے مندمل ہوتے وقت اس کے اطراف میں زردی سی بن جاتی ہے کیا یہ بھی نجس ہے؟


Answer-1: زخم کے مندمل ہوتے وقت اس کے اطراف میں زردی سی بن جاتی ہے اگر معلوم نہ ہو کہ خون سے مخلوط ہوگئی ہے تو پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:23 | volume:0


Answer-2: زخم کے مندمل ہوتے وقت اس کے اطراف میں زردی سی بن جاتی ہے اگر معلوم نہ ہو کہ خون سے مخلوط ہوگئی ہے تو پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:17 | volume:0


Answer-3: زخم کے مندمل ہوتے وقت اس کے اطراف میں زردی سی بن جاتی ہے اگر معلوم نہ ہو کہ خون سے مخلوط ہوگئی ہے تو پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0


Answer-4: زخم کے مندمل ہوتے وقت اس کے اطراف میں زردی سی بن جاتی ہے اگر معلوم نہ ہو کہ خون سے مخلوط ہوگئی ہے تو پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:21 | volume:0



367

Category : نماز

Question : کیا رکوع کے بعد سیدھا کھڑا ہونا ضروری ہے؟


Answer-1: رکوع کے بعد سیدھا کھڑا ہونا ضروری ہے اگر عمداً کھڑے ہوئے بغیر سجدے میں چلے گئے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:200 | volume:0


Answer-2: رکوع کے بعد سیدھا کھڑا ہونا ضروری ہے اگر عمداً کھڑے ہوئے بغیر سجدے میں چلے گئے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:162 | volume:0


Answer-3: رکوع کے بعد سیدھا کھڑا ہونا ضروری ہے اگر عمداً کھڑے ہوئے بغیر سجدے میں چلے گئے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:178 | volume:0


Answer-4: رکوع کے بعد سیدھا کھڑا ہونا ضروری ہے اگر عمداً کھڑے ہوئے بغیر سجدے میں چلے گئے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:186 | volume:0



368

Category : نماز

Question : کیا رکوع کے بعد کھڑے ہوکر کچھ رکنا ضروری ہے؟


Answer-1: رکوع کے بعد سیدھا کھڑاہوکر احتیاط کی بنا پر ٹہرنا واجب ہے اگر عمداً نہ ٹہرے تو احتیاط واجب کی بنا پر نما باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:200 | volume:0


Answer-2: رکوع کے بعد سیدھا کھڑے ہوکرٹہرنا واجب ہے اگر عمداً نہ ٹھرے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:162 | volume:0


Answer-3: رکوع کے بعد سیدھا کھڑے ہوکرٹہرنا واجب ہے اگر عمداً نہ ٹھرے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:178 | volume:0


Answer-4: رکوع کے بعد سیدھا کھڑے ہوکرٹہرنا واجب ہے اگر عمداً نہ ٹھرے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:186 | volume:0



369

Category : خمس

Question : اگر خمس دینے سے پہلے منافع سے گھریلو استعمال کیلئے کوئی چیز خریدے پھر اسکی ضرورت نہ رہے تو کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر منافع سے گھر یلو استعمال کیلئے کوئی چیز خریدے اگر اسکی ضرورت منافع حاصل ہونے والے سال کے بعد ختم ہوجائے تو اسکا خمس دینا ضروری نہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:330 | volume:0


Answer-2: اگر منافع سے گھر یلو استعمال کیلئے کوئی چیز خریدے پھر اسکی ضرورت نہ رہے تو اسکا خمس احتیاط واجب کی بنا پر ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:329 | volume:1


Answer-3: اگر خمس دینے سے پہلے منافع سے گھریلو استعمال کیلئے کوئی چیز خریدے پھر اسکی ضرورت نہ رہے تو احتیاط مستحب ہے اسکا خمس دینا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:306 | volume:0


Answer-4: اگر خمس دینے سے پہلے منافع سے گھریلو استعمال کیلئے کوئی چیز خریدے جب بھی اسکی ضرورت برطرف ہوجائے تو اسکا خمس واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:316 | volume:0



370

Category : خمس

Question : جن عورتوں نے زیورات استعمال کیے پھر مثلاً بھڑھاپے کی وجہ سے انکی زینت کا زمانہ گزرگیا تو آیا ان زیورات کا خمس دینا ضروری ہے؟


