Question Answers

Compiled by Khatim-ul-Ambia University (Hausary Madressa) Karachi


501

Category : خمس

Question : اگر خمس دوسرے شہر لے جائے اور تلف ہوجائے تو ضامن ہوگا؟


Answer-1: اگر دوسرے شہر خمس لے جائے اور تلف ہوجائے تو ضامن اور ذمہ دار ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:341 | volume:0


Answer-2: اگر شہر میں مستحق ہو پھر بھی دوسرے شہر لے جائے اور تلف ہوجائے تو ضامن اور ذمہ دار ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:280 | volume:0


Answer-3: اگر شہر میں مستحق ہو پھر بھی دوسرے شہر لے جائے اور تلف ہوجائے تو ضامن اور ذمہ دار ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:317 | volume:0


Answer-4: اگر شہر میں مستحق ہو پھر بھی دوسرے شہر لے جائے اور تلف ہوجائے تو ضامن اور ذمہ دار ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:326 | volume:0



502

Category : خمس

Question : اگر شہر میں مستحق خمس نہ ہو اور خمس دوسرے شہر لے جائے اور تلف ہوجائے تو ضامن ہوگا؟


Answer-1: اگر شہر میں مستحق خمس نہ ہو اور خمس دوسرے شہر لے جائے اور تلف ہوجائے تو ضامن ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:341 | volume:0


Answer-2: اگر شہر میں مستحق خمس نہ ہو اور خمس دوسرے شہر لے جائے اور کوتاہی نہ کرے اور تلف ہوجائے تو وہ اسکی کوئی ذمہ داری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:280 | volume:0


Answer-3: اگر شہر میں مستحق خمس نہ ہو اور خمس دوسرے شہر لے جائے اور کوتاہی نہ کرے اور تلف ہوجائے تو وہ اسکی کوئی ذمہ داری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:316 | volume:0


Answer-4: اگر شہر میں مستحق خمس نہ ہو اور خمس دوسرے شہر لے جائے اور تلف ہوجائے تو اگر کوتاہی نہ کی ہو تو ضامن نہیں ہوگا ورنہ ضامن ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:326 | volume:0



503

Category : طہارت

Question : کیا ان جانوروں کا پسینہ جو انسانی فضلہ کھانے کے عادی ہوچکے ہوں نجس ہے؟


Answer-1: اگر اونٹ جسے انسانی فضلہ کھانے کی عادت ہو جائے تو اس کا پسینہ نجس جبکہ دیگر جانوروں کا پسینہ بنا پر احتیاط واجب نجس ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:25 | volume:0


Answer-2: اگر اونٹ جسے انسانی فضلہ کھانے کی عادت ہو جائے تو اس کا پسینہ نجس ہے لیکن دیگر جانوروں کے پسینے سے اجتناب کرنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0


Answer-3: اونٹ یا کوئی بھی جانور جسے انسانی فضلہ کھانے کی عادت ہوجائے اس کا پسینہ پاک ہے لیکن اس کےپسینے کے ساتھ نماز پڑھنا جائز نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:21 | volume:0


Answer-4: اگر اونٹ جسے انسانی فضلہ کھانے کی عادت ہوچکی ہوبنا احتیاط واجب اس کا پسینہ نجس ہے جبکہ دیگر جانوروں کا پسینہ پاک ہے لیکن پسینے کے ساتھ نماز پڑھنا جائز نہیں ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:23 | volume:0



504

Category : خمس

Question : اگر بیوی سیدانی ہو اس پر کسی کا خرچہ واجب ہے تو کیا اپنا خمس بیوی کو دے سکتا ہے؟


Answer-1: اگر بیوی کے اوپر دوسروں کا خرچہ واجب ہو اور وہ انکا خرچہ نہ دے سکتی ہو تو انسان اپنا خمس دے سکتا ہے تاکہ اس مصرف میں استعمال کرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:340 | volume:0


Answer-2: اگر بیوی کے دوسرے خرچے ہوں جنکی اسے ضرورت ہو اور وہ شوہر پر واجب نہ ہو ں تو ان خرچوں کیلئے اپنا خمس بیوی کو دے سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:280 | volume:0


Answer-3: اگر بیوی کے اوپر دوسروں کا خرچہ واجب ہو اور وہ انکا خرچہ نہ دے سکتی ہو تو انسان اپنا خمس دے سکتا ہے تاکہ اس مصرف میں استعمال کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:316 | volume:0


Answer-4: اگر بیوی کے اوپر دوسروں کا خرچہ واجب ہو اور وہ انکا خرچہ نہ دے سکتی ہو تو انسان اپنا خمس دے سکتا ہے تاکہ اس مصرف میں استعمال کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:325 | volume:0



505

Category : خمس

Question : آیا خمس کو دوسرے شہر میں لے جاسکتے ہیں؟


Answer-1: اگر خمس کی ادائیگی میں سہل انگاری شمار نہ ہو تو خمس دوسرے شہر لے جاسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:341 | volume:0


Answer-2: خمس دوسرے شہر مستحق خمس کو دینے کیلئے لے جاسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:280 | volume:0


Answer-3: خمس دوسرے شہر مستحق خمس کو دینے کیلئے لے جاسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:317 | volume:0


Answer-4: اگر خمس کی ادائیگی میں سہل انگاری شمار نہ ہو تو خمس دوسرے شہر لے جاسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:326 | volume:0



506

Category : خمس

Question : اگر شہر میں سید مستحق خمس نہ ہو تو خمس دوسرے شہر لے جانے کیلئے اسکا خرچہ خمس سے لے سکتا ہے؟


Answer-1: اگر شہر میں سید مستحق خمس نہ ہو تو خمس دوسرے شہر لے جانے کیلئے اسکا خرچہ خمس سے نہیں لے سکتے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:341 | volume:0


Answer-2: اگر شہر میں سید مستحق خمس نہ ہو اور اطمینان ہو کہ بعد میں بھی مستحق خمس نہیں ملے گا تو دوسرے شہر لے جانے کیلئے خمس سے خرچہ لے سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:326 | volume:0


Answer-3: اگر شہر میں مستحق خمس نہ ہواور احتمال بھی نہ ہو کہ بعد میں مستحق خمس مل جائے گا تو دوسرے شہر میں لے جانے کیلئے احتیاط واجب کی بناپر خمس سے خرچہ نہیں لے سکتا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:280 | volume:0


Answer-4: اگر شہر میں سیدمستحق خمس نہ ہو اور اطمینان ہو کہ بعد میں بھی مستحق خمس نہیں ملے گا تو دوسرے شہر لے جانے کیلئے خمس سے خرچہ لے سکتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:316 | volume:0



507

Category : طہارت

Question : اگر کوئی بھروسے مند شخص کہے فلاں چیز نجس ہے تو کیا اس چیز سے اجتناب کرنا ضروری ہے؟


Answer-1: اگر کوئی بھروسے مند شخص کہے فلاں چیز نجس ہے اور اس کے کہنے پر اطمینان آجائے تو احتیاط واجب کی بنا پر اس چیز سے اجتناب کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:26 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی بھروسے مند شخص کسی چیز کے نجس ہونے کہ بارے میں بتائے اور اس کے بر خلاف کوئی گمان نہ ہو تو اس چیز سے اجتناب کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:24 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی بھروسے مند شخص کہے فلاں چیز نجس ہے تو اس چیز سے اجتناب کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0


Answer-4: اگر عادل شخص کسی چیز کے بارے میں بتائے کہ نجس ہے تو اس چیز سے بنا بر احتیاط واجب اجتناب کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0



508

Category : نماز

Question : اگر کوئی شخص سجدے میں بالکل نہ جھک سکتا ہو اس کے سجدے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: جو شخص سجدے میں بالکل نہ جھک سکتا ہو لازم ہے سجدے کے لیے سر سے اشارہ کرے اور ذکر سجدہ پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:205 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص سجدے میں بالکل نہ جھک سکتا ہوضروری ہےسر کے اشارے سے سجدہ کرے اور ذکر سجدہ پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:190 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص سجدے میں بالکل نہ جھک سکتا ہوضروری ہے سرکے اشارے سے سجدہ کرے اور ذکر سجدہ پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:182 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص سجدے میں بالکل نہ جھک سکتا ہوضروری ہے سرکے اشارے سے سجدہ کرے اور ذکر سجدہ پڑھے اگر سجدہ گاہ اٹھا کر پیشانی اس پر رکھ سکتا ہو تو احتیاط واجب ہے کہ اسے انجام دے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:166 | volume:0



509

Category : خمس

Question : اگر حاکم شرع کی اجازت سے خمس دوسرے شہر لے جائے اور تلف ہو جائے تو ضامن ہوگا؟


Answer-1: اگر حاکم شرع کی اجازت سے خمس دوسرے شہر لے جائے اور کوتاہی کے بغیر تلف ہو جائے تو ضامن نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:341 | volume:0


Answer-2: اگر حاکم شرع کی اجازت سے خمس دوسرے شہر لے جائے اور تلف ہو جائے تو ضامن نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:326 | volume:0


Answer-3: اگر حاکم شرع کی اجازت سے خمس دوسرے شہر لے جائے اور تلف ہو جائے تو ضامن نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:335 | volume:1


Answer-4: اگر حاکم شرع کے امر سے خمس دوسرے شہر لے جائے اور تلف ہوجائے تو دوبارہ دینا لازم نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:317 | volume:0



510

Category : نماز

Question : اگر کسی کی پیشانی سجدے کے ذکر سے پہلے بے اختیار سجدہ گاہ سے اٹھ جائے تو اس سجدے کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر کسی کی پیشانی سجدے کے ذکر سے پہلےسجدہ گاہ سے اٹھ جائے اگر روکنا ممکن ہو تو لازم ہے پیشانی کو دوبارہ سجدہ گاہ پر جانے سے روکے یہ ایک سجدہ شمار ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:206 | volume:0


Answer-2: اگر کسی کی پیشانی سجدے کے ذکر سے پہلےسجدہ گاہ سے اٹھ جائے اگر روکنا ممکن ہو تو لازم ہے پیشانی کو دوبارہ سجدہ گاہ پر جانے سے روکے یہ ایک سجدہ شمار ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:190 | volume:0


Answer-3: اگر کسی کی پیشانی سجدے کے ذکر سے پہلےسجدہ گاہ سے اٹھ جائےاگر روکنا ممکن ہو تو لازم ہے پیشانی کو دوبارہ سجدہ گاہ پر جانے سے روکے یہ ایک سجدہ شمار ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:166 | volume:0


Answer-4: اگر کسی کی پیشانی سجدے کے ذکر سے پہلےسجدہ گاہ سے اٹھ جائےاگر روکنا ممکن ہو تو لازم ہے پیشانی کو دوبارہ سجدہ گاہ پر جانے سے روکے یہ ایک سجدہ شمار ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:183 | volume:0



511

Category : نماز

Question : کیا دوسرے سجدےکے بعد بغیر بیٹھے فوری قیام کرنا صحیح ہے؟


Answer-1: احتیاط واجب ہے کہ دوسرے سجدہ کے بعد فوری قیام نہ کرے بلکہ تھوڑا سا ساکن بیٹھے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:206 | volume:0


Answer-2: احتیاط مستحب ہے کہ دوسرے سجدہ کے بعد فوری قیام نہ کرے بلکہ تھوڑا سا ساکن بیٹھے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:191 | volume:0


Answer-3: احتیاط واجب ہے کہ دوسرے سجدہ کے بعد فوری قیام نہ کرے بلکہ تھوڑا سا ساکن بیٹھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:167 | volume:0


Answer-4: احتیاط مستحب ہے کہ دوسرے سجدہ کے بعد فوری قیام نہ کرے بلکہ تھوڑا سا ساکن بیٹھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:183 | volume:0



512

Category : نماز

Question : اگر کسی کی پیشانی بےاختیار سجدہ گاہ سے اٹھ جائے اور دوبارہ سجدہ گاہ پر جا لگے تو یہ ایک سجدہ شمار ہوگا یا دو سجدے؟