Answer-1: جن زیورات کو استعمال کیے پھر زینت کا زمانہ گزر جائے تو اسکا خمس دینا واجب نہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:330 | volume:0


Answer-2: جن زیورات کو استعمال کیے پھر سال کے درمیان انکی زینت کا زمانہ گزرجائے تو اسکا خمس دینا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:271 | volume:0


Answer-3: جن زیورات کو استعمال کیے پھر زینت کا زمانہ گزر جائے تو اسکا خمس دینا واجب نہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:306 | volume:0


Answer-4: جن زیورات کو استعمال کیے پھر زینت کا زمانہ گزر جائے تو اسکا خمس دینا واجب نہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:316 | volume:0



371

Category : نماز

Question : کیا نما ز میں سورۃ توحید کی قرائت ضروری ہے؟


Answer-1: نماز میں سورۃ توحید کی قرائت واجب نہیں ہے البتہ مکروہ ہے کہ انسان ایک دن کی نما زمیں سورۃ توحید کی قرائت نہ کرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:197 | volume:0


Answer-2: نماز میں سورۃ توحید کی قرائت واجب نہیں ہے البتہ مکروہ ہے کہ انسان ایک دن کی نما زمیں سورۃ توحید کی قرائت نہ کرے

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:160 | volume:0


Answer-3: نماز میں سورۃ توحید کی قرائت واجب نہیں ہے البتہ مکروہ ہے کہ انسان ایک دن کی نما زمیں سورۃ توحید کی قرائت نہ کرے

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:176 | volume:0


Answer-4: نماز میں سورۃ توحید کی قرائت واجب نہیں ہے البتہ مکروہ ہے کہ انسان ایک دن کی نما زمیں سورۃ توحید کی قرائت نہ کرے

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:183 | volume:0



372

Category : نماز

Question : کیا نما ز میں کسی خاص سورۃ کا پڑھنا مستحب ہے ؟


Answer-1: نماز کی پہلی رکعت میں سورۃ القدر اور دوسری رکعت میں سورۃتوحید کاپڑھنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:197 | volume:0


Answer-2: نماز کی پہلی رکعت میں سورۃ القدر اور دوسری رکعت میں سورۃتوحید کاپڑھنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:160 | volume:0


Answer-3: نماز کی پہلی رکعت میں سورۃ القدر اور دوسری رکعت میں سورۃتوحید کاپڑھنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:176 | volume:0


Answer-4: نماز کی پہلی رکعت میں سورۃ القدر اور دوسری رکعت میں سورۃتوحید کاپڑھنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:183 | volume:0



373

Category : نماز

Question : کیا ایک ہی سورۃ دونوں رکعت میں قرائت کی جاسکتی ہے؟


Answer-1: سورۃ تو حید کے علاوہ کسی بھی سورۃ کا دونوں رکعت میں قرائت کرنا مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:198 | volume:0


Answer-2: سورۃ تو حید کے علاوہ کسی بھی سورۃ کا دونوں رکعت میں قرائت کرنا مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:160 | volume:0


Answer-3: سورۃ تو حید کے علاوہ کسی بھی سورۃ کا دونوں رکعت میں قرائت کرنا مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:176 | volume:0


Answer-4: سورۃ تو حید کے علاوہ کسی بھی سورۃ کا دونوں رکعت میں قرائت کرنا مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:183 | volume:0



374

Category : نماز

Question : کیا سورۃ توحید کو ایک ہی سانس میں پڑھنا صحیح ہے؟


Answer-1: سورۃ توحید کو ایک ہی سانس میں پڑھنا مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:198 | volume:0


Answer-2: سورۃ توحید کو ایک ہی سانس میں پڑھنا مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:160 | volume:0


Answer-3: سورۃ توحید کو ایک ہی سانس میں پڑھنا مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:176 | volume:0


Answer-4: سورۃ توحید کو ایک ہی سانس میں پڑھنا مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:183 | volume:0



375

Category : طہارت

Question : کیا کتے اور سور کا بال ،ناخن،ھڈی نجس ہے؟


Answer-1: کتے اور سور کا بال ،ناخن،ھڈی بھی نجس ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:24 | volume:0


Answer-2: کتے اور سور کا بال ،ناخن،ھڈی بھی نجس ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:17 | volume:0


Answer-3: کتے اور سور کا بال ،ناخن،ھڈی بھی نجس ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0


Answer-4: کتے اور سور کا بال ،ناخن،ھڈی بھی نجس ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:21 | volume:0