Answer-1: اگر کسی کی پیشانی بےاختیار سجدہ گاہ سے اٹھ جائے اور دوبارہ بغیر اختیار سجدہ گاہ پر جا لگے تو یہ ایک سجدہ شمار ہوگا ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:206 | volume:0


Answer-2: اگر کسی کی پیشانی بےاختیار سجدہ گاہ سے اٹھ جائے اور دوبارہ بغیر اختیارسجدہ گاہ پر جا لگے تواس کا ملکر ایک سجدہ شمارہونا محل اشکال ہے جبکہ ایک سجدہ یقیناً ہو چکا ہے

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:190 | volume:0


Answer-3: اگر کسی کی پیشانی بےاختیار سجدہ گاہ سے اٹھ جائے اور دوبارہ بغیر اختیار سجدہ گاہ پر جا لگے تو یہ ایک سجدہ شمار ہوگا اگر ذکرنہ پڑھا ہو تو ذکر پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:166 | volume:0


Answer-4: اگر کسی کی پیشانی بےاختیار سجدہ گاہ سے اٹھ جائے اور دوبارہ بغیر اختیار سجدہ گاہ پر جا لگے تو یہ ایک سجدہ شمار ہوگا اگر ذکرنہ پڑھا ہوتو احتیاط واجب ہےکہ ذکر پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:183 | volume:0



513

Category : نماز

Question : کیا فوم وغیرہ پر جہاں بدن معمولی سی حرکت میں ہوتا ہے سجدہ صحیح ہے؟


Answer-1: فوم وغیرہ پر جہاں بدن سکون کی حا لت میں نہ ہو سجدہ باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:206 | volume:0


Answer-2: فوم وغیرہ پر جہاں بدن سکون کی حا لت میں نہ ہو سجدہ باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:191 | volume:0


Answer-3: فوم وغیرہ پر جہاں بدن سکون کی حا لت میں نہ ہو سجدہ باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:183 | volume:0


Answer-4: فوم وغیرہ پر جہاں بدن سکون کی حا لت میں نہ ہو سجدہ با طل ہے البتہ اگر ایک حد پر جا کر بدن سا کن ہو جاےؑ تو سجدہ صحیح ہے

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:167 | volume:0



514

Category : طہارت

Question : اگر انسان کو معلوم نہ ہو کہ خون مچھر کا ہے یا انسان کا تو کیا خون پاک ہے؟


Answer-1: اگر انسان کو معلوم نہ ہوکہ خون مچھر کا ہے یا انسان کا تو اسے پاک ہی سمجھیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:36 | volume:0


Answer-2: اگر انسان کو معلوم نہ ہوکہ خون مچھر کا ہے یا انسان کا تو اسے پاک ہی سمجھیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0


Answer-3: اگر انسان کو معلوم نہ ہوکہ خون مچھر کا ہے یا انسان کا تو اسے پاک ہی سمجھیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0


Answer-4: اگر انسان کو معلوم نہ ہوکہ خون مچھر کا ہے یا انسان کا تو اسے پاک ہی سمجھیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:24 | volume:0



515

Category : خمس

Question : اگر مستحق خمس سے قرض لینا ہو تو کیا ا پنےخمس کو قرض حسا ب کر سکتا ہے؟


Answer-1: اگر مستحق خمس سے اپنا قرضہ لینا ہو تو ا حتیا ط واجب کی بنا پر حا کم شرع کی اجازت سے اپنے قرض کو خمس حسا ب کر سکتا ہے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:341 | volume:0


Answer-2: اگر مستحق خمس سے اپنا قرضہ لینا ہو تو ا حتیا ط واجب کی بنا پر اپنے قرض کو خمس حساب نہیں کر سکتا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:327 | volume:0


Answer-3: اگر مستحق خمس سے اپنا قرضہ لینا ہو توحا کم شرع کی اجازت سے اپنے قرض کو خمس حساب کر سکتا ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:281 | volume:0


Answer-4: اگر مستحق خمس سے اپنا قرضہ لینا ہو تو ایک طریقہ یہ ہے کہ ا حتیا ط واجب کی بنا پر خمس اسکو دے اور پھر مستحق خمس قرض کےعنوان سے واپس کردے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:317 | volume:0



516

Category : نماز

Question : کیا گھا س اور پتوں پر سجدہ صحیح ہے؟


Answer-1: گھا سں اور وہ پتے جو کھانے میں استعمال نہیں ہوتے ا ن پر سجد ہ صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:207 | volume:0


Answer-2: گھا سں اور وہ پتے جو کھانے میں استعمال نہیں ہوتے ا ن پر سجد ہ صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:191 | volume:0


Answer-3: گھا سں اور وہ پتے جو کھانے میں استعمال نہیں ہوتے ا ن پر سجد ہ صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:167 | volume:0


Answer-4: گھا سں اور وہ پتے جو کھانے میں استعمال نہیں ہوتے ا ن پر سجد ہ صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:184 | volume:0



517

Category : طہارت

Question : اگر کسی چیزکے پاک یا نجس ہونے کے بارے میں معلوم نہ ہو توکیا تحقیق کرنا ضروری ہے؟


Answer-1: اگر کسی چیزکے پاک یا نجس ہونے کے بارے میں علم نہ ہو تو وہ چیز پاک تصور کی جائے گی اور تحقیق کرنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:26 | volume:0


Answer-2: اگر کسی چیزکے پاک یا نجس ہونے کے بارے میں علم نہ ہو تو وہ چیز پاک تصور کی جائے گی اور تحقیق کرنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:24 | volume:0


Answer-3: اگر کسی چیزکے پاک یا نجس ہونے کے بارے میں علم نہ ہو تو وہ چیز پاک تصور کی جائے گی اور تحقیق کرنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0


Answer-4: اگر کسی چیزکے پاک یا نجس ہونے کے بارے میں علم نہ ہو تو وہ چیز پاک تصور کی جائے گی اور تحقیق کرنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0



518

Category : طہارت

Question : اگر کسی نجس چیز کے بارے میں شک ہو کہ شاید پاک ہوگئی ہو تو کیا اسے نجس ہی تصور کیا جائے گا۔؟


Answer-1: اگر کسی نجس چیز کے بارے میں شک ہو کہ شاید پاک ہوگئی ہو تو ایسی صورت میں اسے نجس ہی مانا جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:26 | volume:0


Answer-2: اگر کسی نجس چیز کے بارے میں شک ہو کہ شاید پاک ہوگئی ہو تو ایسی صورت میں اسے نجس ہی مانا جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:24 | volume:0


Answer-3: اگر کسی نجس چیز کے بارے میں شک ہو کہ شاید پاک ہوگئی ہو تو ایسی صورت میں اسے نجس ہی مانا جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0


Answer-4: اگر کسی نجس چیز کے بارے میں شک ہو کہ شاید پاک ہوگئی ہو تو ایسی صورت میں اسے نجس ہی مانا جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0



519

Category : طہارت

Question : اگر کسی پاک چیز کے بارے میں شک ہو کہ نجس ہوگئی یا نہیں تو اسں چیز کا کیا حکم ہے۔؟


Answer-1: اگر کسی پاک چیز کے بارے میں شک ہو کہ نجس ہوگئی ہے یا نہیں تو چیز پاک رہے گی۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:26 | volume:0


Answer-2: اگر کسی پاک چیز کے بارے میں شک ہو کہ نجس ہوگئی ہے یا نہیں تو چیز پاک رہے گی۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:24 | volume:0


Answer-3: اگر کسی پاک چیز کے بارے میں شک ہو کہ نجس ہوگئی ہے یا نہیں تو چیز پاک رہے گی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0


Answer-4: اگر کسی پاک چیز کے بارے میں شک ہو کہ نجس ہوگئی ہے یا نہیں تو چیز پاک رہے گی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0



520

Category : نماز

Question : اللہ کے علاوہ کسی اور کو سجدہ کرنا جائز ہے۔؟


Answer-1: اللہ تعالیٰ کے علاوہ کسی کوبھی سجدہ کرنا جائزنہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:193 | volume:0


Answer-2: اللہ تعالیٰ کے علاوہ کسی کوبھی سجدہ کرنا جائزنہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:208 | volume:0


Answer-3: اللہ تعالیٰ کے علاوہ کسی کوبھی سجدہ کرنا جائزنہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:169 | volume:0


Answer-4: اللہ تعالیٰ کے علاوہ کسی کوبھی سجدہ کرنا جائزنہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:185 | volume:0



521

Category : نماز

Question : اگر پیشانی کسی ایسی چیز پر رکھ دی جس پر سجدہ صحیح نہیں ہے اور ذکر کے بعد متوجہ ہوا تو نماز کا کیا حکم ہے۔؟


Answer-1: اگر پیشانی کسی ایسی چیز پر رکھ دی جس پر سجدہ صحیح نہیں ہے اور ذکر واجب کے بعد متوجہ ہوا تو نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:208 | volume:0


Answer-2: اگر پیشانی کسی ایسی چیز پر رکھ دےجس پر سجدہ صحیح نہیں ہے تو پیشانی کو ایسی چیز پر رکھے جس پر سجدہ صحیح ہے اور احتیاط واجب ہے کہ دو سجدہ سہوانجام دے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:193 | volume:0


Answer-3: اگر پیشانی کسی ایسی چیز پر رکھ دی جس پر سجدہ صحیح نہیں ہے اور سجدے کے دوران متوجہ ہوجائے تو لازم ہے پیشانی کو کھینچ کراسی جگہ رکھے جہاں سجدہ صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:168 | volume:0


Answer-4: اگر پیشانی ایسی چیز پر رکھ دی جس پر سجدہ صحیح نہیں ہے تو پیشانی کو ایسی چیز پر رکھے جس پر سجد ہ صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:185 | volume:0



522

Category : نماز

Question : کیا پھولوں پر سجدہ ہوسکتا ہے۔؟


Answer-1: وہ پھول جو کھائے نہیں جاتے ان پر سجدہ صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:207 | volume:0


Answer-2: وہ پھول جو کھائے نہیں جاتے ان پر سجدہ صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:191 | volume:0


Answer-3: وہ پھول جو کھائے نہیں جاتے ان پر سجدہ صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:168 | volume:0


Answer-4: وہ پھول جو کھائے نہیں جاتے ان پر سجدہ صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:184 | volume:0



523

Category : حج

Question : حج کا احرام کس تاریخ سے با ندھا جا سکتا ہے۔؟


Answer-1: بوڑھے مریض اور ان افراد کے علاوہ جوشرعا حج کے طواف کو عرفات کے وقوف سے پہلے انجام دے سکتے ہیں دوسرے افرادآٹھ ذی الحجہ سے تین یا اس سے زیادہ دن پہلے باندھ سکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:263 | volume:0


Answer-2: بوڑھے اور مریض شخص کے علاوہ دوسرے افراد احتیاط واجب کی بنا پر پانچ ذی الحجہ سے پہلے حج کا احرام نہیں باندھ سکتے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:184 | volume:0


Answer-3: عمرہ تمتع کےبعد عرفات کےاختیاری وقوف تک احرام کا وقت ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:282 | volume:0


Answer-4: عمرہ تمتع کےبعد عرفات کےاختیاری وقوف تک احرام کا وقت ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:310 | volume:0



524

Category : نماز

Question : کیا چونے پر سجدہ کرنا جائز ہے؟


Answer-1: چونے پر سجدہ کرنا جائز ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:207 | volume:0


Answer-2: چونے پر سجدہ کرنا جائز ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:192 | volume:0


Answer-3: چونے پر سجدہ کرنا جائز ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:168 | volume:0


Answer-4: چونے پر سجدہ کرنا جائز ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:184 | volume:0



525

Category : سجدہ

Question : کیا قرآن کے واجب سجدے میں ذکر پڑھنا واجب ہے؟


Answer-1: قرآن کے واجب سجدے میں پیشانی کو سجدے کی نیت سے سجدہ گاہ پر رکھنا کافی ہے البتہ ذکر پڑھنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:211 | volume:0


Answer-2: قرآن کے واجب سجدے میں پیشانی کو سجدے کی نیت سے سجدہ گاہ پر رکھنا کافی ہے البتہ ذکر پڑھنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:195 | volume:0