376

Category : نماز

Question : کیا حالت ِ رکوع میں ہاتھوں کا گھٹنے پر رکھنا واجب ہے؟


Answer-1: اگر رکوع کی مقدار کے مطابق جھک گیا لیکن انگلیوں کو گھٹنے پر نہیں رکھا تو کوئی حرج نہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:198 | volume:0


Answer-2: اگر رکوع کی مقدار کے مطابق جھک گیا لیکن انگلیوں کو گھٹنے پر نہیں رکھا تو کوئی حرج نہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:160 | volume:0


Answer-3: اگر رکوع کی مقدار کے مطابق جھک گیا لیکن انگلیوں کو گھٹنے پر نہیں رکھا تو کوئی حرج نہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:176 | volume:0


Answer-4: اگر رکوع کی مقدار کے مطابق جھک گیا لیکن انگلیوں کو گھٹنے پر نہیں رکھا تو کوئی حرج نہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:184 | volume:0



377

Category : نماز

Question : رکوع میں کتنا جھکنا واجب ہے؟


Answer-1: رکوع میں ا س حد تک جھکنا واجب ہے کہ انگلیوں کے سرے گھٹنے تک پہنچ جائیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:198 | volume:0


Answer-2: رکوع میں ا س حد تک جھکنا واجب ہے کہ ہاتھ گھٹنوں تک پہنچ جائیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:160 | volume:0


Answer-3: رکوع میں ا س حد تک جھکنا واجب ہے کہ ہاتھ گھٹنوں تک پہنچ جائیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:176 | volume:0


Answer-4: رکوع میں ا س حد تک جھکنا واجب ہے کہ انگلیوں کے سرے گھٹنے تک پہنچ جائیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:184 | volume:0



378

Category : نماز

Question : اگر نماز میں کوئی چیز اٹھانے یا کیڑے وغیرہ کو ہٹانے کے لئے رکوع کی حد تک جھک جائیں تو کیا رکوع شمار ہوگا؟


Answer-1: اگر نماز میں کچھ اٹھانے یا کیڑے وغیرہ کو ہٹانے کے لئے رکوع کی حد تک جھک جائیں تو رکوع شمار نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:198 | volume:0


Answer-2: اگر نماز میں کچھ اٹھانے یا کیڑے وغیرہ کو ہٹانے کے لئے رکوع کی حد تک جھک جائیں تو رکوع شمار نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:160 | volume:0


Answer-3: اگر نماز میں کچھ اٹھانے یا کیڑے وغیرہ کو ہٹانے کے لئے رکوع کی حد تک جھک جائیں تو رکوع شمار نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:176 | volume:0


Answer-4: اگر نماز میں کچھ اٹھانے یا کیڑے وغیرہ کو ہٹانے کے لئے رکوع کی حد تک جھک جائیں تو رکوع شمار نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:184 | volume:0



379

Category : نماز

Question : اگر کسی کے ہاتھ یا پاؤں عام لوگوں سے زیادہ چھوٹے یا بڑے ہوں تو اسے رکوع میں کتنا جھکنا واجب ہے؟


Answer-1: اگر کسی کے ہاتھ یا پاؤں عام لوگوں سے زیادہ چھوٹے یا بڑے ہوں تو اسے عام لوگوں کے برابر جھکنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:198 | volume:0


Answer-2: اگر کسی کے ہاتھ یا پاؤں عام لوگوں سے زیادہ چھوٹے یا بڑے ہوں تو اسے عام لوگوں کے برابر جھکنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:160 | volume:0


Answer-3: اگر کسی کے ہاتھ یا پاؤں عام لوگوں سے زیادہ چھوٹے یا بڑے ہوں تو اسے عام لوگوں کے برابر جھکنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:176 | volume:0


Answer-4: اگر کسی کے ہاتھ یا پاؤں عام لوگوں سے زیادہ چھوٹے یا بڑے ہوں تو اسے عام لوگوں کے برابر جھکنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:184 | volume:0



380

Category : کافر

Question : کیا غالی نجس ہے؟


Answer-1: غالی نجس ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:24 | volume:0


Answer-2: اگر اس کا غلو توحید یا نبوت کے انکار کا باعث بن رہا ہو تو غالی نجس ہےوگر نہ نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:106 | volume:1


Answer-3: غالی نجس ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین مع فتاوی وحید الخراسانی | Page:123 | volume:0