Answer-3: قرآن کے واجب سجدے میں پیشانی کو سجدے کی نیت سے سجدہ گاہ پر رکھنا کافی ہے البتہ ذکر پڑھنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:171 | volume:0


Answer-4: قرآن کے واجب سجدے میں پیشانی کو سجدے کی نیت سے سجدہ گاہ پر رکھنا کافی ہے البتہ ذکر پڑھنا مستحب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:187 | volume:0



526

Category : نماز

Question : ائمہ معصو مین ؑ کی ضر یح مبارک یا حرم مبارک کے سا منے سجدہ کرنے کا کیا حکم ہے۔؟


Answer-1: ائمہ معصو مین ؑ کی ضر یح مبارک یا حرم مبارک کے سا منے سجدہ کرنا اگر اللہ کا شکر بجا لانے کے لئے ہو تو کوئی حرج نہیں ورنہ اشکال رکھتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:208 | volume:0


Answer-2: ائمہ معصو مین ؑ کی ضر یح مبارک یا حرم مبارک کے سا منے سجدہ کرنا اگر اللہ کا شکر بجا لانے کے لئے ہو تو کوئی حرج نہیں ورنہ حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:193 | volume:0


Answer-3: ائمہ معصو مین ؑ کی ضر یح مبارک یا حرم مبارک کے سا منے سجدہ کرنا اگر اللہ کا شکر بجا لانے کے لئے ہو تو کوئی حرج نہیں ورنہ حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:169 | volume:0


Answer-4: ائمہ معصو مین ؑ کی ضر یح مبارک یا حرم مبارک کے سا منے سجدہ کرنا اگر اللہ کا شکر بجا لانے کے لئے ہو تو کوئی حرج نہیں ورنہ حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:185 | volume:0



527

Category : سجدہ

Question : کیا قرآن کے واجب سجدے میں بھی سجدے کی تمام شرائط کا ہونا ضروری ہے؟


Answer-1: قرآن کے واجب سجدے میں احتیاط کی بنا پر واجب ہےپیشانی کو ایسی چیز پر رکھیں جس پر سجدہ صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:211 | volume:0


Answer-2: قرآن کے واجب سجدے میں پیشانی کو ایسی چیز پر رکھنا جس پر سجدہ صحیح ہے واجب ہے اور احتیاط واجب ہے کہ بقیہ اعضاء کو بھی نماز کے سجدے کی طرح رکھے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:195 | volume:0


Answer-3: قرآن کے واجب سجدے میں واجب ہے پیشانی کو ایسی چیز ہر رکھے جس پر سجدہ صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:171 | volume:0


Answer-4: قرآن کےواجب سجدے میں احتیاط کی بنا ء پر واجب ہے کہ پیشانی کو ایسی چیز پر رکھے جس پر سجدہ صحیح ہے اور بقیہ اعضاء کو بھی نماز کے سجدے کی طرح رکھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:187 | volume:0



528

Category : نماز

Question : اگر پیشانی ایسی چیز پر رکھ دے جس پر سجدہ صحیح نہیں ہے اور ذکر سےپہلے متوجہ ہوجائے تو نماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر پیشانی ایسی چیز پر رکھ دے جس پر سجدہ صحیح نہیں ہے اور ذکر واجب سے پہلے متوجہ ہوگیا تو واجب ہے پیشانی کو کھینچ کر ایسی چیز پر رکھے جس پر سجدہ جائز ہے اور ذکر پڑھے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:208 | volume:0


Answer-2: اگر پیشانی ایسی چیز پر رکھ دے جس پر سجدہ صحیح نہیں ہے تو اگر نماز کا وقت وسیع ہو اور پیشانی کو ایسی چیزپر رکھنا ممکن ہو جس پر سجدہ صحیح ہےتو پیشانی اس پر رکھے اور احتیاط واجب ہے دوسجدے سہو انجام دے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:193 | volume:0


Answer-3: اگر پیشانی ایسی چیز پر رکھ دے جس پر سجدہ صحیح نہیں ہے تو پیشانی کو ایسی چیز پر رکھے جس پر سجدہ صحیح ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:185 | volume:0


Answer-4: اگر پیشانی ایسی چیز پر رکھ دے جس پر سجدہ صحیح نہیں ہے اور سجدے کے دوران متوجہ ہوجائے تو لازم ہے پیشانی کو کھینچ کر اس جگہ رکھے جہاں سجدہ صحیح ہے اگر ممکن ہو ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:168 | volume:0



529

Category : نماز

Question : نماز کی کس رکعت میں تشھد پڑھنا واجب ہے۔؟


Answer-1: ہر نماز کی دوسری اور آخری رکعت میں دوسرے سجدے کے بعد تشھد پڑھنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:211 | volume:0


Answer-2: ہر نماز کی دوسری اور آخری رکعت میں دوسرے سجدے کے بعد تشھد پڑھنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:195 | volume:0


Answer-3: ہر نماز کی دوسری اور آخری رکعت میں دوسرے سجدے کے بعد تشھد پڑھنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:171 | volume:0


Answer-4: ہر نماز کی دوسری اور آخری رکعت میں دوسرے سجدے کے بعد تشھد پڑھنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:188 | volume:0



530

Category : طہارت

Question : اگر خربوزے کا کوئی حصہ نجس ہوجائے تو کیا تمام خربوزہ نجس ہوجائے گا؟


Answer-1: خربوزے کا وہ حصہ جو تر ہے اور اس تک نجاست پہنچی ہےتو وہی حصہ نجس ہوگا باقی حصہ پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:27 | volume:0


Answer-2: خربوزے کا وہ حصہ جو تر ہے اور اس تک نجاست پہنچی ہےتو وہی حصہ نجس ہوگا باقی حصہ پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:20 | volume:0


Answer-3: خربوزے کا وہ حصہ جو تر ہے اور اس تک نجاست پہنچی ہےتو وہی حصہ نجس ہوگا باقی حصہ پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:23 | volume:0


Answer-4: خربوزے کا وہ حصہ جو تر ہے اور اس تک نجاست پہنچی ہےتو وہی حصہ نجس ہوگا باقی حصہ پاک ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:25 | volume:0



531

Category : طہارت

Question : اگر کوئی پاک چیز کسی نجس چیز سے ملے لیکن ہم شک کریں کہ دونوں یا ان میں کوئی ایک تر تھی یا نہیں تو نجاست کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر پاک چیز کسی نجس چیز سے ملے لیکن ہم شک کریں کہ دونوں یا ان میں کوئی ایک تر تھی یا نہیں تو وہ پاک چیز نجس نہیں ہوگی۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:27 | volume:0


Answer-2: اگر پاک چیز کسی نجس چیز سے ملے لیکن ہم شک کریں کہ دونوں یا ان میں کوئی ایک تر تھی یا نہیں تو وہ پاک چیز نجس نہیں ہوگی۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:25 | volume:0


Answer-3: اگر پاک چیز کسی نجس چیز سے ملے لیکن ہم شک کریں کہ دونوں یا ان میں کوئی ایک تر تھی یا نہیں تو وہ پاک چیز نجس نہیں ہوگی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:20 | volume:0


Answer-4: اگر پاک چیز کسی نجس چیز سے ملے لیکن ہم شک کریں کہ دونوں یا ان میں کوئی ایک تر تھی یا نہیں تو وہ پاک چیز نجس نہیں ہوگی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:23 | volume:0



532

Category : طہارت

Question : اگر یہ جاننا ہو کہ دولباس میں سے کوئی ایک نجس ہے لیکن یہ نہ جانتا ہو کہ کونسا نجس ہے اور کونسا پاک جبکہ ان دو لباس میں سے ایک کو وہ استعمال کرتا ہے اور دوسرا کسی اور کا ہے تو کیا وہ اپنے لباس سے اجتناب کرےگا؟


Answer-1: اس کے لیے اپنے لباس سے اجتناب کرنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:26 | volume:0


Answer-2: اگر دوسرا لباس اس کے اختیار سے خارج ہے تو اس کیلئے ضروری نہیں کے اپنے لباس سے اجتناب کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:24 | volume:0


Answer-3: احتیاط یہ ہے کہ اپنے لباس سے اجتناب کرےالبتہ اجتناب کرنا لازمی نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0


Answer-4: اس کے لیے اپنے لباس سے اجتناب کرنا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0



533

Category : طہارت

Question : اگر یہ جانتا ہو کہ دو لباس میں سے کوئی ایک نجس ہے لیکن یہ نہ جانتا ہو کہ کونسا ہے تو ان لباس کے استعمال کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر دونوں لباس سے استفادہ کرتا ہے تو دونوں سے بچنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:26 | volume:0


Answer-2: اگر دونوں لباس اس کے اختیار میں ہوں تو دونوں سے پرہیز کریگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:24 | volume:0


Answer-3: اگر دونوں لباس سے استفادہ کرتا ہے تو دونوں سے بچنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:19 | volume:0


Answer-4: اگر دونوں لباس سے استفادہ کرتا ہے تو دونوں سے بچناضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0



534

Category : نماز

Question : اگر نمازی قیام کی حالت میں شک کرے کہ تشہد پڑھا ہے یا نہیں تو کیا وظیفہ ہے؟


Answer-1: اگر نمازی قیام کے لئے اٹھتے ہوئے شک کرے کہ تشہد پڑھا ہے یا نہیں تو شک کی پرواہ نہ کرے نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:230 | volume:0


Answer-2: اگر نمازی قیام کے لئے اٹھتے ہوئےشک کرے کہ تشہد پڑھا ہے یا نہیں تو بیٹھ کر تشہد پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:213 | volume:0


Answer-3: اگر نمازی قیام کی حالت میں شک کرے کہ تشہد پڑھا ہے یا نہیں تو شک کی پرواہ نہ کرے نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:185 | volume:0


Answer-4: اگر نمازی قیام کے لئے اٹھتے ہوئے شک کرے کہ تشہد پڑھا ہے یا نہیں تو بیٹھ کر تشہد پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:204 | volume:0



535

Category : نماز

Question : نماز میں سلام کی واجب مقدار کتنی ہے؟


Answer-1: نماز میں سلا م کی واجب مقدار السلام علیکم ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:213 | volume:0


Answer-2: نماز میں سلام میں واجب ہے السلام علینا و علی عباداللہ الصالحین یا السلام علیکم پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:196 | volume:0


Answer-3: نماز میں سلام میں واجب ہے السلام علینا و علی عباداللہ الصالحین یا السلام علیکم پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:172 | volume:0


Answer-4: نماز میں سلام میں واجب ہے السلام علینا و علی عباداللہ الصالحین یا السلام علیکم پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:189 | volume:0



536

Category : نماز

Question : کیا نماز میں سلام پڑھتے وقت بدن کا ساکن ہونا ضروری ہے؟


Answer-1: نماز میں آخری رکعت میں تشہد کے بعد ساکن حالت میں بیٹھ کر سلام پڑھنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:212 | volume:1


Answer-2: نماز میں آخری رکعت میں تشہد کے بعد ساکن حالت میں بیٹھ کر سلام پڑھنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:198 | volume:2


Answer-3: نماز میں آخری رکعت میں تشہد کے بعد ساکن حالت میں بیٹھ کر سلام پڑھنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:164 | volume:1


Answer-4: نماز میں آخری رکعت میں تشہد کے بعد ساکن حالت میں بیٹھ کر سلام پڑھنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:198 | volume:2



537

Category : نماز

Question : اگر نمازی تشہد پڑھنا بھول جائے اور قیام کی حالت میں یاد آئے تو نما ز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر نمازی تشہد پڑھنا بھول جائے اور رکوع سے پہلے یاد آجائے تو بیٹھ کر تشہد انجام دے اور بقیہ نماز کو انجام دے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:211 | volume:0


Answer-2: اگرنمازی تشہد پڑھنا بھول جائے اور رکوع سے پہلے یاد آجائے تو بیٹھ کر تشہد انجام دے اور بقیہ نماز کو انجام دے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:196 | volume:0