Answer-4: غالی نجس ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین مع فتاوی وحید الخراسانی | Page:123 | volume:1



381

Category : خمس

Question : اگر کوئی بھیڑ وغیرہ خریدے اور وہ موٹا ہوجائے تو خمس واجب ہوگا؟


Answer-1: اگر بھیڑ وغیرہ کو گوشت سے استفادہ کیلئے خریدے اور وہ موٹا ہوجائے تو اضافی مقدار کا خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:328 | volume:0


Answer-2: اگر بھیڑ وغیرہ خریدے اور وہ موٹا ہوجائے تو اگر اسکو گھر میں رکھنے کا مقصد اسکے موٹاپے سے فائدہ حاصل کرنا ہو تو اضافی مقدار کا خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:270 | volume:0


Answer-3: اگر بھیڑ وغیرہ گوشت سے استفادہ کیلئے خریدے اور وہ موٹا ہوجائے تو اضافی مقدار کا خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:305 | volume:0


Answer-4: اگر بھیڑ وغیرہ خمس ادا کیے ہو ئے پیسے سے خریدے اور وہ موٹا ہوجائے تو اضافی مقدار کاخمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:348 | volume:2



382

Category : نماز

Question : رکوع میں واجب ذکر کے وقت کیا بدن کا ساکن ہونا ضروری ہے؟


Answer-1: رکوع میں واجب ذکر کے وقت بدن کا ساکن ہونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:199 | volume:0


Answer-2: رکوع میں واجب ذکر کے وقت بدن کا ساکن ہونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:161 | volume:0


Answer-3: رکوع میں واجب ذکر کے وقت بدن کا ساکن ہونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:177 | volume:0


Answer-4: رکوع میں واجب ذکر کے وقت بدن کا ساکن ہونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:184 | volume:0



383

Category : نماز

Question : جو افراد بیٹھ کر نماز پڑھتے ہیں ان کے لئے رکوع میں کتنا جھکنا واجب ہے؟


Answer-1: جو افراد بیٹھ کر نماز پڑھتے ہیں ضروری ہے کہ رکوع میں اتنا جھکیں کہ ان کا چہرہ گھٹنے کے سامنے ہو۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:198 | volume:0


Answer-2: جو افراد بیٹھ کر نماز پڑھتے ہیں ضروری ہے کہ رکوع میں اتنا جھکیں کہ ان کا چہرہ گھٹنے کے سامنے ہو۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:161 | volume:0


Answer-3: جو افراد بیٹھ کر نماز پڑھتے ہیں ضروری ہے کہ رکوع میں اتنا جھکیں کہ ان کا چہرہ گھٹنے کے سامنے ہو۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:177 | volume:0


Answer-4: جو افراد بیٹھ کر نماز پڑھتے ہیں ضروری ہے کہ رکوع میں اتنا جھکیں کہ ان کا چہرہ گھٹنے کے سامنے ہو۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:184 | volume:0



384

Category : خمس

Question : اگر بید یا چنار جیسے درخت لگائے تو خمس کے حوالے سے کیا حکم ہے ؟


Answer-1: اگر بید یا چنار جیسے درخت لگائے تو ہر سال انکے بڑھنے کا خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:329 | volume:0


Answer-2: اگر بید یا چنار جیسے درخت لگائے تو جو سال انکے بیچنے کا ہے درخت کا خمس دینا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:270 | volume:0


Answer-3: اگر بید یا چنار جیسے درخت لگائے تو ہر سال انکے بڑھنے کا خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:305 | volume:0


Answer-4: اگر بید اور چنار جیسے درخت لگائے تو اگر درخت کاخمس دے چکا ہو تو ہر سال اسکے بڑھنے کا خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:314 | volume:0



385

Category : خمس

Question : اگر کوئی باغ خریدے تاکہ اسکی قیمت بڑھ جانے پر بیچ دے تو جن درختوں کی نشونما اور پھل ہوئے ہیں ان کاخمس دینا ہوگا؟


Answer-1: اگر باغ خمس ادا کر کے یا ایسے پیسے سے خریدے جن سے خمس تعلق نہیں رکھتا تا کہ قیمت بڑھ جانے پر بیچ دے تو درختوں کی نشونما اور پھلوں کا خمس دینا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:328 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی باغ اس لئے خریدتا ہے کہ قیمت بڑھ جانے پر بیچ دے تو درختوں کی نشونما اورپھلوں کا خمس دینا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:270 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی باغ اس لئے خریدتا ہے کہ قیمت بڑھ جانے پر بیچ دے تو درختوں کی نشونما اورپھلوں کا خمس دینا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:305 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی باغ اس لئے خریدتا ہے کہ قیمت بڑھ جانے پر بیچ دے تو درختوں کی نشونما اورپھلوں کا خمس دینا واجب ہے۔اور احتیاط واجب کی بنا پر باغ کی اضافی قیمت کا خمس ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:314 | volume:0



386

Category : طہارت

Question : کیا جو لوگ آئمہؑ سے دشمنی کااظہار کرتے ہوں نجس ہیں؟


Answer-1: جو لوگ آئمہ علیھم السلام سے اظہار دشمنی کریں نجس ہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:24 | volume:0


Answer-2: جو لوگ آئمہ علیھم السلام میں سے کسی بھی امام سے دشمنی رکھیں وہ نجس ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:17 | volume:0


Answer-3: جو لوگ آئمہ علیھم السلام سے اظہار دشمنی کریں نجس ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0


Answer-4: جو لوگ آئمہ علیھم السلام میں سے کسی بھی امام یا حضرتِ زھراصلوۃ اللہ علیہا سے دشمنی رکھیں نجس ہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0



387

Category : خمس

Question : اگر کوئی چیز تجارت کی غرض سے خریدے اور اس کی قیمت بڑھ جائے اور مزید بڑھنے کی امید سے اسکو سال کے تمام ہونے کے بعد تک نہ بیچے پھر قیمت کم ہوجائے تو کیا حکم ہے؟


Answer-1: تجارت کی غرض سے خریدی ہوئی چیز کی قیمت بڑھ جائےاورمزید بڑھنے کی امید سے سال کے اختتام تک نہ بیچے اور قیمت کم ہوجائےتو احتیاط واجب کی بنا پر بڑھی ہوئی قیمت کاخمس ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:328 | volume:0


Answer-2: تجارت کی غرض سے خریدی ہوئی چیز کی قیمت بڑھ جائے مزید بڑھنے کی امید سے سال کے اختتام تک نہ بیچے اور قیمت کم ہوجائے تو احتیاط واجب کی بنا پر بڑھی ہوئی قیمت کاخمس ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:269 | volume:0


Answer-3: تجارت کی غرض سے خریدی ہوئی چیز کی قیمت بڑھ جائے مزید بڑھنے کی امید سے سال گزر جانے تک اسکو نہ بیچے پھر قیمت کم ہوجائے تو جو مقدار بڑھی تھی اسکا خمس دینا واجب نہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:304 | volume:0


Answer-4: تجارت کی غرض سے خریدی ہوئی چیز کی قیمت بڑھ جائے مزید بڑھنے کی امید سے سال کے آخر تک نہ بیچے پھر قیمت کم ہوجائے تو اگر تاجروں کے درمیان متعارف زمانے تک اس چیز کو روک کر رکھا ہو تو بڑھی ہوئی قیمت کا خمس واجب نہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:314 | volume:0



388

Category : خمس

Question : اگر مال تجارت کے علاوہ کوئی مال خریدا اور اسکا خمس بھی ادا کردیا ہو تو اگر اس کی قیمت بڑھ جائے پھر اسکو بیچ دے تو کیا حکم ہوگا؟


Answer-1: اگر مال تجارت کے علاوہ کوئی مال خریدا اور اسکا خمس بھی ادا کردیا چنانچہ اسکی قیمت بڑھ جائے اور اسکو بیچ دے تو اضافی قیمت میں سے جو سال بھر کے اخراجات کےبعد بچ جائے تو اسکا خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:328 | volume:0


Answer-2: اگر مال تجارت کے علاوہ کوئی مال خریدا پھر اسکا خمس بھی ادا کردیا چنانچہ اسکی قیمت بڑھ جائے اور اسکو بیچ دی تو اضافی قیمت کا خمس واجب نہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:270 | volume:0


Answer-3: اگر مال تجارت کے علاوہ کوئی مال خریدا پھر اسکا خمس بھی ادا کردیا چنانچہ اسکی قیمت بڑھ جائے پھر بیچ دے تو اضافی قیمت کا خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:305 | volume:0