Answer-3: اگرنمازی تشہد پڑھنا بھول جائے اور رکوع سے پہلے یاد آجائے تو بیٹھ کر تشہد انجام دے اور بقیہ نماز کو انجام دے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:171 | volume:0


Answer-4: اگرنمازی تشہد پڑھنا بھول جائے اور رکوع سے پہلے یاد آجائے تو بیٹھ کر تشہد انجام دے اور بقیہ نماز کو انجام دے اور احتیاط واجب کی بنا پر اضافی قیام کی وجہ سے دو سجدہ سہو بھی انجام دے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:188 | volume:0



538

Category : نماز

Question : اگرکوئی شخص نماز میں سلام پڑھنا بھول جائے اور اس وقت یاد آئے جب نماز کو باطل کرنے والا عمل انجام دے چکا ہو تو نماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگرکوئی شخص نماز میں سلام پڑھنا بھول جائے اور اس وقت یاد آئے جب نماز کو باطل کرنے والا عمل انجام دے چکا ہو تو اس کی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:213 | volume:0


Answer-2: اگرکوئی شخص نماز میں سلام پڑھنا بھول جائے اور اس وقت یاد آئے جب نماز کو باطل کرنے والا عمل انجام دے چکا ہو تو اس کی نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:197 | volume:0


Answer-3: اگرکوئی شخص نماز میں سلام پڑھنا بھول جائے اور اس وقت یاد آئے جب نماز کو باطل کرنے والا عمل انجام دے چکا ہو تو اس کی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:172 | volume:0


Answer-4: اگرکوئی شخص نماز میں سلام پڑھنا بھول جائے اور اس وقت یاد آئے جب نماز کو باطل کرنے والا عمل انجام دے چکا ہو تو اس کی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:189 | volume:0



539

Category : نماز

Question : اگرکوئی شخص نماز میں بھول کر سلام نہ پڑھے لیکن نماز کو باطل کرنے والاکام انجام دینے سے پہلے یاد آجائے تو کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگرکوئی شخص نماز میں بھول کر سلام نہ پڑھے لیکن نماز کو باطل کرنے والا کام انجام نہ دیااور یاد آجائے تو سلام پڑھے نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:211 | volume:0


Answer-2: اگرکوئی شخص نماز میں بھول کر سلام نہ پڑھے لیکن نماز کو باطل کرنے والا کام انجام نہ دیااور یاد آجائے تو سلام پڑھے نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:197 | volume:0


Answer-3: اگرکوئی شخص نماز میں بھول کر سلام نہ پڑھے لیکن نماز کو باطل کرنے والا کام انجام نہ دیااور یاد آجائے تو سلام پڑھے نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:172 | volume:0


Answer-4: اگرکوئی شخص نماز میں بھول کر سلام نہ پڑھے لیکن نماز کو باطل کرنے والا کام انجام نہ دیااور یاد آجائے تو سلام پڑھے نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:189 | volume:0



540

Category : نماز

Question : کیا تشہد کے وقت بدن کا ساکن ہونا ضروری ہے؟


Answer-1: تشہد کے وقت بدن کا ساکن ہونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:211 | volume:0


Answer-2: واجب نمازوں میں تشہد کے وقت بدن کا ساکن ہونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:195 | volume:0


Answer-3: تشہد کے وقت بدن کا ساکن ہونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:171 | volume:0


Answer-4: تشہد کے وقت بدن کا ساکن ہونا ضڑوری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:188 | volume:0



541

Category : نماز

Question : اگر تشہد پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں جانے کے بعد یاد آئے کہ تشہد نہیں پڑھا تو نماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر تشہد پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں جانے کے بعد یاد آئے تو نماز مکمل کرے گا اوربناء بر احیتاط مستحب تشہد کی قضاء کرے اور واجب ہے تشہد کے بھولنےکی وجہ سے دو سجدہ سہو انجام دے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:211 | volume:0


Answer-2: اگر تشہد پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں جانے کے بعد یاد آئے تو نماز مکمل کرے گا اوربناء بر احیتاط مستحب تشہد کی قضاء کرے اور واجب ہے تشہد کے بھولنےکی وجہ سے دو سجدہ سہو انجام دے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:196 | volume:0


Answer-3: اگر تشہد پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں جانے کے بعد یاد آئے تو نماز مکمل کرے اور سلام کے بعد تشہد کی قضا کرے اور احتیاط واجب ہے کہ دوسجدہ سہو بھی انجام دے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:171 | volume:0


Answer-4: اگر تشہد پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں جانے کے بعد یاد آئے تو نماز مکمل کرے اور سلام کے بعد احتیاط واجب کی بناء پر تشہد کی قضا کرے اور تشھد بھولنے کی وجہ سے دوسجدہ سہو بھی انجام دے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:188 | volume:0



542

Category : حج

Question : وقوف سے کیا مراد ہے؟


Answer-1: وقوف سے مراد عرفات میں موجود ہونا ہے

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:266 | volume:0


Answer-2: وقوف سے مراد عرفات میں موجود ہونا ہے

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:287 | volume:0


Answer-3: وقوف سے مراد عرفات میں موجود ہونا ہے

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:315 | volume:0


Answer-4: وقوف سے مراد عرفات میں موجود ہونا ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:186 | volume:0



543

Category : حج

Question : حج اور عمرےکے احرام میں کیا فرق ہے؟


Answer-1: حج اور عمرےکے احرام میں صرف نیت کا فرق ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:264 | volume:0


Answer-2: حج اور عمرےکے احرام میں صرف نیت کا فرق ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:281 | volume:0


Answer-3: حج اور عمرےکے احرام میں صرف نیت کا فرق ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:309 | volume:0


Answer-4: حج اور عمرےکے احرام میں صرف نیت کا فرق ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:185 | volume:0



544

Category : حج

Question : کیا حج کا احرام باندھنے کے بعد مستحب طواف انجام دیا جاسکتا ہے ؟


Answer-1: احتیاط واجب کی بنا پر حج کا احرام باندھنے کے بعد مستحب طواف انجام نہ دیا جائے

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:266 | volume:0


Answer-2: حج کا احرام باندھنے کے بعد مستحب طواف کا انجام دینا جائز نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:186 | volume:0



545

Category : حج

Question : کیا عرفات کے وقوف کیلئے قصدو ارادے کا ہونا ضروری ہے؟


Answer-1: عرفات میں وقوف کیلئے قصد وارادہ کرنا ضرروی ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:267 | volume:0


Answer-2: عرفات میں وقوف کیلئے قصد اور تقرب پروردگار کا ہونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:186 | volume:0


Answer-3: عرفات میں وقوف کیلئے قصد وارادہ کرنا ضرروی ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:287 | volume:0


Answer-4: عرفات میں وقوف کیلئے قصد وارادہ کرنا ضرروی ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:315 | volume:0



546

Category : نماز

Question : اگر کوئی جان بوجھ کر سورۃ توحید کو فاتحہ سے پہلے پڑھے تو اس کی نماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص جان بوجھ کر سورۃ توحید کو سورہ فاتحہ سے پہلے تلاوت کرے تو اس کی نما زباطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:213 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص جان بوجھ کر سورۃ توحید کو سورہ فاتحہ سے پہلے تلاوت کرے تو اس کی نما زباطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:172 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص جان بوجھ کر سورۃ توحید کو سورہ فاتحہ سے پہلے تلاوت کرے تو اس کی نما زباطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:189 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص جان بوجھ کر سورۃ توحید کو سورہ فاتحہ سے پہلے تلاوت کرے تو اس کی نما زباطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:197 | volume:0



547

Category : نماز

Question : اگر کوئی شخص رکوع کرنا بھول گیا اور دونوں سجدے انجام دینے کے بعد یاد آئے تو اس کی کیا ذمہ داری ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص رکوع بھول گیا اور دونوں سجدے انجام دینے کے بعد یاد آئے تو احتیاط واجب کی بنا پر اس کی نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:213 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص رکوع بھول گیا اور دونوں سجدے انجام دینے کے بعد یاد آئے تو اس کی نماز باطل ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:172 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص رکوع بھول گیا اور دونوں سجدے انجام دینے کے بعد یاد آئے تو اس کی نماز باطل ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:صراط النجاۃ | Page:189 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص رکوع بھول گیا اور دونوں سجدے انجام دینے کے بعد یاد آئے تو اس کی نماز باطل ہے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:197 | volume:0



548

Category : نماز

Question : اگر کوئی شخص دو سجدے کرنا بھول گیا اور تشہد کے بعد یاد آئے تو نماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص دو سجدے کرنا بھول گیا اور تشہد کے بعد یاد آئے تو دو نوں سجدے انجام دے اور تشہد پڑھنے کے بعد بقیہ نماز انجام دے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:213 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص دو سجدے کرنا بھول گیا اور تشہد کے بعد یاد آئے تو دو نوں سجدے انجام دے اور تشہد پڑھنے کے بعد بقیہ نماز انجام دے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:172 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص دو سجدے کرنا بھول گیا اور تشہد کے بعد یاد آئے تو دو نوں سجدے انجام دے اور تشہد پڑھنے کے بعد بقیہ نماز انجام دے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:189 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص دو سجدے کرنا بھول گیا اور تشہد کے بعد یاد آئے تو دو نوں سجدے انجام دے اور تشہد پڑھنے کے بعد بقیہ نماز انجام دے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:197 | volume:0



549

Category : حج

Question : اگر کوئی شخص کسی عذر کی بنا پر عرفات کا اختیاری وقوف درک نہ کرسکے تو اسکا کیا وظیفہ ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص کسی عذر کی بنا پر عرفات کا اختیاری وقوف درک نہ کرسکے تو اس پر واجب ہے اضطراری وقوف کرے یعنی رات کا کچھ حصہ ٹھہرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:268 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص کسی عذر کی بنا پر عرفات کا اختیاری وقوف درک نہ کرسکے تو اس پر واجب ہے اضطراری وقوف کرے یعنی رات کا کچھ حصہ ٹھہرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:289 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص کسی عذر کی بنا پر عرفات کا اختیاری وقوف درک نہ کرسکے تو اس پر واجب ہے اضطراری وقوف کرے یعنی رات کا کچھ حصہ ٹھہرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:317 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص کسی عذر کی بنا پر عرفات کا اختیاری وقوف درک نہ کرسکے تو اس پر واجب ہے اضطراری وقوف کرے یعنی رات کا کچھ حصہ ٹھہرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:188 | volume:0



550

Category : حج

Question : اگر کوئی شخص عرفے کے اضطراری وقوف کی وجہ سے طلوع آفتاب سے پہلے مشعر نہ پہنچ سکے تو اسکا کیا وظیفہ ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص اضطراری عرفے کے وقوف کی وجہ سے مشعرنہ پہنچ سکے تو اسے چاہیے کہ مشعر کے وقوف پر اکتفا کرےاسکا حج صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:269 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص اضطراری وقوف کسی عذر کی بنا پر نہ کرسکے لیکن مشعر الحرام کا وقوف درک کر سکے تو یہ کفایت کرتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:290 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص اضطراری وقوف کسی عذر کی بنا پر نہ کرسکے لیکن مشعر الحرام کا وقوف درک کر سکے تو یہ کفایت کرتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:318 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص اضطراری وقوف کسی عذر کی بنا پر نہ کرسکے لیکن مشعر الحرام کا وقوف درک کر سکے تو یہ کفایت کرتا ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:188 | volume:0



551

Category : حج

Question : غروب سے پہلے عرفات سے باہر جانے کاکیا حکم ہے؟


Answer-1: جان بوجھ کر غروب سے پہلے عرفات سے باہر جانا حرام ہے لیکن حج باطل نہیں ہوگا البتہ اگر واپس لوٹ آئے تو اس پر کوئی کفارہ نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:269 | volume:0


Answer-2: جان بوجھ کر غروب سے پہلے عرفات سے باہر جانا حرام ہے لیکن حج باطل نہیں ہوگاالبتہ نادم ہو اور واپس لوٹ آئے تو کوئی کفارہ بھی نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:288 | volume:0