Answer-4: اگر مال تجارت کے علاوہ کوئی مال خریدا چنانچہ اسکی قیمت بڑھ جائے پھر اسکو بیچ دے تو اگر وہ سال کے اخراجات میں شمار نہ ہو تو اضافی قیمت کا خمس واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:314 | volume:0



389

Category : خمس

Question : اگر سال کےشروع میں نفع نہ ہو اور سرمایہ سے خرچ کرے پھر سال مکمل ہونے سے پہلے کوئی نفع ہوجائے تو کیا جو سرمایہ سے خرچ کیا تھا اس کو نفع سے منھا کرسکتے ہیں؟


Answer-1: اگر سال کےشروع میں نفع نہ ہو اور سرمایہ سے خرچ کرے پھر سال مکمل ہونے سے پہلے کوئی نفع ہوجائے تو نفع سے خرچ شدہ سرمایہ کو منھا کرسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:330 | volume:0


Answer-2: اگر سال کےشروع میں نفع نہ ہو اور سرمایہ سے خرچ کرے پھر سال مکمل ہونے سے پہلے کوئی نفع ہوجائے تو نفع سے خرچ شدہ سرمایہ کو منھا نہیں کرسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:307 | volume:0


Answer-3: اگر سال کےشروع میں نفع نہ ہو اور سرمایہ سے خرچ کرے پھر سال مکمل ہونے سے پہلے کوئی نفع ہوجائے تو نفع سے خرچ شدہ سرمایہ کو منھا کرسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:271 | volume:0


Answer-4: اگر سال کےشروع میں نفع نہ ہو اور سرمایہ سے خرچ کرے پھر سال مکمل ہونے سے پہلے کوئی نفع ہوجائے تو نفع سے خرچ شدہ سرمایہ کو منھانہیں کرسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:316 | volume:0



390

Category : خمس

Question : اگر ایک سال کوئی نفع نہ ہو تو کیا اس سال کے مخارج آنے والے سال کے منفعت سے منھا کرسکتے ہیں؟


Answer-1: اگر سال میں کوئی نفع نہ ہو تو اس سال کے مخارج آنے والے سال کے منفعت سے منھا نہیں کرسکتا ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:330 | volume:0


Answer-2: اگر سال میں کوئی نفع نہ ہو تو اس سال کے مخارج آنے والے سال کے منفعت سے منھا نہیں کرسکتا ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:271 | volume:0


Answer-3: اگر سال میں کوئی نفع نہ ہو تو اس سال کے مخارج آنے والے سال کے منفعت سے منھا نہیں کرسکتا ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:307 | volume:0


Answer-4: اگر سال میں کوئی نفع نہ ہو تو اس سال کے مخارج آنے والے سال کے منفعت سے منھا نہیں کرسکتا ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:316 | volume:0



391

Category : طہارت

Question : کیا اہل کتاب نجس ہیں؟


Answer-1: اہل کتاب نجس نہیں ہیں ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:24 | volume:0


Answer-2: اہل کتاب نجس ہیں

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:17 | volume:0


Answer-3: اہل کتاب بنا پراحتیاط لازم نجس ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:20 | volume:0


Answer-4: اہل کتاب نجس نہیں ہیں لیکن ان سے اجتناب کرنا احوط ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0



392

Category : نماز

Question : کیا ذکر کے ختم ہونے سے پہلے رکوع سے اٹھنے سے نماز باطل ہوجاتی ہے؟


Answer-1: اگر رکوع کے واجب ذکر کو مکمل پڑھنے سے پہلے عمداً رکوع سے اٹھ جائے تو نماز باطل ہوجاتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:199 | volume:0


Answer-2: اگر رکوع کے واجب ذکر کو مکمل پڑھنے سے پہلے عمداً رکوع سے اٹھ جائے تو نمازباطل ہوجاتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:161 | volume:0


Answer-3: اگر رکوع کے واجب ذکر کو مکمل پڑھنے سے پہلے عمداً رکوع سے اٹھ جائے تو نمازباطل ہوجاتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:177 | volume:0


Answer-4: اگر رکوع کے واجب ذکر کو مکمل پڑھنے سے پہلے عمداً رکوع سے اٹھ جائے تو نمازباطل ہوجاتی ہےمگر یہ کہ جاہل قاصر ہو۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:185 | volume:0



393

Category : نماز

Question : اگر رکوع میں مکمل جھکنے سے پہلے رکوع کا واجب ذکر پڑھ لے تو کیا نماز صحیح ہے؟