Answer-3: جان بوجھ کر غروب سے پہلے عرفات سے باہر جانا حرام ہے لیکن حج باطل نہیں ہوگاالبتہ اگر نادم ہو اور واپس لوٹ آئے تو کوئی کفارہ بھی نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:316 | volume:0


Answer-4: جان بوجھ کر غروب سے پہلے عرفات سے باہر جانا حرام ہے لیکن حج باطل نہیں ہوگاالبتہ اگر واپس لوٹ آئے تو کوئی کفارہ بھی نہیں ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:189 | volume:0



552

Category : حج

Question : اگر کوئی جان بوجھ کر غروب سے پہلے عرفات سے باہر جائے اور واپس نہ آئے اسکا کیا حکم ہے ؟


Answer-1: اگر کوئی شخص غروب سے پہلے عرفات سے باہر جائے لیکن واپس نہ آئے تو اسے ایک اونٹ کفارہ دینا پڑے گا جو بہتر ہے کہ منیٰ میں ذبح کرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:296 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص غروب سے پہلے عرفات سے باہر جائے لیکن واپس نہ آئے تو اسے ایک اونٹ کفارہ دینا پڑے گا ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:289 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص غروب سے پہلے عرفات سے باہر جائے اور واپس نہ آئے تو اسے ایک اونٹ کا کفار ہ دینا پڑے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:317 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص غروب سے پہلے عرفات سے باہر جائے اور واپس نہ آئے تو اسے ایک اونٹ کا کفار ہ دینا پڑے گا جسےاحتیاط واجب کی بنا پر منیٰ میں ذبح کرے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:189 | volume:0



553

Category : حج

Question : مشعرالحرام یا مزدلفہ میں کب سے کب تک ٹھہرناواجب ہے ؟


Answer-1: شب عید کے کچھ حصہ سے لیکر صبح تک مز دلفہ میں ٹھہرنا واجب ہے البتہ احتیاط کی بنا پر طلوع آفتاب تک وہاں ٹھہرے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:272 | volume:0


Answer-2: صبح کے طلوع سےآفتاب کے طلوع ہونے تک ٹھہرنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:297 | volume:0


Answer-3: صبح کے طلوع سےآفتاب کے طلوع ہونے تک ٹھہرنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:327 | volume:0


Answer-4: احتیاط واجب کی بنا پر شب عید کے طلوع فجر طلوع آفتاب تک مزدلفہ میں ٹھہرنا واجب ہے

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:297 | volume:0



554

Category : طہارت

Question : اگر کوئی مکھی کسی نجس چیز پر بیٹھے اور پھر کسی پاک چیز پر بیٹھ جائے جبکہ دونوں تر ہوں تو کیا چیز نجس ہوجائےگی؟


Answer-1: اگر آپ کو معلوم ہے کہ مکھی کے ساتھ نجاست تھی تو پاک چیز نجس ہوجائے گی اور اگر معلوم نہ ہو تو پاک ہی رہے گی۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:28 | volume:0


Answer-2: اگر آپ کو معلوم ہے کہ مکھی کے ساتھ نجاست تھی تو پاک چیز نجس ہوجائے گی اور اگر معلوم نہ ہو تو پاک ہی رہے گی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:20 | volume:0


Answer-3: اگر آپ کو معلوم ہے کہ مکھی کے ساتھ نجاست تھی تو پاک چیز نجس ہوجائے گی اور اگر معلوم نہ ہو تو پاک ہی رہے گی۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:25 | volume:0


Answer-4: اگر آپ کو معلوم ہے کہ مکھی کے ساتھ نجاست تھی تو پاک چیز نجس ہوجائے گی اور اگر معلوم نہ ہو تو پاک ہی رہے گی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:23 | volume:0



555

Category : طہارت

Question : پاک چیز کس طرح نجس ہوتی ہے؟


Answer-1: اگر پاک چیز کسی نجس چیز سے ملے اور دونوں میں سے ہر ایک یا کوئی ایک اتنی گیلی ہو کہ ایک کی تری دوسرے تک منتقل ہوجائے تو پاک چیز نجس ہوجائےگی۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:27 | volume:0


Answer-2: اگر پاک چیز کسی نجس چیز سے ملے اور دونوں میں سے ہر ایک یا کوئی ایک اتنی گیلی ہو کہ ایک کی تری دوسرے تک منتقل ہوجائے تو پاک چیز نجس ہوجائےگی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:20 | volume:0


Answer-3: اگر پاک چیز کسی نجس چیز سے ملے اور دونوں میں سے ہر ایک یا کوئی ایک اتنی گیلی ہو کہ ایک کی تری دوسرے تک منتقل ہوجائے تو پاک چیز نجس ہوجائےگی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0


Answer-4: اگر پاک چیز کسی نجس چیز سے ملے اور دونوں میں سے ہر ایک یا کوئی ایک اتنی گیلی ہو کہ ایک کی تری دوسرے تک منتقل ہوجائے تو پاک چیز نجس ہوجائےگی۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:24 | volume:0



556

Category : طہارت

Question : کیا گھی یا شیرے میں نجاست لگ جائے تو تمام گھی یا شیرہ نجس ہوجائے گا؟


Answer-1: اگر گھی اور شیرہ اس طرح کا ہو کہ اسمیں سے کچھ نکالا جائے تو وہاں خالی جگہ بن جائے اگر چہ تھوڑی دیر بعد وہ پر ہوجائے تو ایسی صورت میں گھی یا شیرہ سے وہ نجس والا حصہ نکالنے کے بعدپورا پاک ہوجائے گا وگرنہ نجس ہی رہےگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:27 | volume:0


Answer-2: اگر گھی اور شیرہ بہنے والا ہو تو نجاست لگنےسے سارا نجس ہوجائے گا ورنہ تمام نجس نہیں ہوگا صرف وہی حصہ نجس ہوگا جہاں نجاست لگی ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:20 | volume:0


Answer-3: اگر گھی اور شیرہ اس طرح کا ہو کہ اسمیں سے کچھ نکالا جائے تو وہاں خالی جگہ بن جائے اگر چہ تھوڑی دیر بعد وہ پر ہوجائے تو ایسی صورت میں گھی یا شیرہ سے وہ نجس والا حصہ نکالنے کے بعدپورا پاک ہوجائے گا وگرنہ نجس ہی رہےگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:23 | volume:0


Answer-4: اگر گھی اور شیرہ اس طرح کا ہو کہ اسمیں سے کچھ نکالا جائے تو وہاں خالی جگہ بن جائے اگر چہ تھوڑی دیر بعد وہ پر ہوجائے تو ایسی صورت میں گھی یا شیرہ سے وہ نجس والا حصہ نکالنے کے بعدپورا پاک ہوجائے گا وگرنہ نجس ہی رہےگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:25 | volume:0



557

Category : طہارت

Question : کیا متنجس چیز کا کھانا حرام ہے؟


Answer-1: جو چیز نجس ہوجائے اس کا کھانا یا پینا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:29 | volume:0


Answer-2: جو چیز نجس ہوجائے اس کا کھانا یا پینا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0


Answer-3: جو چیز نجس ہوجائے اس کا کھانا یا پینا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:25 | volume:0


Answer-4: جو چیز نجس ہوجائے اس کا کھانا یا پینا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:27 | volume:0



558

Category : طہارت

Question : اگر سوئی بدن کے اندر لگائی جائے اور وہ خون سے ملے تو کیا باہر آنے کے بعد نجس ہوگی؟


Answer-1: اگر سوئی باہر نکلنے کے بعدخون سے آلودہ نہ ہو تو پاک رہے گی۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:28 | volume:0


Answer-2: اگر سوئی باہر نکلنے کے بعدخون سے آلودہ نہ ہو تو پاک رہے گی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:21 | volume:0


Answer-3: اگر سوئی باہر نکلنے کے بعدخون سے آلودہ نہ ہو تو پاک رہے گی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:24 | volume:0


Answer-4: اگر سوئی باہر نکلنے کے بعدخون سے آلودہ نہ ہو تو پاک رہے گی۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:26 | volume:0



559

Category : طہارت

Question : کیا کافر کو قرآن دیا جاسکتا ہے ؟


Answer-1: اگر قرآن کی بے حرمتی ہوتی ہو تو دینا حرام ہے اور اس سے قرآن لینا واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:29 | volume:0


Answer-2: احتیاط واجب کی بنا پر کافر کو قرآن نہیں دینا چائیے اوراگر قرآن اس کے ہاتھوں میں ہو اورممکن ہو سکے تو اس سے لے لیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:21 | volume:0


Answer-3: اگر قرآن کی بے حرمتی ہوتی ہو تو دینا حرام ہے اور اس سے قرآن لینا واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:24 | volume:0


Answer-4: اگر قرآن کی بے حرمتی ہوتی ہو تو دینا حرام ہے اور اس سے قرآن لینا واجب ہے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:26 | volume:0



560

Category : طہارت

Question : کیا نجس غذا کسی کو کھلانا حرام ہے؟


Answer-1: نجس غذا کھلانا حرام ہے لیکن بچے یا دیوانے کو کھلانا جائز ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:30 | volume:0


Answer-2: نجس غذا کھلانا حرام ہے لیکن بچے یا دیوانے کو کھلانا جائز ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0


Answer-3: نجس غذا کھلانا حرام ہے لیکن بچے یا دیوانے کو کھلانا جائز ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:25 | volume:0


Answer-4: نجس غذا کھلانا حرام ہے لیکن بچے یا دیوانے کو کھلانا جائز ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:27 | volume:0



561

Category : طہارت

Question : اگر ہم دیکھ رہے ہوں کوئی شخص نجس غذا کھا رہا ہے تو کیا ہمارے لیے اسے بتانا ضروری ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص نجس غذا کھارہا ہو تو اسے بتانا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:30 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص نجس غذا کھارہا ہو تو اسے بتانا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص نجس غذا کھارہا ہو تو اسے بتانا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:25 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص نجس غذا کھارہا ہو تو اسے بتانا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:27 | volume:0



562

Category : نماز

Question : کیا نماز کے افعال کے درمیان فاصلہ ہونے سے نماز باطل ہو جاتی ہے؟


Answer-1: اگر نماز کے افعال جیسے رکوع و سجودو تشہد کے درمیان اتنا فاصلہ ہوجائے کہ نہ کہا جائے کہ نماز پڑھ رہا ہے تو نماز باطل ہے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:214 | volume:0


Answer-2: اگر نماز کے افعال جیسے رکوع و سجودو تشہد کے درمیان اتنا فاصلہ ہوجائے کہ نہ کہا جائے کہ نماز پڑھ رہا ہے تو نماز باطل ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:173 | volume:0


Answer-3: اگر نماز کے افعال جیسے رکوع و سجودو تشہد کے درمیان اتنا فاصلہ ہوجائے کہ نہ کہا جائے کہ نماز پڑھ رہا ہے تو نماز باطل ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:190 | volume:0


Answer-4: اگر نماز کے افعال جیسے رکوع و سجودو تشہد کے درمیان اتنا فاصلہ ہوجائے کہ نہ کہا جائے کہ نماز پڑھ رہا ہے تو نماز باطل ہے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:198 | volume:0



563

Category : نماز

Question : اگر غلطی سے الفاظ یا جملات کے درمیان فاصلہ ہوجائے تو نماز کا کیاحکم ہے؟


Answer-1: اگر غلطی سے الفاظ یا جملات کے درمیان فاصلہ ہوجائے لیکن فاصلہ اتنا نہ ہو کہ نماز کی شکل ختم ہوجائے اور بعد والے رکن میں بھی داخل نہ ہوا ہوتو ضروری ہے صحیح طور پرانھیں ادا کرے اور بقیہ نماز ادا کرے ۔اگر یہ فاصلہ تکبیرۃ الاحرام کے درمیان ہوتو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:214 | volume:0


Answer-2: اگر غلطی سے الفاظ یا جملات کے درمیان فاصلہ ہوجائے لیکن فاصلہ اتنا نہ ہو کہ نماز کی شکل ختم ہوجائے اور بعد والے رکن میں بھی داخل نہ ہوا ہوتو ضروری ہے صحیح طور پرانھیں ادا کرے اور بقیہ نماز ادا کرے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:190 | volume:0


Answer-3: اگر غلطی سے الفاظ یا جملات کے درمیان فاصلہ ہوجائے لیکن فاصلہ اتنا نہ ہو کہ نماز کی شکل ختم ہوجائے اور بعد والے رکن میں بھی داخل نہ ہوا ہوتو ضروری ہے صحیح طور پرانھیں ادا کرے اور بقیہ نماز ادا کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:173 | volume:0


Answer-4: اگر غلطی سے الفاظ یا جملات کے درمیان فاصلہ ہوجائے لیکن فاصلہ اتنا نہ ہو کہ نماز کی شکل ختم ہوجائے اور بعد والے رکن میں بھی داخل نہ ہوا ہوتو ضروری ہے صحیح طور پرانھیں ادا کرے اور بقیہ نماز ادا کرے ۔ اگر یہ فاصلہ تکبیرۃ الا حرام کے درمیان ہو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:198 | volume:0



564

Category : نماز

Question : اگر کوئی شخص نماز میں قنوت نہ پڑھے تو اس کی نماز کی کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص نماز میں قنوت نہ پڑھے چاہے بھولے سے یا عمداً اس کی نماز صحیح ہے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:215 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص نماز میں قنوت نہ پڑھے چاہے بھولے سے یا عمداً اس کی نماز صحیح ہے ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:215 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص نماز میں قنوت نہ پڑھے چاہے بھولے سے یا عمداً اس کی نماز صحیح ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:173 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص نماز میں قنوت نہ پڑھے چاہے بھولے سے یا عمداً اس کی نماز صحیح ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:174 | volume:0


Answer-5: اگر کوئی شخص نماز میں قنوت نہ پڑھے چاہے بھولے سے یا عمداً اس کی نماز صحیح ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:190 | volume:0


Answer-6: اگر کوئی شخص نماز میں قنوت نہ پڑھے چاہے بھولے سے یا عمداً اس کی نماز صحیح ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:191 | volume:0


Answer-7: اگر کوئی شخص نماز میں قنوت نہ پڑھے چاہے بھولے سے یا عمداً اس کی نماز صحیح ہے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:199 | volume:0


Answer-8: اگر کوئی شخص نماز میں قنوت نہ پڑھے چاہے بھولے سے یا عمداً اس کی نماز صحیح ہے ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:199 | volume:0



565

Category : نماز

Question : کیا نماز کے قنوت میں ہاتھ اٹھانا ضروری ہے؟


Answer-1: احتیاط واجب کی بنا پر ہاتھ اٹھائے بغیر قنوت پڑھنا صحیح نہیں ہے مستحب ہے ہاتھ چہرے تک اٹھائے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:215 | volume:0


Answer-2: اگر نماز میں قنوت پڑھے تو احتیاط واجب ہے ہاتھ اٹھائے اور مستحب ہے چہرے تک اٹھائے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:174 | volume:0


Answer-3: قنوت میں مستحب ہے ہاتھ چہرے تک اٹھائے البتہ ہاتھ اٹھانا واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:191 | volume:0


Answer-4: قنوت میں مستحب ہے ہاتھ چہرے تک اٹھائے البتہ ہاتھ اٹھانا واجب نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:199 | volume:0



566

Category : نماز

Question : اگر کوئی نماز میں قنوت پڑھنا بھول گیا تو کیا اس کی قضا ہے؟


Answer-1: اگر نماز میں قنوت پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں پہنچنے سے پہلے یاد آجائے تو مستحب ہےاٹھ کر قنوت پڑھے اور اگر رکوع میں یاد آئے تو مستحب ہے رکوع کے بعد پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:215 | volume:0


Answer-2: اگر نماز میں قنوت پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں پہنچنے سے پہلے یاد آجائے تو مستحب ہےاٹھ کر قنوت پڑھے اور اگر رکوع میں یاد آئے تو مستحب ہے رکوع کے بعد پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:199 | volume:0


Answer-3: اگر نماز میں قنوت پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں پہنچنے سے پہلے یاد آجائے تو مستحب ہےاٹھ کر قنوت پڑھے اور اگر رکوع میں یاد آئے تو مستحب ہے رکوع کے بعد پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:191 | volume:0


Answer-4: اگر نماز میں قنوت پڑھنا بھول جائے اور رکوع میں پہنچنے سے پہلے یاد آجائے تومستحب ہے اٹھ کر قنوت پڑھے اور اگر رکوع میں یاد آئے تو مستحب ہے رکوع کے بعد پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:174 | volume:0



567

Category : طہارت

Question : اگر غیر ممیزبچہ کہے کہ فلاں چیز نجس ہے تو کیا اس کی بات ماننا ضروری ہے؟


Answer-1: اگر غیر ممیز بچہ کہے کہ فلاں چیز نجس ہے تو اس کی بات ماننا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:31 | volume:0


Answer-2: اگر غیر ممیز بچہ کہے کہ فلاں چیز نجس ہے تو اس کی بات ماننا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:27 | volume:0


Answer-3: اگر غیر ممیز بچہ کہے کہ فلاں چیز نجس ہے تو اس کی بات ماننا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:25 | volume:0


Answer-4: اگر غیر ممیز بچہ کہے کہ فلاں چیز نجس ہے تو اس کی بات ماننا ضروری نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0



568

Category : حج

Question : اگر کوئی شخص طلوع فجراور طلوع آفتاب کے درمیان کچھ دیر مشعرالحرام میں ٹھہرے اورپھرچلا جائے اسکے حج کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر طلوع فجر اور طلوع آفتاب کے درمیان کچھ حصہ مشعر الحرام میں ٹھہرے تو حج صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:273 | volume:0


Answer-2: اگر طلوع فجر اور طلوع آفتاب کے درمیان کچھ حصہ مشعر الحرام میں ٹھہرے تو حج صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:298 | volume:0


Answer-3: اگر طلوع فجر اور طلوع آفتاب کے درمیان کچھ حصہ مشعر الحرام میں ٹھہرے تو حج صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:329 | volume:0


Answer-4: اگر طلوع فجر اور طلوع آفتاب کے درمیان کچھ حصہ مشعر الحرام میں ٹھہرے تو حج صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:191 | volume:0



569

Category : نماز

Question : اگر نماز کے دوران معلوم ہو جائے کہ لباس نجس ہے تو کیا ذمہ داری ہے؟


Answer-1: اگر نماز کے دوران معلوم ہوجائے کہ لباس نجس ہے تو نماز باطل ہو جائے گی۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:220 | volume:0


Answer-2: اگر نماز کے دوران معلوم ہوجائے کہ لباس نجس ہے تو نماز باطل ہو جائے گی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:177 | volume:0


Answer-3: اگر نماز کے دوران معلوم ہوجائے کہ لباس نجس ہے تو نماز باطل ہو جائے گی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:195 | volume:0


Answer-4: اگر نماز کے دوران معلوم ہوجائے کہ لباس نجس ہے تو نماز باطل ہو جائے گی۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:203 | volume:0



570

Category : نماز

Question : اگر نماز کے دوران غیر اختیاری طور پر وضو باطل ہوجائے تو نماز کا کیا حکم ہے ؟


Answer-1: اگر نماز کے دوران اختیاری یا غیر اختیاری طور پر وضو باطل ہو جائے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:220 | volume:0


Answer-2: اگر نماز کے دوران اختیاری یا غیر اختیاری طور پر وضو باطل ہو جائے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:177 | volume:0


Answer-3: اگر نماز کے دوران اختیاری یا غیر اختیاری طور پر وضو باطل ہو جائے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:195 | volume:0


Answer-4: اگر نماز کے دوران اختیاری یا غیر اختیاری طور پر وضو باطل ہو جائے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:203 | volume:0



571

Category : طہارت

Question : اگر برتن کا اندرونی حصہ نجس ہوجائے تو قلیل پانی سےکتنی مرتبہ دھونا ضروری ہے؟


Answer-1: برتن کے اندورنی حصہ کو پاک کرنے کے لئے قلیل پانی سے تین مرتبہ دھونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:32 | volume:0


Answer-2: قلیل پانی سے برتن کو پاک کرنے کیلئے تین مرتبہ دھونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:23 | volume:0


Answer-3: قلیل پانی سے برتن کو پاک کرنے کیلئے تین مرتبہ دھونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:27 | volume:0


Answer-4: قلیل پانی سے برتن کو پاک کرنے کیلئے تین مرتبہ دھونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:28 | volume:0



572

Category : طہارت

Question : اگر ممیز بچہ کہے کہ میں نے فلاں چیز کو پاک کرلیا ہے تو کیا اس کی بات قبول کی جائے گی؟


Answer-1: اگر وہ چیز ممیز بچہ کے اختیار میں ہو یا اس کا کہنے سے اطمینان آجائے تو اس کی بات قبول کی جائے گی۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:31 | volume:0


Answer-2: اگر میز بچہ کہے کہ میں نے فلاں چیز کو پاک کرلیا ہے تو اس چیز کو دوبارہ پاک کرنا ہوگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:22 | volume:0


Answer-3: اگر بچے کے بالغ کونے کا زمانہ نزدیک ہو اور وہ چیز اس کے استعمال میں ہو یا وہ بچہ بھروسے مند ہو تو اس کی بات قبول کیجائے گی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:25 | volume:0


Answer-4: اگر ممیز بچہ ثقہ ہے اور اس کے کہنے بر خلاف گمان نہ ہو تو اس کی بات قبول کی جائے گی۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:27 | volume:0



573

Category : حج

Question : کیا مشعر الحرام کے وقوف کیلئے نیت کا ہونا ضروری ہے ؟


Answer-1: مشعر الحرام کے وقوف کیلئے قربت اور اخلاص کی نیت کا ہونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:274 | volume:0


Answer-2: مشعر الحرام کے وقوف میں اطاعت پروردگار کی نیت کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:297 | volume:0


Answer-3: مشعرالحرام کے وقوف کیلئے پروردگار کے تقرب کا قصد ہونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:39 | volume:0


Answer-4: مشعرالحرام کے وقوف کیلئے پروردگار کے تقرب کا قصد ہونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:191 | volume:0



574

Category : مشعرالحرام

Question : اگر کوئی شخص فجر کے طلوع ہونے سے پہلے مشعر الحرام سے چلا جائےتو اسکے حج کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص رات کا کچھ حصہ مشعر میں ٹہرے اور طلوع فجر سے پہلے وہاں سے چلا جاے اسکا حج صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:273 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص رات کا کچھ حصہ مشعر میں ٹہرے اور طلوع فجر سے پہلے بغیر کسی وجہ کے باہر چلاجائے اگر اس نے عرفے کا وقوف ترک نہ کیا ہو تو حج مکمل کرے اور احتیاط واجب کی بنا پر آئندہ سال دوبارہ حج کرے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:298 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص فجر کے طلوع سے پہلے مسئلہ نہ جاننے کی وجہ سے چلا جائے تو حج صحیح ہے لیکن ایک گوسفند کفارہ دینا پڑےگا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:329 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص فجر کے طلوع سے پہلے مسئلہ نہ جاننے کی وجہ سے چلا جائے تو حج صحیح ہے لیکن ایک گوسفند کفارہ دینا پڑےگا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:192 | volume:0



575

Category : حج

Question : اگر کوئی شخص حکم شرعی جانتے ہوئے طلوع فجر سےکچھ پہلے مشعر سے باہر چلا جائے تو اسکا کیا وظیفہ ہے؟


Answer-1: اگر کوئی شخص حکم شرعی جانتا تھا اور طلوع فجر سے پہلے مشعر سے باہر چلاگیا تو اسے گوسفند کفارہ دینا پڑےگا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:273 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص حکم شرعی جانتا تھا اور طلوع فجر سےکچھ پہلے مشعر سے باہر چلاگیا تواسکا حج صحیح ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:297 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص حکم شرعی جانتا تھا اور طلوع فجر سے پہلے مشعر سے باہر چلاگیا تو اسکا حج صحیح ہے لیکن اس نے حرام عمل انجام دیا ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:329 | volume:0