Answer-1: اگر رکوع میں مکمل جھکنے اور بدن کے ساکن ہونے سے پہلے عمداً رکوع کا ذکر پڑھ لے تو اس کی نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:199 | volume:0


Answer-2: اگر رکوع میں مکمل جھکنے اور بدن کے ساکن ہونے سے پہلے عمداً رکوع کا ذکر پڑھ لے تو اس کی نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:161 | volume:0


Answer-3: اگر رکوع میں مکمل جھکنے اور بدن کے ساکن ہونے سے پہلے عمداً رکوع کا ذکر پڑھ لے تو اس کی نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:177 | volume:0


Answer-4: اگر رکوع میں مکمل جھکنے اور بدن کے ساکن ہونے سے پہلے عمداً رکوع کا ذکر پڑھ لے تو اس کی نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:185 | volume:0



394

Category : خمس

Question : اگر سال کے شروع میں اپنے خرچے کیلئے قرض لے اور سال تمام ہونے سے پہلے کوئی نفع حاصل ہو تو آیا قرض کی مقدار منفعت کی رقم سے منہا کرسکتے ہیں؟


Answer-1: اگر سال کے دوران خرچے کیلئے قرض لے اور سال تمام ہونے سے پہلے کوئی نفع حاصل ہو تو قرض کی مقدار رقم کو منفعت سے منہا کرسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:331 | volume:0


Answer-2: اگر سال کے دوران خرچے کیلئے قرض لے اور سال تمام ہونے سے پہلے کوئی نفع حاصل ہو تو قرض کی مقدار رقم کو منفعت سے منہا کرسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:272 | volume:0


Answer-3: اگر سال کے دوران خرچے کیلئے قرض لے اور سال تمام ہونے سے پہلے کوئی نفع حاصل ہو تو قرض کی مقدار رقم کو منفعت سے منہا نہیں کرسکتا ہے۔مگر یہ کہ قرض نفع حاصل کرنے کے بعد لیا ہو تو منہا کر سکتے ہیں

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:307 | volume:0


Answer-4: اگر سال کے اول میں اپنے خرچے کیلئے قرض لے اور سال تمام ہونے سے پہلے کوئی نفع ہو تو قرض کی مقدار رقم کو منفعت سے منہا نہیں کرسکتا مگر یہ کہ قرض منفعت حاصل ہونے کے بعد لیا ہو تو منہا کرسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:316 | volume:0



395

Category : نماز

Question : اگر کوئی شخص حالت رکوع میں اتنا نہ ٹہر سکتا ہو کہ ذکر رکوع انجام دے تو اس کی نماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر کوئی رکوع کی حالت میں حتیٰ ایک سبحان اللہ کے لئے بھی نہ ٹہر سکتا ہو تو اس کے لئے ذکر پڑھنا واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:199 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی حالت رکوع میں نہ ٹہرسکتا ہو تو ضروری ہے کہ رکوع سے اٹھنے سے پہلے ذکر کو ختم کرے ورنہ اٹھتے ہوئےرجاء کی نیت سے پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:161 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی ذکر رکوع کی مقدار میں رکوع میں نہ ٹہر سکتا ہو تو احتیاط واجب ہے کہ اٹھتے ہوئے اسے انجام دے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:177 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی حالت رکوع میں نہ ٹہرسکتا ہو تو مجبوری کی حالت میں رکوع کی حالت میں ایک سبحان اللہ بھی کافی ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:185 | volume:0



396

Category : نماز

Question : اگر کوئی حالت رکوع میں اپنے بدن کو ساکن نہ رکھ سکتا ہو تو اس کی نما زکا کیا حکم ہے ؟


Answer-1: اگر کوئی بیماری وغیرہ کی وجہ سے رکوع میں بدن کو ساکن نہ رکھ سکتا ہو تو اس کی نما زصحیح ہے لیکن رکوع سے اٹھنے سے پہلے ذکر کو قربت مطلق کی نیت سے ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:199 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی بیماری وغیرہ کی وجہ سے رکوع میں بدن کو ساکن نہ رکھ سکتا ہو تو اس کی نماز صحیح ہے لیکن رکوع سے اٹھنے سے پہلے ذکر واجب انجام دے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:161 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی بیماری وغیرہ کی وجہ سے رکوع میں بدن کو ساکن نہ رکھ سکتا ہو تو اس کی نماز صحیح ہے لیکن رکوع سے اٹھنے سے پہلے ذکر واجب انجام دے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:178 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی بیماری وغیرہ کی وجہ سے رکوع میں بدن کو ساکن نہ رکھ سکتا ہو تو اس کی نماز صحیح ہے لیکن رکوع سے اٹھنے سے پہلے ذکر واجب انجام دے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:185 | volume:0