576

Category : نماز

Question : اگر نماز میں احترام وخضوع کی خاطر ہاتھ باندہ لئے تو نماز کا کیا حکم ہے ؟


Answer-1: اگر نماز میں احترام و خضوع کی نیت سے ہاتھ باندہ لے تو احتیاط کی بنا پر نماز باطل ہے جبکہ مشروعیت کے قصد سے ہو تو حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:220 | volume:0


Answer-2: نماز میں اہلسنت کی طرح ہاتھ باندھے سے نماز باطل ہوجاتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:178 | volume:0


Answer-3: اگر نماز میں جزء سمجھتے ہوئے ہاتھ باندھے تو نماز باطل ہے اور اگر ادب کے عنوان سے باندھے تو احتیاط واجب کی بنا پر باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:195 | volume:0


Answer-4: اگر نماز میں جزء سمجھتے ہوئے ہاتھ باندھے تو نماز باطل ہے اور اگر عبودیت کے قصد سے باندھے تو احتیاط واجب کی بنا پر باطل ہے البتہ دونوں صورتوں میں جاہل قاصر ہو تو نماز باطل نہیں ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:204 | volume:0



577

Category : حج

Question : کیا رات میں کنکر مارے جاسکتے ہیں؟


Answer-1: وہ افراد جنکے لئے عید کی شب میں مشعر سے منیٰ کی طرف جانا جائز ہے صرف وہ رات میں کنکر مارسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:279 | volume:0


Answer-2: وہ افراد جو عذر رکھتے ہیں رات میں کنکر مارسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:343 | volume:0


Answer-3: وہ افراد جو عذر رکھتے ہیں رات میں کنکر مارسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:309 | volume:0


Answer-4: وہ افراد جنکے لئے عید کی شب میں مشعر سے منیٰ کی طرف جانا جائز ہے صرف وہ رات میں کنکر مارسکتے ہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:196 | volume:0



578

Category : حج

Question : کیا کنکر کا جمرہ پر لگنا ضروری ہے؟


Answer-1: کنکر کا جمرہ پر لگنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:278 | volume:0


Answer-2: کنکر کا جمرہ پر لگنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:306 | volume:0


Answer-3: کنکر کا جمرہ پر لگنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:196 | volume:0


Answer-4: کنکر کا جمرہ پر لگنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:340 | volume:0



579

Category : حج

Question : کتنے کنکر مارنا ضروری ہے؟


Answer-1: ساتھ کنکر مارنا ضروری ہیں۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:278 | volume:0


Answer-2: ساتھ کنکر مارنا ضروری ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:306 | volume:0


Answer-3: ساتھ کنکر مارنا ضروری ہیں۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:341 | volume:0


Answer-4: ساتھ کنکر مارنا ضروری ہیں۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:195 | volume:0



580

Category : حج

Question : کیا کنکر مارتے وقت قصد قربت ہونا ضروری ہے ؟


Answer-1: کنکر مارتے وقت قربت اور اخلاص کی نیت ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:278 | volume:0


Answer-2: کنکر مارتے وقت صرف پروردگار کی قربت کا قصد و ارادا ہونا چاہیے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:306 | volume:0


Answer-3: کنکر مارتے وقت صرف پروردگار کی قربت کا قصد و ارادا ہونا چاہیے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:340 | volume:0


Answer-4: کنکر مارتے وقت پروردگار کے قرب کا ارادہ کرنا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:195 | volume:0



581

Category : حج

Question : جب حاجی منیٰ پہنچتا ہے تو اسے کتنے اعمال انجام دینا پڑھتے ہیں ؟


Answer-1: منی ٰ میں پہنچنے کے بعد تین عمل انجام دینا ضروری ہے ۔1- رمی جمرہ عقبہ2-قربانی کرنا3-سر کا منڈوانا یا بال کٹوانا

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:0 | volume:0


Answer-2: منی ٰ میں پہنچنے کے بعد تین عمل انجام دینا ضروری ہے ۔1-رمی جمرہ عقبہ2-قربانی کرنا3-سر کا منڈوانا یا بال کٹوانا

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:305 | volume:0


Answer-3: منی ٰ میں پہنچنے کے بعد تین عمل انجام دینا ضروری ہے ۔1- رمی جمرہ عقبہ2-قربانی کرنا3-سر کا منڈوانا یا بال کٹوانا

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:339 | volume:0


Answer-4: منی ٰ میں پہنچنے کے بعد تین عمل انجام دینا ضروری ہے ۔1- رمی جمرہ عقبہ2-قربانی کرنا3-سر کا منڈوانا یا بال کٹوانا

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:195 | volume:0



582

Category : حج

Question : اگر کنکر مارنے کے بعد کسی کو شک ہو کہ کنکر جمرہ پر لگے ہیں یا نہیں تو اسکا کیا وظیفہ ہے؟


Answer-1: اگر کسی کو شک ہو کہ کنکر جمرہ پر لگے ہیں یا نہیں تو جتنے کنکروں میں انہیں شک ہو انہیں دوبارہ مارے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:مناسک حج | Page:280 | volume:0


Answer-2: اگر کسی کو شک ہو کہ کنکر جمرہ پر لگے ہیں یا نہیں تو جتنے کنکروں کے نہ لگنے میں شک ہو انھیں احتیاط کی بنا پر دوبارہ مارے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:مناسک حج امام و رہبر | Page:308 | volume:0


Answer-3: اگر کسی کو شک ہو کہ کنکر جمرہ پر لگے ہیں یا نہیں تو جتنے کنکروں کے نہ لگنے میں شک ہو انھیں احتیاط کی بنا پر دوبارہ مارے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:مناسک حج امام با حواشی | Page:342 | volume:0


Answer-4: اگر کسی کو شک ہو کہ کنکر جمرہ پر لگے ہیں یا نہیں تو جتنے کنکروں میں انہیں شک ہو انہیں دوبارہ مارے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:مناسک حج | Page:197 | volume:0



583

Category : نماز

Question : اگر کوئی شخص نماز جماعت میں سورۃ فاتحہ کے بعد عمداً "آمین" کہے تو کیا اس کی نماز باطل ہو جائے گی؟


Answer-1: اگر کوئی شخص نمازجماعت میں سورۃ فاتحہ کے بعد عمداً "آمین" کہے تو اس کی نماز باطل ہو جائے گی۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:221 | volume:1


Answer-2: اگر کوئی شخص نماز جماعت میں سورۃ فاتحہ کے بعد عمداً "آمین" کہے اور قصد جزئیت کرے تو نماز باطل ہے اور اگر دعا کا قصد کرے تو احتیاط واجب کی بناہ پر باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:210 | volume:2


Answer-3: اگر کوئی شخص نماز جماعت میں سورۃ فاتحہ کے بعد عمداً "آمین" کہے تو کیا اس کی نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:172 | volume:1


Answer-4: اگر کوئی شخص نماز جماعت میں سورۃ فاتحہ کے بعد عمداً "آمین" کہے اور جزئیت کا قصد کرے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:210 | volume:2



584

Category : نماز

Question : اگر کوئی شخص نماز پڑھتے ہوئے سورۃ فاتحہ پڑھنے کے بعد عمداً آمین کہے تو اس کی نماز کا کیا حکم ہے ؟


Answer-1: اگر کوئی شخص نماز پڑھتے ہوئے سورۃ فاتحہ پڑھنے کے بعد عمداً آمین کہے تو احتیاط واجب کی بنا پر اس کی نماز باطل ہو جائے گی۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:221 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص نماز پڑھتے ہوئے سورۃفاتحہ پڑھنے کے بعد عمداً آمین کہے تو اس کی نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:172 | volume:1


Answer-3: اگر کوئی شخص نماز میں سورۃ فاتحہ کے بعد عمداً آمین کہے اور جزئیت کا ارادہ رکھتا ہو تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:210 | volume:2


Answer-4: اگر کوئی شخص نماز میں سورۃ فاتحہ کے بعد عمداً آمین کہے اور جزئیت کا ارادہ رکھتا ہو تو نماز باطل ہے اور اگر دعا کا قصد کرے تو احتیاط واجب کی بناپر باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:210 | volume:2



585

Category : نماز

Question : اگر امام جماعت نماز میں سورۃ فاتحہ کےبعد عمداً آمین کہے تواس کی نماز باطل ہوجائے گی؟


Answer-1: اگر امام جماعت نماز میں سورۃ فاتحہ کے بعد عمداً آمین کہے تو احتیاط واجب کی بنا پر اس کی نماز باطل ہوجائے گی۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:منھاج الصالحین | Page:221 | volume:1


Answer-2: اگر امام جماعت نماز میں سورۃفاتحہ کے بعد عمداً آمین کہے تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:تحریر الوسیلہ | Page:172 | volume:1


Answer-3: اگر امام جماعت نماز میں سورۃ فاتحہ کے بعد عمداًآمین کہے اور جزئیت کا ارادہ ہو تو نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:منھاج الصالحین | Page:210 | volume:2


Answer-4: اگر امام جماعت نماز میں سورۃ فاتحہ کے بعد عمداً آمین کہے اور جزئیت کا ارادہ رکھتا ہو تو نماز باطل ہے اگر دعا کا قصد کرے تو احتیاط واجب کی بنا پر باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:منھاج الصالحین | Page:210 | volume:2



586

Category : نماز

Question : اگر نمازی چہرہ قبلہ سے گھمالے اور عرفاً کہا جائے کہ زیادہ گھمالیا ہے لیکن لیکن پیچھے کی اشیاء نہ دیکھ سکتا ہو تو نماز کا کیاحکم ہے؟


Answer-1: اگر نمازی چہرہ قبلہ سے گھمالے اور عرفاً کہا جائے کہ زیادہ گھمالیا ہے لیکن پیچھے دیکھنے کی حد تک نہ ہو جبکہ اس کا بدن قبلہ کی سمت ہو تو احتیاط واجب کی بنا پر نماز دوبارہ پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:221 | volume:0


Answer-2: اگر نمازی عمداً چہرہ گھمالے لیکن قبلہ کی دائیں یا بائیں جانب کی حد تک نہ پہنچے تو نماز باطل نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:178 | volume:0


Answer-3: اگر نمازی عمداً چہرہ قبلہ گھمالے جو دائیں یا بائیں جانب کی حد نہ ہو لیکن کہا جائے کہ چہرہ قبلہ سے گھمایا ہے تو اس کی نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:196 | volume:0


Answer-4: اگر نمازی عمداً چہرہ قبلہ گھمالے جو دائیں یا بائیں جانب کی حد نہ ہو لیکن کہا جائے کہ چہرہ قبلہ سے گھمایا ہے تو اس کی نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:205 | volume:0



587

Category : نماز

Question : اگر نمازی قبلہ سے چہرہ اتنا گھمالے کہ پیچھے کی کچھ چیزیں دیکھ سکے تو اس کی نماز کا کیا حکم ہے؟


Answer-1: اگر نمازی قبلہ سے چہرہ اتنا گھمالے کہ پیچھے کی کچھ چیزیں دیکھ سکے جبکہ اس کا بدن قبلہ کی سمت ہو تو اس کی نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:221 | volume:0


Answer-2: اگر نمازی عمداً چہرہ قبلہ سے اتنا گھمالے کہ قبلہ کی دائیں یا بائیں جانب ہوجائے تو نماز باطل ہے ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:178 | volume:0


Answer-3: اگر نمازی عمداً چہرہ قبلہ سے اتنا گھمالے کہ قبلہ کی دائیں جانب یا بائیں جانب ہوجائے تو اس کی نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:196 | volume:0


Answer-4: اگر نمازی عمداً چہرہ قبلہ سے اتنا گھمالے کہ قبلہ کی دائیں جانب یا بائیں جانب ہوجائے تو اس کی نماز باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:205 | volume:0



588

Category : نماز

Question : نماز میں آخ یا آہ کہنے سے کیا نماز باطل ہوجاتی ہے؟


Answer-1: اگر نماز میں جان بوجھ کر آخ یا آہ کہے تو نماز باطل ہوجائے گی۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:222 | volume:0


Answer-2: اگر نماز میں جان بوجھ کر آخ یا آہ کہے تو نماز باطل ہوجائے گی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:179 | volume:0


Answer-3: اگر نماز میں جان بوجھ کر آخ یا آہ کہے تو نماز باطل ہوجائے گی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:196 | volume:0


Answer-4: اگر انسان جاہل قاصر نہ ہو اور جان بوجھ کر نماز میں آہ کرے تو نماز باطل ہوجائےگی۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:205 | volume:0



589

Category : نماز

Question : کیا نماز اردو میں قنوت پڑھنے سے نماز باطل ہو جاتی ہے ؟


Answer-1: اردو میں قنوت پڑھنے سے نماز باطل نہیں ہوتی البتہ احتیاط مستحب ہے کہ قنوت عربی میں پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:222 | volume:0


Answer-2: اردو میں قنوت پڑھنے سے نماز باطل نہیں ہوتی ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:179 | volume:0


Answer-3: اردو میں قنوت پڑھنے سے نماز باطل نہیں ہوتی البتہ احتیاط مستحب ہے کہ قنوت عربی میں پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:197 | volume:0


Answer-4: اردو میں قنوت پڑھنے سے نماز باطل نہیں ہوتی البتہ احتیاط مستحب ہے کہ قنوت عربی میں پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:206 | volume:0



590

Category : نماز

Question : کیا نماز میں جان بوجھ کر ایک حروف بولنے سےنماز باطل ہوجاتی ہے؟


Answer-1: اگر نماز میں جان بوجھ کر ایک حروف ادا کرے جو معنی رکھتا ہے تو نماز باطل ہوجاتی ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:221 | volume:0


Answer-2: اگر نماز میں ایک حرف ادا کرے جو معنی رکھتا ہو اور معنی کا ارادہ بھی کرے تو نماز باطل ہے اگر معنی جانتا ہو لکن معنی کا ارادہ نہ کرے تو احتیاط واجب ہے کہ نماز دوبارہ پڑھے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:179 | volume:0


Answer-3: اگر نماز میں جان بوجھ کر ایک حرف ادا کر ے تو نماز باطل ہوجائےگی۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:196 | volume:0


Answer-4: اگر نماز میں ایک حرف ادا کرے جو معنی رکھتا ہو اور معنی کا ارادہ بھی کرے تو نماز باطل ہے اگر معنی جانتا ہو لکن معنی کا ارادہ نہ کرے تو احتیاط واجب کی بنا پر باطل ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:205 | volume:0



591

Category : نماز

Question : کیا نماز واجب کو توڑنا جائز ہے؟


Answer-1: احتیاط واجب کی بنا پر اختیاری حالت میں نماز کو توڑنا جائز نہیں ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:227 | volume:0


Answer-2: اختیاری حالت میں نما زکو توڑنا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:182 | volume:0


Answer-3: احتیاط واجب کی بنا پر اختیاری حالت میں نماز کو توڑنا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:201 | volume:0


Answer-4: اختیاری حالت میں نماز کو توڑنا حرام ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:209 | volume:0



592

Category : نماز

Question : اگر کوئی شخص نماز کے بعد شک کرے کہ نماز میں اس کا وضو باطل ہو گیا تھا تو کیا نماز باطل ہو جائے گی۔


Answer-1: اگر کوئی شخص نماز کے بعد شک کرے کہ نماز میں اس کا وضو باطل ہو گیا تھا تواس کی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:226 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی شخص نماز کے بعد شک کرے کہ نماز میں اس کا وضو باطل ہو گیا تھا تواس کی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:181 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی شخص نماز کے بعد شک کرے کہ نماز میں اس کا وضو باطل ہو گیا تھا تواس کی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:200 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی شخص نماز کے بعد شک کرے کہ نماز میں اس کا وضو باطل ہو گیا تھا تواس کی نماز صحیح ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:209 | volume:0



593

Category : نماز

Question : کیا نماز کے دوران کوئی ایسا کام جو خضوع کو ختم کر دے جائز ہے؟


Answer-1: نماز کے دوران کوئی ایسا کام جو خضوع کو ختم کرنے کا باعث ہو مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:226 | volume:0


Answer-2: نماز کے دوران کوئی ایسا کام جو خضوع کو ختم کرنے کا باعث ہو مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:182 | volume:0


Answer-3: نماز کے دوران کوئی ایسا کام جو خضوع کو ختم کرنے کا باعث ہو مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:200 | volume:0


Answer-4: نماز کے دوران کوئی ایسا کام جو خضوع کو ختم کرنے کا باعث ہو مکروہ ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:209 | volume:0



594

Category : نماز

Question : کیا کسی قیمتی چیز کو بچانے کی خاطر نماز توڑنا جائز ہے؟


Answer-1: کسی قیمتی چیز کو بچانے کی خاطر نماز توڑنا جائز ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:227 | volume:0


Answer-2: کسی قیمتی چیز کو بچانے کی خاطر نماز توڑنا جائز ہے

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:182 | volume:0


Answer-3: کسی قیمتی چیز کو بچانے کی خاطر نماز توڑنا جائز ہے

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:201 | volume:0


Answer-4: کسی قیمتی چیز کو بچانے کی خاطر نماز توڑنا جائز ہے

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:209 | volume:0



595

Category : نماز

Question : کسی شخص کی جان بچانے کے لئے کیا نماز توڑنا جائز ہے؟


Answer-1: کسی ایسے شخص کی جان بچانے کے لئے جس کی جان بچانا واجب ہے اور نماز توڑے بغیر جان بچانا ممکن نہ ہو تو نماز توڑنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:227 | volume:0


Answer-2: کسی ایسے شخص کی جان بچانے کے لئے جس کی جان بچانا واجب ہے اور نماز توڑے بغیر جان بچانا ممکن نہ ہو تو نماز توڑنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:182 | volume:0


Answer-3: کسی ایسے شخص کی جان بچانے کے لئے جس کی جان بچانا واجب ہے اور نماز توڑے بغیر جان بچانا ممکن نہ ہو تو نماز توڑنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:201 | volume:0


Answer-4: کسی ایسے شخص کی جان بچانے کے لئے جس کی جان بچانا واجب ہے اور نماز توڑے بغیر جان بچانا ممکن نہ ہو تو نماز توڑنا واجب ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:210 | volume:0



596

Category : طہارت

Question : کیا ریتیلی زمین کو آب قلیل سے پاک کرنا ممکن ہے؟


Answer-1: ایسی زمین جسمیں پانی جذب ہو جاتا ہے اس زمین کو قلیل پانی سے پاک کر سکتے ہیں

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:36 | volume:0


Answer-2: ایسی زمین جسمیں پانی جذب ہو جاتا ہے اس زمین کو قلیل پانی سے پاک کر سکتے ہیں ۔لیکن اس کا اندرونی حصہ نجس رہے گا ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:27 | volume:0


Answer-3: ایسی زمین جسمیں پانی جذب ہو جاتا ہے اس زمین کو قلیل پانی سے پاک کر سکتے ہیں

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:31 | volume:0


Answer-4: ایسی زمین جسمیں پانی جذب ہو جاتا ہے اس زمین کو قلیل پانی سے پاک کر سکتے ہیں

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:33 | volume:0



597

Category : طہارت

Question : اگر کوئی لباس پیشاب سے نجس ہو جائے تو اسے کر پانی سے کتنی بار دھونا ہو گا تا کہ لباس پاک ہو جائے ؟


Answer-1: اگر کوئی لباس پیشاب سے نجس ہو جائے تو احتیاط واجب کی بنا پراسے کر پانی سے پاک کرنے کے لئیے دو مرتبہ دھونا ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:33 | volume:0


Answer-2: اگر کوئی لباس پیشاب سے نجس ہو جائے تو کر پانی سے ایک مرتبہ دھونا کافی ہے۔البتہ احتیا ط واجب کی بنا پر اسے نچوڑا جائے تاکہ اسکا پانی نکل جائے

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:24 | volume:0


Answer-3: اگر کوئی لباس پیشاب سے نجس ہو جائے تو کر پانی سے دو مرتبہ دھونا لازم ہے۔اور اسے نچوڑنا بھی ضروری ہے

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:29 | volume:0


Answer-4: اگر کوئی لباس پیشاب سے نجس ہو جائے تو کر پانی سے ایک مرتبہ دھوناکافی ہے۔البتہ اسکو نچوڑنا بھی ضروری ہے۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:30 | volume:0



598

Category : طہارت

Question : اگر گندم یا چاول کا ظاہری حصہ نجس ہو جائے تو کیا اسے پاک کرنا ممکن ہے؟


Answer-1: اگر گندم یا چاول کا ظاہری حصہ نجس ہو جائے اور اسے کر یا جاری پانی میں ڈبو دیا جائے تو نجاست کے بر طرف ہونے کے بعد پاک ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:34 | volume:0


Answer-2: اگر گندم یا چاول کا ظاہری حصہ نجس ہو جائے اور اسے کر یا جاری پانی میں ڈبو دیا جائے تو نجاست کے بر طرف ہونے کے بعد پاک ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:25 | volume:0


Answer-3: اگر گندم یا چاول کا ظاہری حصہ نجس ہو جائے اور اسے کر یا جاری پانی میں ڈبو دیا جائے تو نجاست کے بر طرف ہونے کے بعد پاک ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:29 | volume:0


Answer-4: اگر گندم یا چاول کا ظاہری حصہ نجس ہو جائے اور اسے کر یا جاری پانی میں ڈبو دیا جائے تو نجاست کے بر طرف ہونے کے بعد پاک ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:31 | volume:0



599

Category : طہارت

Question : کیا نجس برتن کو کر یا جاری پانی میں ڈال دیا جائے تو پاک ہو جائے گا؟


Answer-1: اگر نجس برتن کو کر یا جاری پانی میں ڈال دیا جائے اور پانی اس کی تمام جگہوں تک پہنچ جائے تو وہ برتن پاک ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:33 | volume:0


Answer-2: اگر برتن میں عین نجاست نہ ہو اور اسے کر یا جاری پانی میں ڈال دیا جائے اور پانی اس کی تمام جگہوں تک پہنچ جائے تو وہ برتن پاک ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:24 | volume:0


Answer-3: اگر نجس برتن کو کر یا جاری پانی میں ڈال دیا جائے اور پانی اس کی تمام جگہوں تک پہنچ جائے تو وہ برتن پاک ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:29 | volume:0


Answer-4: اگر نجس برتن کو کر یا جاری پانی میں ڈال دیا جائے اور پانی اس کی تمام جگہوں تک پہنچ جائے تو وہ برتن پاک ہو جائے گا۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:30 | volume:0



600

Category : خمس

Question : اگر کسی مال پر خمس واجب ہو گیا ہو کیا خمس ادا کرنے سے پہلے اس میں تصرف کیا جا سکتا ہے؟


Answer-1: ایسا مال جس پر خمس واجب ہو گیا ہو اسمیں تصرف نہیں کیا جا سکتا ۔

Scholar:آیت اللہ سید علی حسینی سیستانی | Book:توضیح المسائل | Page:331 | volume:0


Answer-2: ایسا مال جس پر خمس واجب ہو گیا ہو اسمیں تصرف نہیں کیا جا سکتا ۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید روح اللہ موسوی خمینی | Book:توضیح المسائل | Page:272 | volume:0


Answer-3: ایسا مال جس پر سال گذر گیا ہو اور اس کا خمس نہ دیا ہواگر خمس دینے کا ارادہ نہ رکھتا ہو تواس میں تصرف نہیں کر سکتا اور اگر ارادہ رکھتا ہو تب بھی احتیاط واجب کی بنا پر اس میں تصرف نہیں کر سکتا۔

Scholar:آیت اللہ مرحوم سید محمد ابو القاسم الخوئی | Book:توضیح المسائل | Page:308 | volume:0


Answer-4: ایسا مال جس پر خمس واجب ہو گیا ہو اسمیں تصرف نہیں کیا جا سکتا ۔

Scholar:آیت اللہ شیخ حسین وحید خراسانی | Book:توضیح المسائل | Page:317 | volume:0