397

Category : خمس

Question : اگر گھر کے خرچے کیلئے قرض لے تو آیا آیندہ سال کے نفع سے خمس دیے بغیر قرض ادا کرسکتا ہے؟


Answer-1: اگر گھر کے خرچے کے لئے قرض لے تو آیندہ سال کے نفع سے خمس دئیے بغیر قرض ادا کرسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:331 | volume:0


Answer-2: اگر گھر کے خرچے کے لئے قرض لے تو آیندہ سال کے نفع سے خمس دئیے بغیر قرض ادا کرسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:272 | volume:0


Answer-3: اگر گھر کے خرچے کے لئے قرض لے تو آیندہ سال کے نفع سے خمس دئیے بغیر قرض ادا کرسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:307 | volume:0


Answer-4: اگر گھر کے خرچے کے لئے قرض لے تو آیندہ سال کے نفع سے خمس دئیے بغیر قرض ادا کرسکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:316 | volume:0



398

Category : خمس

Question : اگر سرمایہ میں سے کچھ حصہ ضایع ہوجائے تو کیا سال کے نفع سے منہا کر سکتے ہیں ؟


Answer-1: اگر سرمایہ میں سے کچھ حصہ تجارت وغیرہ میں ضایع ہوجائے تو اسی سال کے نفع سے منہا کرسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:330 | volume:0


Answer-2: اگر سرمایہ کا کچھ حصہ ضایع ہوجائے اور باقی ماندہ سے نفع حاصل ہو اور وہ سال کے خرچے سے بچ جائے تو اس سے تلف شدہ حصہ منہا کرسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:272 | volume:0


Answer-3: اگر سرمایہ کا کچھ حصہ تجارت وغیرہ میں ضایع ہوجائے تو اس مقدار کو تلف سے پہلے والے منافع سے منہا کرسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:307 | volume:0


Answer-4: اگر سرمایہ کا کچھ حصہ تجارت وغیرہ میں ضایع ہوجائے تو اس مقدار کو تلف سے پہلے والے منافع سے منہا کرسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:316 | volume:0



399

Category : 6

Question : کیا کافر کا تمام بدن حتیٰ بال


Answer-1: آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی

Scholar:1 | Book:کافر کا تمام بدن حتیٰ بال،ناخن وغیرہ نجس ہیں۔ | Page:0 | volume:0


Answer-2: آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی

Scholar:2 | Book:کافر کا تمام بدن حتیٰ بال، ناخن وغیرہ نجس ہیں۔ | Page:0 | volume:0


Answer-3: آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی

Scholar:3 | Book:کافر کا تمام بدن حتیٰ بال، ناخن وغیرہ نجس ہیں۔ | Page:0 | volume:0


Answer-4: آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی

Scholar:4 | Book:کافر کا تمام بدن حتیٰ بال ، ناخن وغیرہ نجس ہیں۔ | Page:0 | volume:0



400

Category : نماز

Question : کیا رکوع سے اٹھنے کے بعد سجدے میں جانے سے پہلے حالت سکون ضروری ہے؟


Answer-1: رکوع کے بعد کھڑے ہوکر احتیاط واجب ہے کہ بدن ساکن ہو اگر بدن کے ساکن ہونے سے پہلے سجدے میں چلاجائے تو احتیاط واجب کی بنا پر نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:200 | volume:0


Answer-2: رکوع کے بعد کھڑے ہوکر واجب ہے بدن ساکن ہو اگر بدن کے ساکن ہونے سےپہلے سجدے میں چلا جائے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:162 | volume:0


Answer-3: رکوع کے بعد کھڑے ہوکر واجب ہے بدن ساکن ہو اگر بدن کے ساکن ہونے سےپہلے سجدے میں چلا جائے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:178 | volume:0


Answer-4: رکوع کے بعد کھڑے ہوکر واجب ہے بدن ساکن ہو اگر بدن کے ساکن ہونے سےپہلے سجدے میں چلا جائے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:186 | volume:0